உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Prophet Muhammad: رانچی میں2افرادہلاک، کئی ریاستوں میں انٹرنیٹ بند، ہاوڑہ میں60افرادگرفتار

    Youtube Video

    دہلی، مہاراشٹر اور دیگر ریاستوں میں جہاں لوگوں نے نماز جمعہ کے بعد نوپور شرما اور نوین کمار جندال کی گرفتاری کا مطالبہ کرتے ہوئے احتجاج کیا، وہاں بھی مقدمات درج ہوتے دیکھے گئے۔

    • Share this:
      ملک بھر میں جمعہ کی نماز کے بعد پیغمبر انسانیت حضرت محمد ﷺ کی شان میں گستاخی کے خلاف جو احتجاج ہوئے تھے، اب اس کے نتائج بھی سامنے آرہے ہیں۔ رانچی (Ranchi) میں دو افراد ہلاک کردئے گئے ہیں، جبکہ 60 لوگوں کو ہفتہ کے روز مغربی بنگال کے ہاوڑہ ضلع میں تازہ احتجاج کے سلسلے میں گرفتار کیا گیا۔

      متعدد متاثرہ اضلاع میں انٹرنیٹ معطل اور سیکورٹی سخت کر دی گئی اور اتر پردیش میں 240 کے قریب لوگوں کو گرفتار کیا گیا ہے۔ دہلی، مہاراشٹر اور دیگر ریاستوں میں جہاں لوگوں نے نماز جمعہ کے بعد نوپور شرما اور نوین کمار جندال کی گرفتاری کا مطالبہ کرتے ہوئے احتجاج کیا، وہاں بھی مقدمات درج ہوتے دیکھے گئے۔

      ہندو تنظیموں میں رانچی بند کی کال:

      ہندو تنظیموں نے رانچی میں بند کی کال دی، یہاں تک کہ وزیر اعلیٰ ہیمنت سورین نے ریاستی دارالحکومت میں تشدد کی اعلیٰ سطحی تحقیقات کا حکم دیا۔ احمد آباد (گجرات)، نئی ممبئی (مہاراشٹرا)، لدھیانہ (پنجاب)، حیدرآباد (تلنگانہ) اور جموں و کشمیر میں بھی احتجاجی مظاہرے ہوئے۔

      مظاہروں اور اس کے پرتشدد نتائج نے ملک بھر کی جماعتوں کی طرف سے سیاسی ردعمل کو جنم دیا ہے۔ اے آئی ایم آئی ایم (aimim) کے سربراہ اسد الدین اویسی نے بی جے پی پر شرما کے خلاف بروقت کارروائی نہ کرنے کا الزام لگایا۔ انہوں نے کہا کہ کسی کو بھی اس معاملے پر تشدد میں ملوث نہیں ہونا چاہئے اور پولیس کو بھی قانون کو اپنے ہاتھ میں نہیں لینا چاہئے۔

      مرکزی وزیر رام داس اٹھاولے نے لوگوں خصوصاً مسلمانوں سے امن برقرار رکھنے کی اپیل کی اور کہا کہ حکومت اور پولیس فرقہ وارانہ تشدد کو ہوا دینے کی کوشش کرنے والوں پر نظر رکھے ہوئے ہے۔

      جھارکھنڈ:
      جھارکھنڈ کے وزیر اعلیٰ ہیمنت سورین نے رانچی میں ہونے والے مہلک تشدد کی تحقیقات کے لیے سینئر آئی اے ایس افسر امیتابھ کوشل اور اے ڈی جی پی سنجے لاٹکر پر مشتمل دو رکنی کمیٹی تشکیل دی ہے، جبکہ ایک ایس آئی ٹی بھی تشکیل دی گئی ہے۔ کمیٹی کو ایک ہفتے میں رپورٹ پیش کرنے کا کہا گیا ہے۔

      مزید پڑھیں: UP Violence: نماز جمعہ کے بعد ہوئے تشدد کے معاملہ میں اب تک 255 گرفتار، جانئے کیا ہے یوگی کا حکم؟

      راجندر انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز کی معلومات کے مطابق رانچی میں 22 سالہ محمد مدثر کیفی کے سر پر گولی لگی تھی اور 24 سالہ محمد ساحل کی گردن پر گولی لگی تھی، یہ دونوں علاج کے دوران فوت ہو گئے۔ حکام نے بتایا کہ آٹھ دیگر آئی سی یو میں ہیں۔ واضح رہے کہ بی جے پی کے معطل کردہ ترجمانوں کی طرف سے پیغمبر اسلام حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم کے خلاف متنازعہ ریمارکس پر بڑے پیمانے پر احتجاج کیا گیا۔

      یہ بھی پڑھئے: Saharanpur Violence: پولیس نے 64 افراد کو کیا گرفتار، دو کے گھر پر چلا بلڈوزر

      رانچی کے ڈی آئی جی انیش گپتا نے کہا کہ اب تک تین ایف آئی آر درج کی گئی ہیں۔ تشدد میں ملوث افراد کی گرفتاری کے لیے سرچ آپریشن جاری ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: