உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Rajasthan: جودھ پور کے بعد بھیلواڑہ میں دو نوجوانوں پر حملہ، علاقہ میں تناؤ، انٹرنیٹ معطل

    ’ہم نے بروقت کارروائی کی‘

    ’ہم نے بروقت کارروائی کی‘

    دریں اثنا سی ایم اشوک گہلوت نے جمعرات کو ریاست میں حالیہ فرقہ وارانہ جھڑپوں کی مذمت کی اور کہا کہ مقدمہ اور مذہب کے نام پر سیاست ہو رہی ہے۔ انہوں نے آر ایس ایس اور بی جے پی پر کرولی اور جودھپور میں ’فسادات بھڑکانے کی منصوبہ بندی کرنے کا الزام لگایا۔

    • Share this:
      راجستھان کے بھیلواڑہ (Bhilwara) کے سنگینر قصبے (Sangener town) میں دو نوجوانوں پر حملے سے علاقے میں کشیدگی پھیل گئی ہے۔ بدھ کی رات دیر گئے دو افراد پر نامعلوم افراد نے حملہ کیا جب وہ کھانا کھا رہے تھے۔ ان کی موٹر سائیکل کو بھی آگ لگا دی گئی۔ حملہ آوروں اور حملے کے پیچھے محرکات جاننے کے لیے تفتیش جاری ہے۔

      دونوں زخمیوں کا ضلع اسپتال میں علاج چل رہا ہے اور ان کی حالت مستحکم بتائی جاتی ہے۔ اس واقعے کے بعد بھیلواڑہ شہر میں انٹرنیٹ خدمات 24 گھنٹے کے لیے معطل کر دی گئی ہیں۔ میں لوگوں سے اپیل کرتا ہوں کہ وہ افواہوں پر کان نہ دھریں اور علاقے میں امن برقرار رکھیں۔

      کشیدہ صورتحال کے پیش نظر علاقے میں پولیس فورس تعینات کردی گئی ہے اور اسپیشل پولیس فورس کے اہلکار سڑکوں پر گشت کررہے ہیں۔ سانگنیر کے علاقے میں ایک بڑا ہجوم جمع ہو کر حملہ آوروں کی گرفتاری کا مطالبہ کر رہا ہے۔ یہ واقعہ اس وقت سامنے آیا ہے جب منگل کے روز جودھ پور میں عید کے روز جھنڈا لہرانے پر فرقہ وارانہ کشیدگی پھیل گئی تھی، جس نے حکام کو کرفیو نافذ کرنے اور موبائل انٹرنیٹ خدمات کو معطل کرنے پر اکسایا تھا۔ اب تک، پولیس نے امن اور ہم آہنگی میں خلل ڈالنے کے الزام میں 141 افراد کو گرفتار کیا ہے۔

      دریں اثنا سی ایم اشوک گہلوت نے جمعرات کو ریاست میں حالیہ فرقہ وارانہ جھڑپوں کی مذمت کی اور کہا کہ مقدمہ اور مذہب کے نام پر سیاست ہو رہی ہے۔ انہوں نے آر ایس ایس اور بی جے پی پر کرولی اور جودھپور میں ’فسادات بھڑکانے کی منصوبہ بندی کرنے کا الزام لگایا۔

      مزید پڑھیں: امتحانی تناؤ کو کم کرنے Instagram نےاٹھایا قدم، ’مابعد کووڈ۔19طلبا کی ہوگی بہتر رہنمائی‘

      انہوں نے کہا کہ راج گڑھ میں جہاں ان کا اپنا بورڈ ہے۔ ہم نے بروقت کارروائی کی۔ چھوٹے موٹے واقعات ہوئے اور ہم نے اس پر قابو پالیا اور گرفتاریاں کیں۔ ہم نے فیصلہ کیا ہے کہ راجستھان میں کسی بھی قیمت پر تشدد نہیں ہوگا۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: