உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    راجوری کی بابا غلام شاہ بادشاہ یونیورسٹی میں طلبہ کے دو گروپوں میں جھڑپیں

    جموں ۔  جموں وکشمیر کے ضلع راجوری میں واقع بابا غلام شاہ بادشاہ یونیورسٹی (بی جی ایس بی یو) میں پیر کے روز دو طلبہ گروپوں کے درمیان جھڑپیں ہوئیں جس دوران کشمیری طلبہ نے ہندوستان مخالف نعرے بازی کی۔

    جموں ۔ جموں وکشمیر کے ضلع راجوری میں واقع بابا غلام شاہ بادشاہ یونیورسٹی (بی جی ایس بی یو) میں پیر کے روز دو طلبہ گروپوں کے درمیان جھڑپیں ہوئیں جس دوران کشمیری طلبہ نے ہندوستان مخالف نعرے بازی کی۔

    جموں ۔ جموں وکشمیر کے ضلع راجوری میں واقع بابا غلام شاہ بادشاہ یونیورسٹی (بی جی ایس بی یو) میں پیر کے روز دو طلبہ گروپوں کے درمیان جھڑپیں ہوئیں جس دوران کشمیری طلبہ نے ہندوستان مخالف نعرے بازی کی۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:

      جموں ۔  جموں وکشمیر کے ضلع راجوری میں واقع بابا غلام شاہ بادشاہ یونیورسٹی (بی جی ایس بی یو) میں پیر کے روز دو طلبہ گروپوں کے درمیان جھڑپیں ہوئیں جس دوران کشمیری طلبہ نے ہندوستان مخالف نعرے بازی کی۔ پولیس نے بتایا کہ بی جی ایس بی یو میں پیر کی صبح دو طلبہ گروپوں کے درمیان جھڑپیں ہوئیں۔ عینی شاہدین نے بتایا کہ کیمپس میں کسی معاملے پر دو طلبہ گروپوں کے درمیان جھڑپیں بھڑک اٹھیں جس دوران متعدد گاڑیوں کو نقصان پہنچایا گیا۔


      ایک رپورٹ کے مطابق جھڑپوں کے دوران متعدد گاڑیوں کو آگ لگادی گئی۔ عینی شاہدین نے بتایا کہ کشمیری طلبہ نے کیمپس میں ہندوستان مخالف نعرے بازی کی۔ تاہم یونیورسٹی کے ایک عہدیدار نے بتایا کہ کیمپس میں کسی معاملے پر طلبہ کے دو گروپوں کے درمیان معمولی نوعیت کی جھڑپ ہوئی۔ انہوں نے بتایا ’کیمپس میں صورتحال قابو میں ہے اور ہم احتجاجی طلبہ کو منانے کی کوشش کررہے ہیں‘۔


      ایک پولیس افسر نے بتایا کہ طلبہ گروپوں نے ایک دوسرے پر پتھراؤ کیا اور صورتحال پر قابو پانے کے لئے سیکورٹی فورسز کی اضافی نفری وہاں بھیج دی گئی ہے۔

      First published: