ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

دہلی بنی گیس چیمبر، آلودگی کی سطح 17 گنا زیادہ ، سڑکوں پر اترے لوگ ، جنترمنتر پر احتجاج

ومی دارالحکومت میں کئی مقامات پر آلودگی کی سطح محفوظ حد سے 17 گنا زیادہ ہونے سے شہر پر دھند کی ایک سیاہ چادر چھا گئی ہے ۔

  • UNI
  • Last Updated: Nov 06, 2016 12:49 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
دہلی بنی گیس چیمبر، آلودگی کی سطح 17 گنا زیادہ ، سڑکوں پر اترے لوگ ، جنترمنتر پر احتجاج
ومی دارالحکومت میں کئی مقامات پر آلودگی کی سطح محفوظ حد سے 17 گنا زیادہ ہونے سے شہر پر دھند کی ایک سیاہ چادر چھا گئی ہے ۔

نئی دہلی: دیوالی پر قومی راجدھانی میں ہوئی آتشبازی اور پڑوسي ریاستوں میں فصلوں کی باقیات جلائے جانے سے یہاں گزشتہ ایک ہفتے سے پھیلی آلودگی سے لوگ بری طرح متاثر ہیں۔ ہفتہ کو آلودگی کے سارے ریکارڈ ٹوٹنے کے بعد اتوار کی صبح بھی لوگوں کو اس سے راحت نہیں ملی۔ آلودگی سے بے حال لوگ اب سڑکوں پر اترنے لگے ہیں۔ جنتر منتر پر جمع ہو کر لوگوں نے اس صورت حال کے خلاف اپنا غصہ ظاہر کیا۔ دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال نے آج دن میں کابینہ کی ہنگامی میٹنگ طلب کی ہے۔ کل شام وہ مرکزی وزیر ماحولیات انل مادھو دوے سے بھی ملے تھے۔ پیر کو پڑوسی ریاستوں کے وزرائے ماحولیات کی میٹنگ بھی ہے۔

وزیر اعلی اروند کیجریوال نے دہلی کو ایک 'گیس چیمبر' بتاتے ہوئے مرکز سے مداخلت کا مطالبہ کیا ۔ کیجریوال نے اس صورت حال کو دیکھتے ہوئے لوگوں سے نجی گاڑیوں کا استعمال کم کرنے اور پبلک ٹرانسپورٹ استعمال  کرنے کی اپیل کی ۔ ادھر ایل جی نجیب جنگ نے بھی پیر کو ایک اعلی سطحی میٹنگ بلائی ہے ۔کیجریوال نے ایک پریس کانفرنس میں بتایا کہ یہ دھند پڑوسی ریاستوں پنجاب اور ہریانہ میں کھیتوں میں كھوٹ جلائے جانے کی وجہ سے ہے ۔ بعد میں انہوں نے مرکزی وزیر ماحولیات انیل دوے کی رہائش گاہ پر ایک میٹنگ میں ان کے سامنے اس مسئلہ کو اٹھایا ۔

آلودگی کی وجہ سے دہلی کے تینوں میونسپل کارپوریشن کے اسکولوں میں ہفتہ کو تعطیل کا اعلان کیا گیا تھا اور حالات اتنے ہی بدتر رہے تو پیر کو بھی چھٹی ہو سکتی ہے۔ آج صبح آر كےپورم اور پنجابی باغ پر پارٹیكولیٹ میٹر (پی ایم) کی سطح 999 رہی جو خطرناک سطح کے مقابلے میں کئی گنا زیادہ ہے۔ آج اندرا گاندھی ہوائی اڈے اور شانتی پتھ پر بھی یہ خطرناک سطح سے کئی گنا زیادہ ہے۔

آلودگی کی وجہ سے دمہ کے مریضوں کو ہی نہیں عام لوگوں کو بھی سانس لینے میں کافی دقت ہو رہی ہے۔ لوگ سڑکوں پر ماسک لگا کر نکل رہے ہیں اور گزشتہ چند دنوں میں ماسک کی مانگ بھی بڑھ گئی ہے۔ اسپتالوں میں بھی سانس کے مریضوں کی تعداد میں اضافہ ہو رہا ہے۔


CwjEC21UUAA2toM
نیشنل گرین ٹریبونل (این جي ٹي) نے جمعہ کو آلودگی پر سماعت کرتے ہوئے مرکزی اور دہلی حکومت کی سخت سرزنش کی تھی۔ ٹریبونل نے دونوں کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا تھا کہ دہلی گیس چیمبر میں تبدیل ہوتی جا رہی ہے اور حکومتیں صرف میٹنگیں ہی کر رہی ہیں ۔ آلودگی کو روکنے کے لئے کوئی ٹھوس قدم نہیں اٹھایا جارہا ہے ۔ ٹریبونل نے آٹھ نومبر کو دہلی، ہریانہ، راجستھان اور پنجاب کے سکریٹریوں کو طلب کیا ہے۔
لیفٹیننٹ گورنر نجیب جنگ نے دارالحکومت میں آلودگی کی بدتر صورتحال پر تبادلہ خیال کے لئے کل اعلی سطحی میٹنگ طلب کی ہے۔ مسٹر کیجریوال نے بھی اس معاملے میں مسٹر جنگ سے ملاقات کی۔

delhi_pol_getty
مسٹر کیجریوال کے مطابق پنجاب میں دھان کی باقیات جلائے جانے سے دارالحکومت میں آلودگی کی صورت حال پر اثر پڑا ہے۔ واضح ر ہے کہ ٹریبونل نے سماعت کے دوران دہلی حکومت کی سرزنش کرتے ہوئے کہا تھا کہ دہلی میں 10 سال پرانی ڈیزل گاڑیوں کو ابھی تک سڑکوں سے کیوں نہیں ہٹایا گیا۔ جنوبی دہلی میں کئی علاقوں میں عمارت کی تعمیر کے کام میں قانوں کو پوری طرح سے نظر انداز کیا جارہا ہے۔ تعمیراتی کاموں سے اڑنے والی مٹی آلودگی کا بڑا سبب ہے۔ ٹریبونل نے دہلی حکومت کو 10 سال پرانی ڈیزل گاڑیوں کو سڑکوں سے ہٹانے کی اپنی ہدایت پر عمل کرنے کے لئے کہا تھا۔
First published: Nov 06, 2016 09:56 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading