உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    افغانستان بحران پر وزیر اعظم مودی اور پوتن کے درمیان بات چیت ، 45 منٹ تک ہوئی گفتگو

    افغانستان بحران پر وزیر اعظم مودی اور پوتن کے درمیان بات چیت ، 45 منٹ تک ہوئی گفتگو ۔ فائل فوٹو ۔ پی ٹی آئی ۔

    افغانستان بحران پر وزیر اعظم مودی اور پوتن کے درمیان بات چیت ، 45 منٹ تک ہوئی گفتگو ۔ فائل فوٹو ۔ پی ٹی آئی ۔

    Afghanistan Crisis: وزیر اعظم نے کہا کہ اپنے دوست صدر پوتن کے ساتھ افغانستان کے حالیہ واقعات کے بارے میں تفصیلی مثبت بات چیت کی۔ ہم نے کووڈ۔19 پر ہندستان ۔ روس تعاون سمیت دو طرفہ ایجنڈہ کے مختلف امور پر بھی بات چیت کی ۔ ہم نے اہم امور پر صلاح و مشورہ جاری رکھنے پر رضامندی ظاہر کی۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی : وزیراعظم نریندرمودی نے افغانستان پر طالبان کے قبضہ کے بعد کے واقعات پر آج روس کے صدر ولادیمیر پوتن کے ساتھ ٹیلی فون پر بات چیت کی۔ وزیراعظم نے منگل کو ٹویٹ کرکے یہ اطلاع دی ۔ خیال رہے کہ وزیر اعظم مودی نے پیر کی شام کو جرمنی کی چانسلر اینجلا مورکل کے ساتھ افغانستان کی صورتحال اور دو طرفہ امور پر بات چیت کی تھی۔

      وزیر اعظم نے کہا کہ اپنے دوست صدر پوتن کے ساتھ افغانستان کے حالیہ واقعات کے بارے میں تفصیلی مثبت بات چیت کی۔ ہم نے کووڈ۔19 پر ہندستان ۔ روس تعاون سمیت دو طرفہ ایجنڈہ کے مختلف امور پر بھی بات چیت کی ۔ ہم نے اہم امور پر صلاح و مشورہ جاری رکھنے پر رضامندی ظاہر کی۔

      بتادیں کہ ہندوستان افغانستان کے واقعات پر قریبی نظر رکھ رہا ہے اور اس بارے میں اپنے دوست ممالک اور دیگر بین الاقوامی اداروں اور تنظیموں سے بھی رابطہ قائم کئے ہو ئے ہے۔ ہندستان افغانستان میں پھنسے ہندستانی شہریوں کو لانے کے لئے بھی مہم چلا رہا ہے۔

      تقریباً 48 ہزار افراد کو افغانستان سے نکالا گیا

      ادھر وہائٹ ہاؤس نے کہا ہے کہ حالیہ 24 گھنٹوں کے دوران کابل کے حامد کرزئی انٹرنیشنل ائیر پورٹ سے 10 ہزار 900 افراد کو ملک سے نکالا جا چکا ہے۔اس کے علاوہ امریکہ 14 اگست سے لے کر اب تک 48 ہزار کے لگ بھگ افراد کو افغانستان سے نکال چکا ہے۔ وہائٹ ہاوس سے جاری کئے گئے تحریری بیان کے مطابق حالیہ 24 گھنٹوں کے دوران کابل کے حامد کرزئی انٹرنیشنل ائیر پورٹ سے 10 ہزار 900 افراد کو ملک سے نکالا جا چکا ہے۔

      بیان کے مطابق حالیہ 12 گھنٹوں میں 15 فوجی طیاروں سے 6 ہزار 600 افراد کا اور 34 کولیشن پروازوں سے 4 ہزار 300 افراد کا انخلاء کیا گیا ہے ۔ اس طرح امریکہ انخلاء آپریشن کے آغاز یعنی 14 اگست سے لے کر اب تک 48 ہزار کے لگ بھگ افراد کو ملک سے نکال چکا ہے۔

      بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ جولائی کے اواخر سے اب تک تقریباً 53 ہزار افراد کو دیگر ممالک میں بھیج دیا گیا ہے۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: