ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

حاملہ بیوی اور تین سال کی بیٹی کا قتل کرکے پولیس تھانہ پہنچا شخص ، کہا : گرفتار کرلو ، وجہ جان کر اڑ جائیں گے ہوش

UP Crime News: اترپردیش کے باغبپ میں حاملہ بیوی اور تین سال کی معصوم بیٹی کا قتل کرکے ایک شخص خود پولیس تھانہ پہنچ گیا ۔

  • Share this:
حاملہ بیوی اور تین سال کی بیٹی کا قتل کرکے پولیس تھانہ پہنچا شخص ، کہا : گرفتار کرلو ، وجہ جان کر اڑ جائیں گے ہوش
UP Crime News: اترپردیش کے باغبپ میں حاملہ بیوی اور تین سال کی معصوم بیٹی کا قتل کرکے ایک شخص خود پولیس تھانہ پہنچ گیا ۔

اترپردیش کے باغپت میں حاملہ بیوی اور تین سال کی معصوم بیٹی کا قتل کرکے ایک شخص خود ہی پولیس تھانہ پہنچ گیا ۔ اس شخص نے کہا کہ صاحب مجھے گرفتار کرلو ، میں نے اپنی بیوی اور بیٹی کا قتل کردیا ہے ۔ دراصل یہ سنسنی خیز معاملہ شہر کوتوالی کے تحت گایتری پورم محلہ کی منا گلی میں پیش آیا ، جہاں ایک خاتون اور اس کی سوتیلی تین سال کی بیٹی کی لاش آیت کی لاش کمرے میں بستر پر پڑی ملی ، جس کی جانکاری خود تھانہ پہنچ کر مقتولہ کے شوہر گلفام نے دی کہ اس کو گرفتار کرلو کیونکہ اس نے دونوں کا گھریلو تنازع میں قتل کردیا ہے ۔ مقتولہ مسکان گلفام کی تیسری بیوی تھی جبکہ آیت اس کی دوسری بیوی کی بیٹی تھی ۔


پولیس کے مطابق گلفام کینسر متاثر تھا ، جس کی وجہ سے اس کی دو بیویاں اس کو چھوڑ کر چلی گئی تھیں اور وہ بیماری کو لے کر کافی ذہنی کشیدگی میں رہتا تھا ۔ پھر سے اس کے ساتھ ایسا نہ ہوا ، اس لئے اس نے گلا دباکر حاملہ بیوی مسکان اور تین سال کی بیٹی آیت کا قتل کردیا ۔ حالانکہ کچھ مقامی لوگوں کا کہنا تھا کہ گلفام اپنے کنبہ کے ساتھ خوش رہتا تھا اور کیسے یہ واقعہ پیش آیا ، اس کی جانکاری نہیں ہے ، لیکن قتل کی صحیح وجوہات کا ابھی تک پتہ نہیں چل سکا ہے ۔


سرکل افسر منگل راوت کا کہنا ہے کہ پولیس نے دونوں کی لاشوں کو قبضہ میں لے کر اس کو پوسٹ مارٹم کیلئے بھیج دیا ہے اور معاملہ کی تفتیش میں مصروف ہوگئی ہے ۔ ملزم خود ہی تھانہ پہنچا تھا ، اس لئے اس کو حراست میں لے کر پوچھ گچھ کی جارہی ہے ۔


انہوں نے بتایا کہ ملزم کے رشتہ داروں اور جان پہچان والوں سے بھی پوچھ گچھ کرکے معاملہ میں جانکاری حاصل کی جارہی ہے ۔ اس کے پڑوسی علی محمد نے بتایا کہ ملزم اپنے کنبہ کے ساتھ خوش رہتا تھا ۔ واقعہ کے پیچھے کی صحیح وجہ تلاش کرنے کی ضرورت ہے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Feb 08, 2021 02:30 PM IST