உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    داوس اجلاس: راہل نے معاشی عدم مساوات پر مودی کو آڑے ہاتھوں لیا

    کانگریس صدر راہل گاندھی: فائل فوٹو۔

    نئی دہلی۔ کانگریس صدر راہل گاندھی نے ملک میں معاشی عدم مساوات کا مسئلہ اٹھاتے ہوئے وزیر اعظم نریندر مودی سے کہا ہے کہ وہ داوس میں عالمی برادری کے سامنے یہ بتائيں کہ ملک کی ایک فیصد آبادی کے پاس ہی کل املاک کا 73 فیصد حصہ کیوں ہے؟

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:

      نئی دہلی۔ کانگریس صدر راہل گاندھی نے ملک میں معاشی عدم مساوات کا مسئلہ اٹھاتے ہوئے وزیر اعظم نریندر مودی سے کہا ہے کہ وہ داوس میں عالمی برادری کے سامنے یہ بتائيں کہ ملک کی ایک فیصد آبادی کے پاس ہی کل املاک کا 73 فیصد حصہ کیوں ہے؟ مسٹر گاندھی نے سوئٹزرلینڈ کے داوس میں عالمی اقتصادی فورم کے اجلاس میں مسٹر مودی کی تقریر کے بعد ٹوئیٹ کرکے یہ سوال کیا۔ انہوں نے کہا کہ ' عزت مآب وزیر اعظم، سوئٹزرلینڈ میں آپ کا خوش آمدید! براہ مہربانی داوس میں بتائیں کہ ہندوستان کے ایک فیصد لوگوں کے پاس کل آمدنی کا 73 فیصد حصہ کیوں چلاجاتا ہے؟


      مسٹر راہل گاندھی نے اپنے ٹویٹر اکاؤنٹ پر ایک تصویر بھی پوسٹ کی ہے جس میں ایک ہوٹل کے اندر امیر لوگ مختلف طرح کے کھانے سے لطف اندوز ہو رہے ہیں اور غریب طبقے کی ایک بچی ہوٹل کے باہر شیشے سے ان کو للچاتی نظروں سے دیکھ رہی ہے۔ مسٹر گاندھی نے مسٹر مودی کو مخاطب کرکے لکھا ہے کہ 'میں آپ کےحوالے کے لئے ایک رپورٹ بھی منسلک کر رہا ہوں'۔


      مسٹر گاندھی نے آکسفیم انٹرنیشنل کی طرف سے کل جاری ہونے والی سالانہ رپورٹ کو منسلک کیا ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ ملک کی 67 کروڑ آبادی غریب ہے اور گزشتہ سال اس آبادی کی آمدنی میں صرف ایک فیصد تک اضافہ ہوا ہے۔ جبکہ ایک فیصد امیر ترین آبادی کے پاس آمدنی کا 73 فیصد حصہ گيا ہے۔ رپورٹ کے مطابق گزشتہ سال ارب پتیوں کی تعداد بڑھ کر 2،043 ہو گئی ہے جن میں سے 90 فیصد مرد ہیں۔

      First published: