ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

پرینکا گاندھی کا یوپی پولیس پر سنگین الزام- خاتون پولیس افسرنے گلا پکڑا اوردھکا دیا

پرینکا گاندھی نےاپنےآفیشیل فیس بک پیج پرپولیس زیادتیوں پر لکھا، 'یوپی پولیس کی یہ کیا حرکت ہے۔ اب ہم لوگوں کو کہیں بھی آنےجانے سے روکا جارہا ہے۔ مجھے طاقت کے دم پر روکا اورخاتون افسرنے میرا گلا پکڑکرکھینچا۔

  • Share this:
پرینکا گاندھی کا یوپی پولیس پر سنگین الزام- خاتون پولیس افسرنے گلا پکڑا اوردھکا دیا
پرینکا گاندھی نےسی اے اے کے خلاف احتجاج کے دوران گرفتارہوئے ایس آردارا پوری کی فیملی سے ملاقات کرنے پہنچیں۔ تصویراے این آئی

لکھنؤ: کانگریس جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی اپنےدوروزہ دورے پرلکھنؤ آئی ہیں۔ اس دوران ہفتہ کوجب وہ شہریت ترمیمی قانون (سی اے اے) احتجاج معاملے میں جیل میں بند ریٹائرڈ پولیس افسرسماجی کارکن ایس آردارا پوری کےگھرجارہی تھیں تو مقامی پولیس نے ان کےقافلےکوروک دیا، جس کے بعد پرینکا گاندھی گاڑی سے اترکرپیدل ہی ان کی رہائش گاہ کی طرف نکل پڑیں۔ پولیس انتظامیہ اوران کی سیکورٹی کوجب تک کچھ سمجھ آتا ، پرینکا گاندھی پیدل مارچ کرتےہوئےچل پڑیں۔ تاہم پرینکا گاندھی نےالزام لگا یا ہےکہ اس دوران یوپی پولیس نےان کےساتھ زیادتی کی اوران کا گلا دبانےکی کوشش کی۔


پرینکا گاندھی نےکیا پیدل مارچ


تقریباً چارسےپانچ کلومیٹرپیدل چل کرپرینکا گاندھی ایس آردارا پوری کےگھرپہنچیں۔ اس دوران پرینکا گاندھی کےحامیوں کا ہجوم امنڈ پڑا۔ پولیس اورانتظامیہ دونوں ہی پرینکا گاندھی کےسامنے بونےنظرآئے۔ ایس آرا داراپوری کےگھرکےعلاوہ وہ لکھنؤمیں تشدد کےالزامات میں گرفتارصدف ظفرکےگھربھی پیدل ہی پہنچیں۔ حالانکہ اس دوران کانگریس جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی کےساتھ لکھنؤ پولیس کےذریعہ بے حسی کئے جانےکا الزام عائد کرتے ہوئے خاتون پولیس افسرپرگلا دبانے اور دھکا دینے کا الزام عائد کیا ہے۔ اس دوران پرینکا گاندھی پارٹی کارکن کے ساتھ اسکوٹی پربیٹھ کرآگے بڑھیں۔




پرینکا گاندھی نے لگایا الزام

پرینکا گاندھی نےاپنےآفیشیل فیس بک پیج پرپولیس زیادتیوں پرلکھا، 'یوپی پولیس کی یہ کیا حرکت ہے۔ اب ہم لوگوں کو کہیں بھی آنےجانےسےروکا جارہا ہے۔ مجھےطاقت کےدم پر روکا اورخاتون افسرنےمیرا گلا پکڑکرکھینچا۔ پرینکا گاندھی نےمیڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ میں اپنا پروگرام ختم کرکے خاموشی کے ساتھ اپنی گاڑی میں بیٹھ کریہاں ایس آردارا پوری کےگھرجارہےتھے، تب پولیس نےمجھےروک لیا، پھرمیں نےکہا کہ میں پیدل جاؤں گی، اس وقت مجھےایک خاتون پولیس افسرنےدھکیلا اورپھرمجھے پکڑا۔ پھرمیں اپنے پارٹی کےکارکن کی اسکوٹی پربیٹھ کرچلی گئی۔ اسے بھی روکا گیا۔
First published: Dec 28, 2019 08:31 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading