Choose Municipal Ward
    CLICK HERE FOR DETAILED RESULTS
    ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

    گنگاجمنی تہذیب کی انوکھی مثال ، عید الفطر کی نماز میں سوامی سنتوشانند مہاراج نے بھی کی شرکت

    گزشتہ کئی دہائیوں سے مسلمانوں کے ساتھ تہوار مناتے آر ہے سوامی سنتوشا نند مہاراج نے اس مرتبہ بھی مسلمانوں کے ساتھ نمازعید میں شرکت کرکے الہ آباد کی گنگا جمنی تہذیب کو زندہ رکھا ہے

    • Share this:
    گنگاجمنی تہذیب کی انوکھی مثال ، عید الفطر کی نماز میں سوامی سنتوشانند مہاراج نے بھی کی شرکت
    گنگاجمنی تہذیب کی انوکھی مثال ، عید الفطر کی نماز میں سوامی سنتوشانند مہاراج نے بھی کی شرکت

    شہر الہ آباد اپنی گنگا جمنی تہذیب کے لئے پوری دنیا میں مشہور ہے ۔  یہاں سبھی مذاہب کے تہواروں کومل جل کر منانے کی قدیم روایت رہی ہے ۔ لیکن اس سال لاک ڈاؤن اور کورونا وائرس کی عالمی وبا کے چلتے قومی یکجہتی اور فرقہ وارانہ ہم آہنگی کے وہ مناظر دیکھنے کو نہیں ملے ، جو اس شہر کی شان ہوا کرتے تھے ۔ اس کے باوجود الہ آباد کے باشندوں نے اپنے شہر کی اس شاندار روایت کو قائم رکھنے کی کوشش کی ہے ۔ سماجی فاصلہ کے اصول پر عمل کرتے ہوئے شہر کی مساجد میں عید کی نماز تو ادا نہیں کی جا سکی ۔ بیشتر لوگوں نے اپنے گھروں پر ہی عید کی نماز ادا کرکے خدا کے حضور اپنا شکرانہ پیش کیا ۔


    گھروں پر ادا کی جانے والی عید کی نمازوں میں برادران وطن نے حسب سابق روایت عید کی نمازوں میں شرکت کی ۔ ماہ رمضان میں مسلمانوں کے ساتھ ساتھ بعض ہندوؤں میں بھی روزہ رکھنے کی روایت پہلے سے چلی آ رہی ہے ۔ لیکن الہ آباد میں مسلمانوں کے ساتھ ساتھ ہندوؤں کو بھی عید کی نماز ادا کرتے  ہوئے دیکھا جا سکتا ہے ۔ اس سال قومی ایکتا کا یہ پیغام مسجدوں سے دینے کی بجائے گھروں سے دینے کی کوشش کی گئی ۔


    گزشتہ کئی دہائیوں سے مسلمانوں کے ساتھ تہوار مناتے آر ہے سوامی سنتوشا نند مہاراج نے اس مرتبہ بھی مسلمانوں کے ساتھ نمازعید میں شرکت کرکے الہ آباد کی گنگا جمنی تہذیب کو زندہ رکھا ہے ۔ سوامی سنتوشا نند مہاراج یوں تو ہر سال عید کے موقع پر مسجد جاکر نماز میں شرکت کرتے تھے اور لوگوں کو عید کی مبارک باد پیش کرتے تھے ۔ لیکن اس مرتبہ انہوں نے شہر کے معروف سماجی کارکن ارشاد اللہ کے گھر جا کر عید کی نماز میں شرکت کی ۔


    نماز میں شرکت کے بعد سوامی سنتوشا نند نے کہا کہ اس ملک کی خوبصورتی یہاں کے مختلف مذاہب کے ماننے والوں سے ہے ۔ ان کا کہنا ہے کہ مذہبی ہم آہنگی کے ذریعہ ہی سماج میں امن اور بھائی چارہ کو قائم رکھا جا سکتا ہے ۔ اس موقع پر سماجی کارکن ارشاد اللہ نے سوامی سنتوشا نند کو سماج کے لئے ایک مثال قرار دیتے ہوئے کہا کہ جب تک سماج میں سوامی سنتوشانند مہاراج جیسی مثالی شخصیت موجود ہے ، یہاں کی گنگا جمنی تہذیب پر آنچ نہیں آسکتی ۔
    First published: May 25, 2020 06:01 PM IST
    corona virus btn
    corona virus btn
    Loading