ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

جب وزیر اعظم مودی نے نرس کو فون کر پوچھا۔ کرونا کے مریضوں کا کیسے دور کرتی ہیں ڈر

وزیر اعظم مودی نے سسٹر چھایا سے پوچھا کہ کیا وہ خود کی اچھی طرح دیکھ بھال کررہی ہیں یا نہیں۔ سسٹر نے انہیں بتایا کہ وہ مکمل طور پر صحتمند ہیں اور مریضوں کے ساتھ ساتھ اپنی بھی دیکھ بھال کر رہی ہیں۔

  • Share this:
جب وزیر اعظم مودی نے نرس کو فون کر پوچھا۔ کرونا کے مریضوں کا کیسے دور کرتی ہیں ڈر
وزیر اعظم نریندر مودی: فائل فوٹو

نئی دہلی۔ کورونا وائرس نے پوری دنیا کو گھروں میں قید کردیا ہے۔ ہندوستان میں بھی کورونا سے متاثرہ مریضوں کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے۔ ہندوستان میں اب تک 873 افراد کورونا وائرس سے متاثر ہوچکے ہیں اور یہ تعداد مسلسل بڑھتی جارہی ہے۔ پی ایم مودی نے ملک کے تمام لوگوں سے اپیل کی ہے کہ وہ اپنے گھروں میں رہیں ، تاکہ اس بیماری کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچنے سے روکا جاسکے۔ حالانکہ، ملک کی بیشتر آبادی کورونا کے خوف کی وجہ سے گھروں میں قید ہے ، لیکن لوگوں کی مدد کے لئے کچھ ضروری خدمات کو جاری رکھا گیا ہے۔ اس میں طبی خدمات سے وابستہ افراد سب سے آگے ہیں۔ ان میں ڈاکٹرز ، نرسیں ، لیب ٹیکنیشین اور صحت کی خدمات سے وابستہ افراد شامل ہیں۔ ان ملازمین کے حوصلے بڑھانے کے لئے مودی نے پونے کے نائیڈو اسپتال میں ڈیوٹی کررہیں نرس چھایا سے بات کی۔


گفتگو کے دوران پی ایم مودی نے کورونا وائرس کے انفیکشن کے دوران مستعدی سے ڈٹے ڈاکٹروں اور نرسوں کی تعریف کی اور شکریہ ادا کیا۔ فون پر پانچ منٹ کی گفتگو کے آغاز میں پی ایم مودی نے سسٹر چھایا سے ان کی خیریت دریافت کی۔ وزیر اعظم مودی نے سسٹر چھایا سے پوچھا کہ کیا وہ خود کی اچھی طرح دیکھ بھال کررہی ہیں یا نہیں۔ سسٹر نے انہیں بتایا کہ وہ مکمل طور پر صحتمند ہیں اور مریضوں کے ساتھ ساتھ اپنی بھی دیکھ بھال کر رہی ہیں۔




اس کے بعد پی ایم مودی نے ان سے پوچھا کہ وہ کس طرح اپنے گھر والوں کو راضی کرنے میں کامیاب ہوگئیں کہ وہ کورونا کے مریضوں کی دیکھ بھال کرنے جارہی ہیں۔ انہوں نے پوچھا کہ جب آپ اسپتال کے لئے نکلتی ہیں تو آپ کے کنبہ کے افراد فکرمند تو ہوتے ہی ہوں گے۔ بہن چھایا نے اس پر کہا ، سر ، فکر  تو ہوتی ہے۔ لیکن ملک جس مرحلے سے گزر رہا ہے اس میں پہلے ہمارا کام ضروری ہے۔ ہمیں لوگوں کی مدد کے لئے آگے آنا ہی ہوگا۔ میرا خاندان سمجھتا ہے کہ  میری ضرورت پہلے کیا ہے۔

پی ایم مودی نے سسٹر سے پوچھا کہ جب بھی کوئی مریض کورونا میں مبتلا ہوتا ہے تو وہ بہت ڈرا ہوا ہوتا ہو گا۔ اس پر ، سسٹر چھایا نے کہا ، ہاں ، وہ بہت ڈرا ہوتا ہے۔ ایڈمٹ کرنے کے لئے بولتے ہی وہ اور زیادہ خوفزدہ ہوجاتا ہے۔ اس کے بعد ہم ان سے بات کرتے ہیں اور ان کے خوف کو ختم کرنے کی کوشش کرتے ہیں۔ ہم ان کو سمجھاتے ہیں کہ اگر ان کا پازیٹیو آئے بھی تو بھی ڈرنے کی ضرورت نہیں ہے۔ انہوں نے بتایا کہ اس اسپتال سے سات مریض اچھے ہو کر جا چکے ہیں۔  سسٹر چھایا نے بتایا کہ ہر مریض ٹھیک ہوسکتا ہے بس وہ ڈاکٹروں کا ساتھ دے۔ انہوں نے بتایا کہ ابھی نو مریض ہیں ، ان کی صحت بھی اچھی ہے۔ تو ڈرنے کی کوئی بات نہیں ہے۔
First published: Mar 28, 2020 02:02 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading