உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    افغانستان پر وزیر اعظم مودی کی اہم میٹنگ، کابل سے چارٹر طیارے سے ہندستانیوں کو لانے کی تیاری!

    ذرائع نے بتایا کہ بھارت افغانستان سے مزید ہندوستانیوں کو نکالنے کے لیے چارٹر طیاروں کی خدمات حاصل کرنے کا آپشن بھی تلاش کر رہا ہے۔

    ذرائع نے بتایا کہ بھارت افغانستان سے مزید ہندوستانیوں کو نکالنے کے لیے چارٹر طیاروں کی خدمات حاصل کرنے کا آپشن بھی تلاش کر رہا ہے۔

    ذرائع نے بتایا کہ بھارت افغانستان سے مزید ہندوستانیوں کو نکالنے کے لیے چارٹر طیاروں کی خدمات حاصل کرنے کا آپشن بھی تلاش کر رہا ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی. طالبان کے قبضے کی وجہ سے افغانستان میں پھنسے لوگوں کو نکالنے کی کوششیں جاری ہیں۔ وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ افغانستان کی صورتحال کے حوالے سے وزیر اعظم نریندر مودی سے ملاقات کر رہے ہیں۔ امیت شاہ بھی اس میٹنگ میں موجود ہیں۔ ملاقات میں افغانستان کی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا جا رہا ہے۔ افغانستان میں پھنسے ہندوستانیوں کو کیسے نکالا جائے اس پر بھی بات چیت جاری ہے۔
      ذرائع سے اطلاع ملی ہے کہ وزیر اعظم نریندر مودی اس ساری صورتحال پر سخت نظر رکھے ہوئے ہیں۔ پی ایم مودی افغانستان میں ہندوستانیوں کی صورت حال کے حوالے سے حکام سے رابطے میں ہیں۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے کل رات پوری صورتحال کا جائزہ لیا۔ انہیں افغانستان سے اڑنے والی پرواز کے بارے میں بھی اطلاع فراہم کی گئی۔ پی ایم مودی نے ہدایات دی ہیں کہ جام نگر واپس آنے والے تمام افراد کو کھانا فراہم کرنے کے مناسب انتظامات کئے جائیں۔
      اس کے ساتھ ہی ذرائع کے حوالے سے یہ معلومات بھی موصول ہوئی ہیں کہ کابل سے ہندوستانیوں کو واپس لانے کے لیے بھارت نے تاجکستان Tajikistan کے ایانی ایئر بیس پر اپنے C-17 کو کھڑا کیا کیونکہ افغانستان کے کابل ایئرپورٹ پر بہت بڑا ہجوم تھا۔ چنانچہ ہندوستانی طیارے ایانی ایئر بیس پر اسٹینڈ بائے پر تھے اور کابل ایئرپورٹ کو کنٹرول کرنے والئ امریکہ کی طرف سے منظوری ملنے پر انہوں نے کابل کے لیے اڑان بھری۔

      ذرائع نے بتایا کہ بھارت افغانستان سے مزید ہندوستانیوں کو نکالنے کے لیے چارٹر طیاروں کی خدمات حاصل کرنے کا آپشن بھی تلاش کر رہا ہے۔ ذرائع نے کہا کہ ہندوستان انتظار کرے گا اور دیکھے گا کہ حکومت سازی کس طرح شامل ہوگی اور طالبان اپنے آپ کو کیسے منظم کریں گے۔ بھارت یہ بھی دیکھے گا کہ دوسری جمہوریتیں طالبان حکومت پر کیا رد عمل ظاہر کرتی ہیں۔

      وزیر اعظم نریندر مودی اس ساری صورتحال پر سخت نظر رکھے ہوئے ہیں۔


      وہیں طالبان نے افغانستان میں شریعہ قانون نافذ کرکے اسے اسلامک ملک بنانا چاہتا ہے۔ افغانستان میں بڑھتی ہوئی کشیدگی کے درمیان ہندوستان کی مرکزی وزارت داخلہ نے ویزا کی ایک نئی قسم کا اعلان کیا ہے تاکہ وہ افغانوں کی درخواستوں کو تیزی سے ٹریک کرسکیں جو افغانستان کی موجودہ صورتحال کے پیش نظر ہندوستان آنا چاہتے ہیں۔ وزارت داخلہ نے افغانستان کی موجودہ صورتحال کے پیش نظر ویزا کی فراہمی کا جائزہ لیا ہے۔

      وزارت داخلہ کے مطابق ای۔ویزا حاصل کرنے کیلئے مذہب کی بندش نہیں ہوگی۔ یہ ای ۔ویزا چھ مہینوں کیلئے ہوگا۔ دوسری جانب امریکی صدر جو بائیڈن نے افغانستان سے انخلاء کے اپنے فیصلے کو درست قراردیتے ہوئے طالبان کو انتباہ دیا ہیکہ اگر طالبان امریکی شہریوں کے انخلاء کی فوجی کاروائی میں مداخلت کرتا ہے تو اسے سنگین نتائج کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے۔ وہیں امریکہ نے افغانستان میں طالبان کی حکومت کو تسلیم کرنے کیلئے شرائط رکھیں ہیں۔ امریکہ نے افغانستان میں ایک ایسی نئی حکومت کا مطالبہ کیا ہے جو انسانی حقوق بشمول خواتین کے حقوق کا احترام کرے ۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: