ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

راہل گاندھی کا نیا حملہ: پے ٹی ایم مطلب 'پے ٹو مودی'، نوٹ بندی کا فیصلہ احمقانہ

راہل نے پی ایم مودی پر حملہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ ایک دم بیکار فیصلہ ہے، اس سے پورے ملک کو نقصان ہوا ہے۔

  • IBN Khabar
  • Last Updated: Dec 08, 2016 11:37 AM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
راہل گاندھی کا نیا حملہ: پے ٹی ایم مطلب 'پے ٹو مودی'، نوٹ بندی کا فیصلہ احمقانہ
راہل نے پی ایم مودی پر حملہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ ایک دم بیکار فیصلہ ہے، اس سے پورے ملک کو نقصان ہوا ہے۔

نئی دہلی۔ نوٹ بندی کا آج ایک مہینہ مکمل ہو گیا ہے۔ آج اپوزیشن نے نئی طاقت کے ساتھ مودی حکومت پر حملہ بولا۔ پارلیمنٹ کی عمارت کے احاطے میں کانگریس سمیت تمام اپوزیشن جماعتوں نے مظاہرہ کیا اور حکومت پر سخت حملہ بولا۔ خاص طور پر کانگریس نائب صدر راہل گاندھی نے وزیر اعظم مودی پر شدید حملہ بولتے ہوئے کہا کہ اسے لے کر پی ایم بہانہ بازی کر رہے ہیں۔


راہل نے پی ایم مودی پر حملہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ ایک دم بیکار فیصلہ ہے، اس سے پورے ملک کو نقصان ہوا ہے۔ نوٹ بندی ایک احمقانہ فیصلہ ہے۔ آغاز میں انہوں نے بولا کالا دھن واپس آئے گا، وہ بات بیکار ہو گئی۔ کالے دھن کے بعد وزیر اعظم دہشت گردی کے پاس گئے۔ پھر وزیر اعظم نے کہا کہ یہ نقلی نوٹ کے خلاف ہے۔ پھر وزیر اعظم بھاگے اور کہا کہ کیش لیس اکنامی کی طرف گئے۔ کیش لیس اکنامی سے 4-5 کمپنیوں کو فائدہ ہو گا۔ ہم انہیں فرار نہیں دیں گے، ہم پکڑ کر ان کو سمجھا دیں گے۔


راہل نے کہا کہ ہاؤس کو چلانے کی ذمہ داری حکومت کی ہے، ہم چاہتے ہیں ووٹ ہو، ووٹ ہوگا تو بی جے پی کے لوگ بھی ہمیں ووٹ دیں گے۔ وزیر اعظم پاپ کنسرٹ میں جا رہے ہیں، لیکن یہاں نہیں آ رہے۔ یہاں آئیں گے تو دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہو جائے گا۔ حکومت بحث نہیں چاہتی ہے۔ راہل نے کیش لیس ٹرانزیکشن کو لے کر بھی مودی کو گھیرا اور نیا جملہ اچھالا: پےٹی ایم کا مطلب پے ٹو مودی۔ جب ان سے سوال پوچھا گیا کہ پے ٹو مودی کیوں ہے؟ انہوں نے جواب دیا، لوک سبھا میں بولنے دیں گے تو میں سب صاف کر دوں گا۔


انہوں نے کہا، آخری بات میں کہنا چاہتا ہوں کہ مودی جی نے کسی کو نہیں بتایا تھا فیصلے کے بارے میں۔ بنگال بی جے پی نے فیصلے سے ٹھیک پہلے پیسہ جمع کرایا، بہار میں زمین خریدی، کرناٹک کے بی جے پی لیڈر نے 500 کروڑ کی شادی کی، ان کے ڈرائیور نے خود کشی کر لی۔ جن کو معلوم ہونا تھا، انہیں سب معلوم تھا۔ بی جے پی کے لوگوں نے اور مودی جی نے انہیں پہلے ہی بتا دیا۔ نقصان غریبوں کا ہوا، کالا دھن والے سب بھاگ گئے، لائن میں ایک بھی امیر آدمی نہیں دکھا، لائن میں غریب لگے ہیں۔ یہ سوٹ بوٹ کی حکومت کا کام ہے۔
First published: Dec 08, 2016 11:34 AM IST