ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

نیوز 18 کے ساتھ ایکسکلوزیو انٹرویو: ائیر اسٹرائک پر بولے مودی۔ پاکستان کا صبح 5 بجے ٹویٹ کرنا ہی ثبوت ہے

وزیر اعظم مودی نے کہا کہ پاکستان کی طرف سے صبح پانچ بجے آنا فانا میں ٹویٹ کرنا ہی ہماری فوج کے حملے کا ثبوت ہے۔ وزیر اعظم مودی نے نیٹ ورک 18 کے ایڈیٹر ان چیف راہل جوشی سے ایکسکلوزیو بات چیت میں یہ باتیں کہیں۔

  • Share this:
نیوز 18 کے ساتھ ایکسکلوزیو انٹرویو: ائیر اسٹرائک پر بولے مودی۔ پاکستان کا صبح 5 بجے ٹویٹ کرنا ہی ثبوت ہے
وزیر اعظم نریندر مودی


ہندوستانی فضائیہ کے ذریعہ پاکستان کے بالاکوٹ میں دہشت گردانہ کیمپ پر حملے کے پختہ ثبوت مانگنے والوں کو وزیر اعظم نریندر مودی نے سیدھا جواب دیا ہے۔ وزیر اعظم مودی نے کہا کہ پاکستان کی طرف سے صبح پانچ بجے آنا فانا میں ٹویٹ کرنا ہی ہماری فوج کے حملے کا ثبوت ہے۔ وزیر اعظم مودی نے نیٹ ورک 18 کے ایڈیٹر ان چیف راہل جوشی سے ایکسکلوزیو بات چیت میں یہ باتیں کہیں۔


بالاکوٹ میں دہشت گردانہ کیمپ تباہ ہوا، کیا حکومت کے پاس اس کے پختہ ثبوت ہیں؟ کیا صحیح وقت آنے پر آپ اسے ملک کے عوام کے سامنے لائیں گے؟ یہ دعویٰ کیا گیا کہ وہاں 250 دہشت گرد مارے گئے ، خود بی جے پی صدر امت شاہ نے یہ بات کہی تھی۔ اس سوال کا جواب دیتے ہوئے وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا کہ ’’ جہاں تک ثبوت کا سوال ہے، پاکستان اپنے آپ میں ایک بڑا ثبوت ہے۔ پاکستان نے کیا وجہ ہے کہ صبح پانچ بجے ٹویٹ کیا کہ ہمارے ساتھ ایسا کیا ہے۔ ہم تو چپ تھے اور پاکستان کو یہ کیوں کہنا پڑا۔ وہ اپنے آپ میں ثبوت ہے۔ ایسا تو نہیں ہے کہ حکومت ہند پہلے جا کر بولی یا ہماری فوج کے لوگ جا کر بولے۔


وزیر اعظم نے اپوزیشن پارٹیوں اور بالخصوص کانگریس پر نشانہ سادھتے ہوئے کہا کہ اس سے پہلے کئی جنگیں ہوئیں۔ کیا کبھی کسی نے اس قسم کی زبان کا استعمال کیا ہے۔ کبھی نہیں کیا۔ کئی ایکشن ہوئے، کبھی کسی نے اس قسم کی زبان کا استعمال نہیں کیا۔ لیکن اقتدار کے لئے بے چین کانگریس نے ساری اخلاقیات کھو دی ہیں اور اسی لئے وہ اس طرح کی زبان بولتی ہے۔

وزیر اعظم مودی نے ملک کی فوج کے حملے پر بھروسہ جتاتے ہوئے کہا ’’ جب آپ ایک دشمن سے لڑائی لڑ رہے ہو تب اس طرح کی زبان دشمن کو طاقت دیتی ہے۔ ملک کو کنفیوز کرتی ہے۔ ملک کے جوانوں کا حوصلہ پست کرتی ہے۔ اور اس لئے ایسے وقت ملک کو ایک آواز سے ہی بات کرنی چاہئے کہ ہمارے بہادر جوانوں پر فخر کرنا چاہئے‘‘۔
First published: Apr 09, 2019 04:13 PM IST