ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

شاہین باغ: کرونا وائرس کے پیش نظر دھرنا ختم کرنے کے لئے سپریم کورٹ میں عرضی

عرضی میں کہا گیا ہے کہ اگر ملک کے کسی بھی حصے میں اس طرح کا کوئی بھی مظاہرہ ہو رہا ہے تو اس کو روکنے کے لئے ہدایات جاری کئے جانے چاہئیں۔

  • UNI
  • Last Updated: Mar 16, 2020 06:34 PM IST
  • Share this:
شاہین باغ: کرونا وائرس کے پیش نظر دھرنا ختم کرنے کے لئے سپریم کورٹ میں عرضی
شاہین باغ احتجاج: فائل فوٹو

نئی دہلی۔ کرونا وائرس کو وبا اعلان کئے جانے کے پیش نظر شہریت ترمیمی قانون کے خلاف دہلی کےشاہین باغ میں جاری مظاہرہ کو ختم کرنے کے لئے ایک عرضی سپریم کورٹ میں داخل کی گئی ہے۔ عرضی گذار نے ملک کے کسی بھی حصے میں ہو رہے اس طرح کے دھرنا اور مظاہرے کو ختم کرنے کا حکم دینے کی درخواست کی ہے۔


بی جے پی کے سابق ایم ایل اے اور شاہین باغ معاملے میں اہم عرضی گذار نند کشور گرگ نے کرونا وائرس کے وبا کے خدشہ کے پیش نظر متعلقہ علاقے میں مظاہرین کو ہٹانے کا حکم دینے کی درخواست کی ہے۔ عرضی میں کہا گیا ہے کہ کرونا وائرس لوگوں کے رابطے میں آنے سے پھیلتا ہے اور جب سپریم کورٹ سے لے کر سبھی عدالتوں میں کرونا وائرس کے وبا سے بچنے کی کوشش کی جا رہی ہے، اسکول، کالج، مال اور سنیما گھر بند کر دیئے گئے ہیں تو ایسے میں دھرنے کی اجازت نہیں دی جا سکتی ہے۔


عرضی میں کہا گیا ہے کہ اگر ملک کے کسی بھی حصے میں اس طرح کا کوئی بھی مظاہرہ ہو رہا ہے تو اس کو روکنے کے لئے ہدایات جاری کئے جانے چاہئیں۔


خیال رہے کہ دہلی حکومت نے پیر کے روز کورونا وائرس سے نمٹنے کے لئے احتیاط کے طور پر مزید قدم اٹھاتے ہوئے تمام نائٹ کلب،پب،جم اور اسپا کو 31مارچ تک بند کرنے کا حکم دیا ہے۔ اروند کیجریوال نے بتایا کہ دہلی میں ایک جگہ پچاس لوگوں کے جمع ہونے پر پابندی عائد کر دی گئی ہے۔ کیجریوال نے کہا کہ شاہین باغ پر بھی اس حکم کا اطلاق ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ سماجی ، ثقافتی، مذہبی جلسوں میں زیادہ لوگ جمع نہ ہوں۔تمام طرح کے مظاہروں پر نئے احکام نافذ ہوں گے۔

First published: Mar 16, 2020 06:34 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading