உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    وزیر اعظم نریندر مودی کل ستمبر کو گریٹر نوئیڈا میں ورلڈ ڈیری سمٹ کا کریں گےافتتاح، جانیے تفصیلات

    وزیر اعظم نریندر مودی (Narendra Modi)

    وزیر اعظم نریندر مودی (Narendra Modi)

    International Dairy Federation World Dairy Summit 2022: پرائم منسٹر آفس (PMO) کے مطابق ہندوستانی ڈیری انڈسٹری اس لحاظ سے منفرد ہے کہ یہ ایک کوآپریٹو ماڈل پر مبنی ہے جو چھوٹے اور معمولی ڈیری کسانوں کو بااختیار بناتا ہے، خاص طور پر خواتین کو اس شعبہ میں آگے بڑھانے کے لیے ہندوستان میں کافی کوششیں ہورہی ہیں۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Mumbai | Delhi | Hyderabad | Jammalamadugu | Haryana
    • Share this:
      وزیر اعظم نریندر مودی (Narendra Modi) 12 ستمبر کو گریٹر نوئیڈا میں انٹرنیشنل ڈیری فیڈریشن ورلڈ ڈیری سمٹ (International Dairy Federation World Dairy Summit) 2022 کا افتتاح کریں گے۔ چار روزہ سربراہی اجلاس میں ڈیری صنعت کے رہنما، ماہرین، کسان اور پالیسی ساز شرکت کریں گے۔ جو انڈیا ایکسپو سینٹر اینڈ مارٹ میں منعقد کیا جا رہا ہے۔ یہ سمٹ عالمی اور ہندوستانی ڈیری اسٹیک ہولڈرز کے لیے ایک سنگ میل ثابت ہوگا۔

      پرائم منسٹر آفس کے ذرائع نے کہا کہ انٹرنیشنل ڈیری فیڈریشن ورلڈ ڈیری سمٹ کا موضوع ’ڈیری فار نیوٹریشن اینڈ لائیلی ہوڈ‘ کے ارد گرد مرکوز ہے۔ انٹرنیشنل ڈیری فیڈریشن ورلڈ ڈیری سمٹ میں 50 ممالک سے تقریباً 1,500 شرکاء کی شرکت متوقع ہے۔ اس طرح کا آخری سربراہی اجلاس تقریباً نصف صدی قبل 1974 میں ہندوستان میں منعقد ہوا تھا۔

      پرائم منسٹر آفس (PMO) کے مطابق ہندوستانی ڈیری انڈسٹری اس لحاظ سے منفرد ہے کہ یہ ایک کوآپریٹو ماڈل پر مبنی ہے جو چھوٹے اور معمولی ڈیری کسانوں کو بااختیار بناتا ہے، خاص طور پر خواتین کو اس شعبہ میں آگے بڑھانے کے لیے ہندوستان میں کافی کوششیں ہورہی ہیں۔ اس میں مزید کہا گیا کہ وزیراعظم کے وژن کے تحت حکومت نے ڈیری سیکٹر کی بہتری کے لیے متعدد اقدامات کیے ہیں، جس کے نتیجے میں پچھلے آٹھ سال میں دودھ کی پیداوار میں 44 فیصد سے زیادہ اضافہ ہوا ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:

      صدر جمہوریہ دروپدی مرمو نے کیا غلام علی کو Rajya Sabha کے لئے نامزد، کشمیر سے رکھتے ہیں تعلق

      پی ایم او نے کہا کہ ہندوستانی ڈیری انڈسٹری کی کامیابی کی بے مثال کہانی ہے۔ ہندوستان میں عالمی سطح پر دودھ کا تقریباً 23 فیصد حصہ فراہم کیا جاتا ہے۔ جو کہ تقریباً 210 ملین ٹن سالانہ ہوتا ہے۔ یہ صنعت 8 کروڑ سے زیادہ ڈیری کسانوں کو بااختیار بناتی ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:

      ملکہ برطانیہ الزبتھ دوم کے شوہر شہزادہ فلپ کا 99 برس کی عمر میں انتقال

      یہ سربراہی اجلاس ہندوستانی ڈیری فارمرز کو عالمی سطح پر بہترین طریقوں کا مشاہدہ کرنے میں بھی مدد کرے گا۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: