ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

بی ایس پی صدر مایاوتی بولیں۔ راجستھان کے وزیر اعلیٰ اشوک گہلوت کو سکھایا جائے گا سبق

اپنے چھ ارکان اسمبلی کے لئے وہپ جاری کرتے ہوئے مایاوتی نے کہا کہ سبھی ارکان اسمبلی کانگریس حکومت کے خلاف ووٹ کریں گے۔

  • Share this:
بی ایس پی صدر مایاوتی بولیں۔ راجستھان کے وزیر اعلیٰ اشوک گہلوت کو سکھایا جائے گا سبق
بی ایس پی صدر مایاوتی بولیں۔ راجستھان کے وزیر اعلیٰ اشوک گہلوت کو سکھایا جائے گا سبق

لکھنئو۔ بی ایس پی صدر مایاوتی (BSP Supremo Mayawati) نے راجستھان (Rajasthan) کے سیاسی بحران پر منگل کو پریس کانفرنس کر وزیر اعلیٰ اشوک گہلوت پر سخت حملہ بولا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس کی اشوک گہلوت حکومت کو سبق سکھایا جائے گا۔ اپنے چھ ارکان اسمبلی کے لئے وہپ جاری کرتے ہوئے مایاوتی نے کہا کہ سبھی ارکان اسمبلی کانگریس حکومت کے خلاف ووٹ کریں گے۔ انہوں نے گہلوت حکومت پر الزام لگاتے ہوئے کہا کہ الیکشن نتائج آنے کے بعد بی ایس پی نے بغیر شرط کانگریس کو حمایت دی، لیکن بدنیتی سے سبھی ارکان اسمبلی کو شامل کروا لیا گیا۔



منگل کو میڈیا سے بات کرتے ہوئے مایاوتی نے کہا ’ راجستھان الیکشن کے نتائج آنے کے بعد بی ایس پی نے کانگریس کو بلا شرط حمایت دی تھی۔ دکھ کی بات ہے کہ گہلوت نے وزیر اعلیٰ بننے کے بعد بدنیتی سے بی ایس پی کو راجستھان میں نقصان پہنچانے کے لئے اپنی پارٹی میں شامل کرنے کی غیر قانونی کارروائی کی۔ یہی حرکت پچھلی حکومت میں بھی کی گئی تھی۔ بی ایس پی کو بار بار دھوکہ دیا گیا ہے۔ گہلوت کو سبق سکھایا جا سکتا ہے۔ اس معاملے کو ٹھنڈا نہیں ہونے دیا جائے گا اور معاملے کو سپریم کورٹ تک لے جائیں گے۔ کانگریس جو غیر قانونی کام کر رہی ہے، اسے سپریم کورٹ لے جائیں گے‘۔


معاملے کو سپریم کورٹ لے جائے گی بی ایس پی

مایاوتی نے آگے کہا ’ ہم نے سبھی چھ ارکان اسمبلی ( جنہوں نے بی ایس پی کے نشان پر الیکشن لڑا ہے) سے کہا ہے کہ وہ اسمبلی میں اعتماد کی تحریک کے دوران کانگریس حکومت کے خلاف ووٹ کریں۔ ایسا نہ کرنے پر ان کی رکنیت ختم کر دی جائے گی۔ بی ایس پی کانگریس اور گہلوت حکومت کو پہلے بھی سبق سکھا سکتی تھی، لیکن ہم وقت کا انتظار کر رہے تھے۔ اب ہم نے عدالت جانے کا فیصلہ کیا ہے۔ ہم نے سپریم کورٹ جانے کا فیصلہ کیا ہے۔
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Jul 28, 2020 12:57 PM IST