உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    عصمت دری کے واقعات پر وزیر اعظم کی خاموشی ناقابل قبول: راہل گاندھی

    کانگریس صدر راہل گاندھی: فائل فوٹو۔

    کانگریس صدر راہل گاندھی: فائل فوٹو۔

    کانگریس صدر راہل گاندھی نے ہریانہ میں اجتماعی عصمت دری کے واقعہ پر بھارتیہ جنتا پارٹی حکومت کی کارروائی نہ کرنے پر حیرانی ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ ان معاملات میں وزیر اعظم نریندر مودی کی خاموشی قبول نہیں کی جا سکتی ہے۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      کانگریس صدر راہل گاندھی نے ہریانہ میں اجتماعی عصمت دری کے واقعہ پر بھارتیہ جنتا پارٹی حکومت کی کارروائی نہ کرنے پر حیرانی ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ ان معاملات میں وزیر اعظم نریندر مودی کی خاموشی قبول نہیں کی جا سکتی ہے۔
      مسٹر راہل گاندھی نے منگل کے روز ٹویٹ کیا کہ "ملک کی ایک اور بیٹی کے ساتھ اجتماعی عصمت دری ہوئی ہے اور اس سے ہندوستان کا سر شرم سے جھک رہا ہے" ۔ انہوں نے ان واقعات پر تشویش ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ "وزیر اعظم کی خاموشی ناقابل قبول ہے۔ اس حکومت پر شرم آنی چاہئے جس میں ہندوستان کی خواتین غیر محفوظ اور ڈری ہوئی ہیں اور عصمت دری کے مجرموں کو کھلا گھومنے کی چھوٹ ملی ہوئی ہے"۔
      واضح رہے کہ ہریانہ کے مهیندرگڑھ میں ایک لڑکی کی گزشتہ دنوں اس وقت اجتماعی آبروریزی کی گئی جب وہ ٹیوشن سے واپس آ رہی تھی۔ یہ سکنڈری کی طالبہ ہے اور سی بی ایس ای کے امتحان میں اس کی بہترین کارکردگی کو دیکھتے ہوئے اسے صدر جمہوریہ نے اعزاز سے نوازا تھا۔
      اس دوران کانگریس کے میڈیا انچارج رنديپ سنگھ سور جےوالا نے یہاں پریس کانفرنس میں ملک کے مختلف حصوں میں ہونے والے عصمت دری کے واقعات پر سخت رد عمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ بی جے پی حکومت والی ریاستوں میں مسلسل اس طرح کے واقعات ہو رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہریانہ کے علاوہ دہرادون میں بھی اس طرح کی شرمناک واردات ہوئی ہے اور بی جے پی حکومت کچھ نہیں کر پا رہی ہے۔
      یو این آئی ۔م ش ۔
      First published: