உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    وزیر اعظم نے جی 7 میں اٹھایا ویکسین کا معاملہ ، کہا : پیٹنٹ فری ہونے چاہئیں کورونا کے ٹیکے

    وزیر اعظم نے جی 7 میں اٹھایا ویکسین کا معاملہ ، کہا : پیٹنٹ فری ہونے چاہئیں کورونا کے ٹیکے

    وزیر اعظم نے جی 7 میں اٹھایا ویکسین کا معاملہ ، کہا : پیٹنٹ فری ہونے چاہئیں کورونا کے ٹیکے

    Narendra Modi at G7 Summit : دنیا کے سات طاقتور ممالک کے گروپ جی سیون میں برطانیہ ، کناڈا ، فرانس ، جرمنی ، اٹلی ، جاپان اور امریکہ شامل ہیں ۔ وہیں ہندوستان میں اس میں خصوصی دعوت پر شامل ہوا ۔

    • Share this:
      نئی دہلی : وزیر اعظم نریندر مودی نے جی 7 ( گروپ آف سیون) چوٹی کانفرنس کے آوٹ ریچ سیشن سے خطاب کیا ۔ اس دوران وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا کہ آمریت ، دہشت گردی ، پرتشدد انتہا پسندی ، غلط معلومات اور معاشی زور ز بردستی سے پیدا ہونے والے مختلف خطرات سے مشترکہ اقدار کا دفاع کرنے میں ہندوستان جی 7 کا فطری شراکت دار ہے۔

      وزارت خارجہ کے مطابق جی 7 چوٹی کانفرنس کے آزاد سماج اور آزاد معیشت سیشن میں وزیر اعظم مودی نے اپنے ڈیجیٹل خطاب میں جمہوریت ، نظریاتی آزادی اور آزادی کے تییں ہندوستان کے عزم کا تذکرہ کیا ۔ وزیر اعظم مودی نے آدھار ، ڈی بی ٹی اور جے اے ایم تینوں کے توسط سے ہندوستان میں سماجی شمولیت اور امپاورمنٹ پر ڈیجیٹل ٹیکنالوجیز کے انقلابی اثر کا بھی تذکرہ کیا ۔

      وزارت خارجہ میں ایڈیشنل سکریٹری ( اقتصادی تعلقات ) پی ہریش نے کہا کہ وزیر اعظم مودی نے اپنے خطاب میں آزاد سماج میں پنہاں حساسیت کا ذکر کیا اور ٹیکنالوجی کمپنیوں اور سوشل میڈیا پلیٹ فارموں کی کال دی کہ وہ اپنے صارفین کیلئے محفوظ سائبر ماحول کو یقینی بنائیں ۔

      ایڈیشنل سکریٹری نے کہا کہ کانفرنس میں موجود دیگر لیڈروں نے وزیر اعظم کے خیالات کی سراہنا کی ۔ ہریش نے کہا کہ جی ۔7 لیڈروں نے آزاد ، کھلی اور قواعد پر مبنی ہند بحر الکاہل کے خطے کے لئے اپنی وابستگی کو واضح کیا اور خطے میں شراکت داروں کے ساتھ تعاون کرنے کا عہد کیا۔

      وزارت خارجہ کے ایک سینئر افسر نے کہا کہ جی سیون چوٹی کانفرنس میں کورونا ٹیکوں پر پیٹنٹ چھوٹ سے متعلق ہندوستان اور جنوبی افریقہ کے تجویز پر بحث کیلئے کافی حمایت تھی ۔ ساتھ ممالک کے گروپ جی سیون میں برطانیہ ، کناڈا ، فرانس ، جرمنی ، اٹلی ، جاپان اور امریکہ شامل ہیں ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: