ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

’کھیلو انڈیا‘ کی کامیابی کے بعد ’کھیلو انڈیا یونیورسٹی گیمس‘ کا فیصلہ: وزیراعظم مودی نے 'من کی بات' کی

نریندر مودی نے ریڈیو پر ہر مہینہ نشر ہونے والے اپنے ریڈیو پروگرام من کی بات کی اس برس نشر ہونے والی پہلی قسط میں کہا کہ’کھیلو انڈیا‘ بہت کامیاب ہے اور اس کی وجہ سے ملک کو کھیل میں باصلاحیت کھلاڑی ملے ہیں۔

  • UNI
  • Last Updated: Jan 26, 2020 09:06 PM IST
  • Share this:
’کھیلو انڈیا‘ کی کامیابی کے بعد ’کھیلو انڈیا یونیورسٹی گیمس‘ کا فیصلہ: وزیراعظم مودی نے 'من کی بات' کی
وزیراعظم نریندرمودی نے یوم جمہوریہ کے موقع پر 'من کی بات' میں کی یہ اپیل۔

نئی دہلی: وزیراعظم نریندر مودی نےکہا کہ ’کھیلو انڈیا‘ کے ذریعہ ملک میں تین برس کے دوران کھیل میں ہزاروں میں باصلاحیت کھلاڑی سامنے آئے ہیں اور اس سے پرجوش ہوکر حکومت نے اب اسی طرز پر ’کھیلو انڈیا یونیورسٹی گیمس‘ کا انعقاد کرنےکا فیصلہ کیا ہے۔ نریندر مودی نے ریڈیو پر ہر مہینہ نشر ہونے والے اپنے ریڈیو پروگرام من کی بات کی اس برس نشر ہونے والی پہلی قسط میں کہا کہ’کھیلو انڈیا‘ بہت کامیاب ہے اور اس کی وجہ سے ملک کو کھیل میں باصلاحیت کھلاڑی ملے ہیں۔ اس کی کامیابی جوش وخروش بڑھانے والی ہے اور اس لئے’کھیلو انڈیا یونیورسٹی گیمس‘ شروع کئے جارہے ہیں اور 22 فروری سے یکم مارچ تک اوڈیشہ کے بھونیشور اورکٹک میں ان کھیلوں کا انعقاد کیا جارہا ہے۔ ان کھیلوں میں تین ہزار سے زیادہ باصلاحیت کھلاڑی شامل ہوں گے۔


حال میں آسام کے گواہاٹی میں اختتام پذیر ہوئے تیسرے ’کھیلو انڈیا‘ کے کامیاب انعقاد کےلئے آسام کے لوگوں کو مبارکباد دیتے ہوئے وزیراعظم نریندر مودی نےکہاکہ میں آسام کی حکومت اور آسام کے لوگوں کو ’کھیلو انڈیا‘ کی شاندار میزبانی کےلئے بہت بہت مبارکباد دیتا ہوں۔ گواہاٹی میں 22جنوری کو اختتام پذیر ہوئے ان کھیلوں میں مختلف ریاستوں کے تقریباََ چھ ہزار کھلاڑیوں نے حصہ لیا۔ کھیلوں کے اس فیسٹول میں 80 ریکارڈ ٹوٹے اور مجھے فخر ہےکہ اس میں 56 ریکارڈ توڑنےکا کام ہماری بیٹیوں نےکیا ہے۔ یہ کامیابی بیٹیوں کے نام ہوئی ہے۔ میں تمام جیتنے والوں کے ساتھ ساتھ اس میں حصہ لینے والے تمام کھلاڑیوں کو مبارکباد یتا ہوں۔

وزیراعظم نریندر مودی نے کہا کہ سال در سال ’کھیلو انڈیا گیمس‘ میں کھلاڑیوں کی حصہ داری بڑھ رہی ہے۔ انہوں نے کھیلوں کے تئیں بچوں کی بڑھی دلچسپی کا ذکر کرتے ہوئےکہا کہ میں آپ کو بتانا چاہتا ہوں کہ 2018 میں جب 'کھیلو انڈیا گیمس' کی شروعات ہوئی تھی تب اس میں 3500 کھلاڑیوں نے حصہ لیا تھا، لیکن محض تین برسوں میں کھلاڑیوں کی تعداد تقریباََ دوگنا بڑھ کر چھ ہزار سے زیادہ ہوگئی ہے۔ انہوں نےکہا کہ ’ان کھیلوں کے ذریعہ 3200 باصلاحیت بچے ابھر کر سامنے آئے ہیں۔ ان میں کئی بچے ایسے ہیں جو وسائل کی کمی اور غریبی کے درمیان پلے بڑھے ہیں۔ ان کھیلوں میں شامل ہونے والے بچوں اور ان کے والدین کے صبراور مضبوط عزم کی کہانیاں ایسی ہیں، جو ہروہندستانی کو ترغیب دیں گی۔

First published: Jan 26, 2020 08:26 PM IST