உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    وزیر اعظم مودی نے ہندی دیوس کی دی مبارکباد ، کہا : عالمی سطح پر مضبوط شناخت بنا رہی ہندی

    وزیر اعظم نریندر مودی ۔ (PTI Photo)

    Hindi Diwas : قابل ذکر ہے کہ 14 ستمبر 1949 کو دستور ساز اسمبلی نے ہندی کو سرکاری زبان کا درجہ دیا۔ اس کے بعد سے ہر سال یہ دن ملک بھر میں ہندی دیوس کے طور پر منایا جاتا ہے۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی : وزیر اعظم نریندر مودی نے ہندی دیوس کے موقع پر ملک کے عوام کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ عالمی سطح پر ہندی مسلسل مضبوط شناخت بنا رہی ہے۔ منگل کو ایک ٹویٹ پیغام میں وزیر اعظم نے کہا کہ آپ سبھی کو ہندی دیوس پربہت بہت مبارکباد ۔ ہندی کو ایک اہل زبان بنانے میں مختلف شعبوں کے لوگوں نے نمایاں کردار ادا کیا ہے ۔ یہ آپ کی تمام کوششوں کا نتیجہ ہے کہ عالمی سطح پر ہندی مسلسل اپنی مضبوط شناخت بنا رہی ہے۔

      قابل ذکر ہے کہ 14 ستمبر 1949 کو دستور ساز اسمبلی نے ہندی کو سرکاری زبان کا درجہ دیا۔ اس کے بعد سے ہر سال یہ دن ملک بھر میں ہندی دیوس کے طور پر منایا جاتا ہے۔



      ملک کے عوام بنیادی کاموں میں ہندی کا استعمال کرنے کا عہد کریں : شاہ

      ادھر مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ نے اہل وطن سے اپیل کی ہے کہ وہ بنیادی کاموں میں اپنی مادری زبان کے ساتھ ہندی کے استعمال کا عہد کریں ۔ امت شاہ نے ہندی دیوس کے موقع پر ہم وطنوں کو مبارکباد دیتے ہوئے ایک ٹویٹ پیغام میں کہا کہ ہندی دیوس کے موقع پر میں تمام ہم وطنوں سے اپیل کرتا ہوں کہ وہ اپنی مادری زبان کے ساتھ سرکاری زبان ہندی کو بتدریج استعمال کرنے کا عہد کریں ۔

      یومِ ہندی پر راہل کی مبارکباد، دیگر زبان بھی پڑھنے کی اپیل

      ادھر کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے یوم ہندی کے موقع پر ملک کے باشندوں کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے منگل کے روز کہا کہ ایک زبان کو ٹھیک طرح سے سمجھنے کے لیے دیگر ہندوستانی زبانوں کو بھی سیکھنے کی ضرورت ہے ۔ راہل گاندھی نے ٹویٹ کیا کہ ایک زبان کی سمجھ بڑھانے کے لیے دیگر زبانوں کا علم بھی بڑھانا ہوگا۔

      یوم ہندی اسی کے ساتھ انہوں نے ایک پوسٹر بھی شیئر کیا جس میں یوم ہندی کی مبارکباد دیتے ہوئے ملک کی مختلف زبانوں کے حروف ہیں۔ ہندوستانی زبان کے حروف لکھے اس پوسٹر کے ذریعے وہ پیغام دے رہے ہیں کہ ملک کی کسی بھی ایک زبان کو سمجھنے کے لیے دیگر ریاستی زبانوں کا علم بھی ہونا ضروری ہے۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: