ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

وادی کشمیر میں دہشت گردوں کے خلاف سیز فائر میں توسیع کا فیصلہ عنقریب لیا جائے گا : راجناتھ سنگھ

مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ نے اس بات کا اعادہ کیا کہ وادی کشمیر میں دہشت گردوں کے خلاف سیکورٹی فورسز کے آپریشنز پر لگی روک میں توسیع کا فیصلہ سیکورٹی کی صورتحال کا جائزہ لینے اور ریاستی نمائندوں سے بات چیت کے بعد ہی لیا جائے گا

  • UNI
  • Last Updated: Jun 08, 2018 04:58 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
وادی کشمیر میں دہشت گردوں کے خلاف سیز فائر میں توسیع کا فیصلہ عنقریب لیا جائے گا : راجناتھ سنگھ
راجناتھ سنگھ۔ فائل فوٹو

کپواڑہ : مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ نے جمعہ کے روز اس بات کا اعادہ کیا کہ وادی کشمیر میں دہشت گردوں کے خلاف سیکورٹی فورسز کے آپریشنز پر لگی روک میں توسیع کا فیصلہ سیکورٹی کی صورتحال کا جائزہ لینے اور ریاستی نمائندوں سے بات چیت کے بعد ہی لیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ آئندہ کچھ روز میں سیکورٹی کا جائزہ لینے کے لئے ایک اجلاس بلایا جائے گا جس میں ’آپریشنز کی معطلی‘ میں توسیع کرنے یا نہ کرنے کا فیصلہ لے لیا جائے گا۔

وزیر داخلہ نے ڈاک بنگلہ کپواڑہ میں عوامی وفود سے ملاقات کے بعد نامہ نگاروں کے سوالات کا جواب دیتے ہوئے کہا ’کچھ دنوں کے بعد ہم بیٹھیں گے، پوری سیکورٹی صورتحال کا جائزہ لیا جائے گا۔ یہاں کے کچھ نمائندوں سے بھی بات کریں گے۔ اس کے بعد ہی کوئی فیصلہ لیا جائے گا‘۔ اس سے قبل مسٹر راجناتھ سنگھ نے جمعرات کو سری نگر میں شہرہ آفاق ڈل جھیل کے کناروں پر واقع کے ایس کے آئی سی سی میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آپریشنز پر لگی روک میں توسیع کے امکان کو مسترد نہیں کیا جاسکتا۔

انہوں نے کہا کہ متعلقین بشمول وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی سے بات چیت اور سیکورٹی صورتحال کا جائزہ لینے کے بعد ہی اس پر کوئی حتمی فیصلہ لیا جائے گا۔ ان کا کہنا تھا ’آپریشنز کی معطلی اس وقت جاری ہے۔ ہم بیٹھیں گے۔ وزیر اعلیٰ سے بھی بات کریں گے۔ سیکورٹی صورتحال کا جائزہ لیں گے۔ کسی بھی امکان کو مسترد نہیں کیا جاسکتا‘۔ وزیر داخلہ نے کہا تھا ’رمضان کا مہینہ بہت ہی مقدس مانا جاتا ہے۔ بہت غور و خوض کے بعد ہمارے وزیر اعظم نے آپریشنز کی معطلی کا فیصلہ لیا۔ عام عوام کی سہولیت ، جذبات اور احساسات کو دھیان میں رکھتے ہوئے یہ فیصلہ کیا گیا ہے۔ اس دوران ہماری فوج، سیکورٹی فورسز اور ریاستی پولیس نے انتہائی صبر وتحمل کے ساتھ کام کیا‘۔

واضح رہے کہ مرکزی حکومت نے 16 مئی کو وادی میں ماہ رمضان کے دوران سیکورٹی فورسز کے آپریشنز کو معطل رکھنے کا اعلان کیا۔ تاہم دہشت گردوں کی طرف سے حملے کی صورت میں سیکورٹی فورسز کو جوابی کاروائی کا حق دیا گیا۔ آپریشنز کی معطلی جسے ’یکطرفہ فائر بندی کا نام بھی دیا جارہا ہے‘ کو وادی میں قیام امن کی سمت میں ایک غیرمعمولی قدم سمجھا جارہا ہے۔

First published: Jun 08, 2018 04:58 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading