உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    صحافیوں کی پٹائی معاملے میں راج ناتھ اور بسی نے توڑی خاموشی، کہا قصورواروں کے خلاف ہو گی کارروائی

    نئی دہلی۔ ملک مخالف نعروں کے معاملے میں جے این یو طلبہ یونین صدر کنہیا کمار کی پٹیالہ ہاؤس کورٹ میں پیشی کے دوران وکلاء کی طرف سے صحافیوں اور طالب علموں کی پٹائی کے معاملے میں وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے خاموشی توڑی ہے۔

    نئی دہلی۔ ملک مخالف نعروں کے معاملے میں جے این یو طلبہ یونین صدر کنہیا کمار کی پٹیالہ ہاؤس کورٹ میں پیشی کے دوران وکلاء کی طرف سے صحافیوں اور طالب علموں کی پٹائی کے معاملے میں وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے خاموشی توڑی ہے۔

    • IBN Khabar
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی۔ ملک مخالف نعروں کے معاملے میں جے این یو طلبہ یونین صدر کنہیا کمار کی پٹیالہ ہاؤس کورٹ میں پیشی کے دوران وکلاء کی طرف سے صحافیوں اور طالب علموں کی پٹائی کے معاملے میں وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے خاموشی توڑی ہے۔

      راج ناتھ نے کہا کہ پٹائی معاملہ میں مقدمہ درج کر لیا گیا ہے اور تحقیقات جاری ہیں۔ وہیں دہلی پولیس کمشنر بی ایس بسی نے بھی کہا کہ اس سلسلے میں کیس درج کر لیا گیا ہے۔ تحقیقات کے بعد کارروائی ہوگی۔

      پولیس کمشنر بسی نے یہ بھی کہا ہے کہ صحافیوں کے ساتھ مار پیٹ کے دوران اگر وہاں پولیس اہلکاروں نے لاپرواہی برتی ہے تو ان کے خلاف بھی سخت کارروائی ہوگی۔ مار پیٹ کی ویڈیو کی جانچ چل رہی ہے جس کے بعد صحافیوں کے ساتھ مار پیٹ کے الزام میں وکلاء کی گرفتاری ہوگی۔

      بتا دیں کہ کل عدالت میں کنہیا کی پیشی سے پہلے وکلاء کی صحافیوں اور طالب علموں سے جھڑپ ہو گئی تھی۔ وکلاء نے کچھ طالب علموں کو تو مارا پیٹا ہی صحافیوں پر بھی حملہ بولا۔ آئی بی این 7 کے رپورٹر امت پانڈے کو بھی وکلاء نے پیٹا۔ اس کے علاوہ سی این این ۔آئی بی این کی رپورٹر میناکشی اپریتی سے بھی بدسلوکی کی۔

      اس معاملے میں دو ایف آئی آر درج کی گئی ہے۔ پہلی ایف آئی آر نامعلوم افراد کے خلاف ہے اور دوسری کورٹ کے باہر ہنگامے کو لے کر ہے۔
      First published: