ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

پیلی بھیت فرضی انکاؤنٹر کیس : 25 سال بعد 47 مجرم پولیس اہلکاروں کو ملی عمر قید کی سزا

لکھنؤ : سی بی آئی کورٹ نے تقریبا 25 سال پہلے یوپی کے پیلی بھیت ضلع کے ایک فرضی انکاؤنٹر کیس میں پیر کو 47 پولیس اہلکاروں کو عمر قید کی سزا سنائی ہے۔ اتنا ہی نہیں عدالت نے انسپکٹروں پر 10-10 لاکھ اور سپاہیوں پر ڈھائی ڈھائی لاکھ روپے کا جرمانہ بھی عائد کیا ہے۔

  • Pradesh18
  • Last Updated: Apr 04, 2016 07:59 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
پیلی بھیت فرضی انکاؤنٹر کیس : 25 سال بعد 47 مجرم پولیس اہلکاروں کو ملی عمر قید کی سزا
لکھنؤ : سی بی آئی کورٹ نے تقریبا 25 سال پہلے یوپی کے پیلی بھیت ضلع کے ایک فرضی انکاؤنٹر کیس میں پیر کو 47 پولیس اہلکاروں کو عمر قید کی سزا سنائی ہے۔ اتنا ہی نہیں عدالت نے انسپکٹروں پر 10-10 لاکھ اور سپاہیوں پر ڈھائی ڈھائی لاکھ روپے کا جرمانہ بھی عائد کیا ہے۔

لکھنؤ : سی بی آئی کورٹ نے تقریبا 25 سال پہلے یوپی کے پیلی بھیت ضلع کے ایک فرضی انکاؤنٹر کیس میں پیر کو 47 پولیس اہلکاروں کو عمر قید کی سزا سنائی ہے۔ اتنا ہی نہیں عدالت نے انسپکٹروں پر 10-10 لاکھ اور سپاہیوں پر ڈھائی ڈھائی لاکھ روپے کا جرمانہ بھی عائد کیا ہے۔

اس سے قبل سی بی آئی کورٹ نے جمعہ کو اپنا فیصلہ سناتے ہوئے 47 پولیس اہلکاروں کو مجرم قرار دیا تھا۔ واضح رہے کہ 12 جون 1995 کو پیلی بھیت کے تین تھانہ علاقوں میں مبینہ تصادم ہوئی تھی، جس میں 11 سکھ یاتری کو عسکریت پسند بتا کر ہلاک کردیا گیا تھا۔

بعد میں سی بی آئی نے اس انکاؤنٹر کو فرضی قرار دیا اور 57 پولیس اہلکاروں کے خلاف اغوا، قتل، سازش رچنے وغیرہ سنگین دفعات میں چارج شیٹ داخل کی گئی تھی۔ تاہم ٹرائل کے دوران ہی 10 ملزمان کی موت ہو گئی ۔ جبکہ باقی 47 ملزموں کی 29 مارچ کو سماعت مکمل ہو گئی تھی۔سی بی آئی کے خصوصی جج للو سنگھ نے جمعہ کو اپنا فیصلہ سناتے ہوئے 47 پولیس اہلکاروں کو مجرم قرار دیا تھا۔

First published: Apr 04, 2016 07:58 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading