ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

پاکستان کے ساتھ اچھے تعلقات کے خواہاں ہیں، مگر اسے پہل خود کرنی ہوگی: راجناتھ سنگھ

مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ نے کہا کہ بھارت اپنے تمام پڑوسیوں بشمول پاکستان کے ساتھ اچھے تعلقات کا خواہاں ہے۔ تاہم بقول ان کے پاکستان کو بھارت کے ساتھ تعلقات کو بہتر بنانے کے لئے ازخود پہل کرنی ہوگی۔

  • UNI
  • Last Updated: Jun 08, 2018 08:43 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
پاکستان کے ساتھ اچھے تعلقات کے خواہاں ہیں، مگر اسے پہل خود کرنی ہوگی: راجناتھ سنگھ
راجناتھ سنگھ۔ فائل فوٹو

جموں وکشمیر: مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ نے کہا کہ بھارت اپنے تمام پڑوسیوں بشمول پاکستان کے ساتھ اچھے تعلقات کا خواہاں ہے۔ تاہم بقول ان کے پاکستان کو بھارت کے ساتھ تعلقات کو بہتر بنانے کے لئے ازخود پہل کرنی ہوگی۔


راجناتھ سنگھ نے کہا کہ بھارت اب کمزور نہیں بلکہ ایک طاقتور ملک بن گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر کے حالات میں نمایاں بہتری آئی ہے اور وہاں کی سڑکوں پر گاڑیاں معمول کے مطابق چل رہی ہیں۔ وزیر داخلہ نے یہ باتیں جمعہ کے روز یہاں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہیں۔


انہوں نے پاکستان سے تعلقات کے بارے میں پوچھے گئے ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا ’ہم اپنے تمام پڑوسی ممالک کے ساتھ اچھے تعلقات چاہتے ہیں۔ لیکن پاکستان کو کم از کم پہل تو کرنی چاہیے۔ اس کی زمین پر دہشت گردی کو فروغ دیا جارہا ہے، کم از کم اس کو روکا جائے‘۔ وزیر داخلہ نے کہا کہ بھارت اب کمزور نہیں بلکہ ایک طاقتور ملک بن گیا ہے۔


راجناتھ سنگھ نے کشمیر کے حالات پر کہا ’وہاں کے حالات میں کافی سدھار آگیا ہے‘۔ ان کا کہنا تھا ’مجھے اب کی بار کشمیر کے حالات بہت اچھے نظر آئے۔ کشمیر کی سڑکوں پر میں نے گاڑیوں کو معمول کے مطابق چلتے ہوئے دیکھا۔ سٹیڈیم (انڈور سٹیڈیم) میں پانچ سے چھ ہزار بچوں کا آنا، اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ وہاں کے حالات بدل گئے ہیں‘۔
انہوں نے کہا ’جموں وکشمیر کا سفر شروع کرنے سے دو تین دن پہلے ہی میں نے کچھ فیصلے لئے تھے۔ میں نے لوگوں کو ان فیصلوں سے آگاہ کیا۔ لوگوں نے ان فیصلوں کا خیرمقدم کیا ہے‘۔ وزیر داخلہ نے کہا کہ مرکزی حکومت نے جموں وکشمیر میں پولیس کی 9 نئی بٹالین بنانے کا فیصلہ کرلیا ہے۔


انہوں نے کہا ’ہم لوگوں نے 9 بٹالین بنانے کا فیصلہ کیا ہے۔ ان میں سے دو بٹالین سرحد کے نذدیک رہنے والے نوجوانوں کے لئے ہوں گی۔ ان کا نام بارڈر بٹالین ہوگا۔ 9 بٹالین میں پانچ انڈین ریزرو بٹالین بھی شامل ہیں۔ ان میں 5 ہزار نوجوان بھرتی ہوں گے۔ اس میں ہم نے ایک شرط رکھی ہے کہ سرحدوں کے نذدیک رہائش پذیر نوجوانوں کو اس میں 60 فیصد ریزر ویشن حاصل ہوگی۔ اس کے علاوہ خواتین کی بھی دو بٹالین ہیں۔ ان میں سے جموں اور کشمیر کے لئے ایک ایک بٹالین ہے۔ اس میں بھی یہی شرط رکھی ہے۔ خواتین بٹالین سے جموں وکشمیر کی قریب 2 ہزار خواتین کو روزگار ملے گا‘۔ 

وزیر داخلہ نے کہا کہ سرحدی گولہ باری کے نتیجے میں جاں بحق ہونے والے افراد کے ورثاء کو دیا جانے والا معاوضہ ایک لاکھ روپے سے بڑھا کر پانچ لاکھ روپے کردیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا ’آپ کو معلوم ہے کہ جب بھاری گولہ باری ہوتی ہے تو اموات ہوتی ہیں۔ وہاں رہنے والے لوگوں کے مویشیوں کی بھی موت ہوتی ہے۔ سب سے بڑا نقصان کسان کا ہوتا ہے۔ پہلے جب سرحدی گولہ باری کے نتیجے میں کسی کی موت واقع ہوتی تھی تو اس کے ورثاء کو 75 ہزار یا ایک لاکھ روپے بطور معاوضہ دیے جاتے تھے۔ وہ پیسے بھی تین سال کے لئے فکسڈ ڈپازٹ کئے جاتے تھے۔ ورثاء ان پیسوں کا استعمال تین سال کے بعد کرپاتے تھے‘۔

راجناتھ سنگھ نے کہا ’لیکن اب یہ فیصلہ لیا گیا ہے کہ گولہ باری کے نتیجے میں جاں بحق ہونے والے کسی بھی سرحدی رہائشی کے ورثاء کو پانچ لاکھ روپے بطور معاوضہ فراہم کئے جائیں گے۔ اس میں فکسڈ ڈپازت کی شرط ہم نے ختم کردی ہے۔ یہ پیسہ سیدھے ان کے بینک کھاتوں میں جائے گا۔ ہم نے فیصلہ کیا ہے کہ سرحدی گولہ باری کے نتیجے میں مویشی کی موت ہوجانے کی صورت میں متاثرہ کنبے کو پچاس ہزار روپے بطور معاوضہ دیے جائیں گے‘۔

وزیر داخلہ نے کہا کہ سرحدی علاقوں کے لئے پانچ بلٹ پروف ایمبولنس گاڑیاں فراہم کی جائیں گی۔ انہوں نے کہا ’میں نے آج ہی اعلان کیا کہ سرحدی علاقوں کے لئے پانچ بلٹ پروف ایمبولنس گاڑیاں فراہم کی جائیں گی‘۔ انہوں نے کہا کہ اس کے علاوہ سرحدی آبادی کے لئے 14 ہزار 460 بنکر تعمیر کئے جائیں گے۔ انہوں نے کہا ’بنکروں کی تعمیر کا مطالبہ بھی دیرینہ ہے۔ ہم نے فیصلہ لیا ہے کہ 14 ہزار 460 بنکر بنائے جائیں گے۔ اس کے لئے 415 کروڑ روپے واگزار کئے جاچکے ہیں۔ لوگوں نے اس فیصلے کا خیرمقدم کیا ہے‘۔
First published: Jun 08, 2018 08:42 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading