ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

راجیہ سبھا میں بھی شہریت ترمیمی بل منظور، وزیراعظم مودی نےتاریخی اور سونیا گاندھی نےکالادن قراردیا

اس طرح سے اب شہریت ترمیمی بل کودونوں ایوانوں سے منظوری مل چکی ہے۔ اب یہ جلد ہی قانون بن جائے گا۔ حکومت کے حق میں 125 ووٹ پڑے جبکہ 105 اراکین پارلیمنٹ نے مخالفت میں ووٹ دیا۔

  • Share this:
راجیہ سبھا میں بھی شہریت ترمیمی بل منظور، وزیراعظم مودی نےتاریخی اور سونیا گاندھی نےکالادن قراردیا
وزیراعظم مودی کے لئے غریب لوگوں کی فکر کرنا سب سے زیادہ اہم ہے۔ فائل فوٹو

نئی دہلی: لوک سبھا میں منظوری کے بعد راجیہ سبھا میں شہریت ترمیمی بل پربحث  کے بعد ووٹنگ ہوئی۔ اس دوران راجیہ سبھا میں بھی یہ بل منظورہوگیا ہے۔ حکومت کے حق میں 125 ووٹ پڑے جبکہ بل کی مخالفت میں 105 ووٹ پڑے۔  اس طرح سے اب شہریت ترمیمی بل کودونوں ایوانوں سے منظوری مل چکی ہے۔ اب یہ جلد ہی قانون بن جائے گا۔  بل کی منظوری کے بعد راجیہ سبھا کی کارروائی جمعرات کو 11 بجےدن تک کےلئےملتوی کر دی گئی۔  راجیہ سبھا سے بل کی منظوری کے بعد وزیراعظم مودی نے تاریخی دن قرار دیا ہے۔ انہوں نے حکومت کے حق میں ووٹ دینے والے اراکین پارلیمنٹ کا شکریہ ادا کیا۔ جبکہ کانگریس صدر سونیا گاندھی نے پہلا بیان دیتے ہوئےآج کے دن کو 'کالا دن' قرار دیا ہے۔


اس سےقبل سلیکٹ کمیٹی کے پاس بل کوبھیجنےسے متعلق ووٹنگ ہوئی تھی، لیکن ووٹنگ میں تجویزمسترد ہوگئی تھی۔ ووٹنگ کےلحاظ سے یہ بل سلیکٹ کمیٹی کونہیں بھیجا جائےگا۔ اس دوران بڑی خبریہ ہےکہ شیوسینا نے واک آؤٹ کیا۔ جبکہ جے ڈی یونے حکومت کے حق میں ووٹنگ کی ہے۔ شہریت ترمیمی بل کوسلیکٹ کمیٹی کے پاس بھیجنے اورآئندہ سیشن میں لانے کے اپوزیشن کےمطالبہ کی تجویزمسترد ہوگئی ہے۔


 




اس سے قبل وزیرداخلہ امت شاہ نے اپوزیشن لیڈروں کے ذریعہ بحث میں اٹھائےگئے سوالوں کا جواب دیتے ہوئےکہا کہ میں جوبل لے کرآیا ہوں وہ کسی کے جذبات کوٹھیس پہنچانے کے لئےنہیں ہے، نہ ہی ملک کےکسی طبقےکوپریشان کیا جائےگا۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس اور پاکستان کےلیڈروں کےبیان ایک طرح ہیں۔ سرجیکل اسٹرائیک، آرٹیکل 370 اورشہریت ترمیمی بل پرپاکستان اورکانگریس کےلیڈروں کے بیانات ایک جیسے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں عیسائیوں کے ساتھ بہت برا سلوک ہورہا ہے، وہاں ان کواچھوت طبقہ مانا جاتا ہے۔ انہوں نےکہا کہ پاکستان، افغانستان اوربنگلہ دیش کے اقلیتوں میں سکھ اورہندولڑکیوں کا اغوا کرکے زبردستی مذہب تبدیل کرایا گیا۔ یہاں 428 ہندوعبادت گاہوں میں سے صرف 20 باقی بچے ہیں۔



شہریت ترمیمی بل کوئز میں حصہ لیں ۔


لوک سبھا میں شہریت ترمیمی بل ( سی اے بی ) پیر کو منظور ہوگیا ۔ اس کوئز میں حصہ لے کر اس متنازع بل کے بارے میں اپنی معلومات کا اندازہ لگائیں ۔




شہریت ترمیمی بل کے تحت تبت کے پناہ گزینوں کوملے گی شہریت ؟






 کیا، احمدیہ پناہ گزینوں جوپاکستان میں مذہبی ظلم و ستم کا شکارہوکربھاگ کرآئے انہیں شہریت ترمیمی بل کے تحت شہریت ملے گی؟







کیا، بنگلہ دیش ہندومہاجرجو 2015 میں غیرقانونی طورپرہندوستان میں داخل ہوا ہے اسے شہریت ترمیمی بل کے تحت شہریت مل جائیگی؟





بنگلہ دیش کے ایک بدھسٹ مہاجرجن کا نام آسام کے نیشنل رجسٹرآف سیٹیزنس سے نکال دیاگیاہے اور اس کے خلاف فارین ٹرابیونل میں کیس زیرالتواء ہے تو کیا اسے شہریت ترمیمی بل کے تحت شہریت مل جائیگی؟




میگھالیہ آئین کے چھٹویں شیڈول کے تحت آتاہے اور یہ شہریت ترمیمی بل کے حدود سے باہر ہے تو کیا شیلانگ کے پولیس بازار میں رہنے والے ہندوبنگلہ دیش مہاجر،شہریت ترمیمی بل کے تحت شہریت کےلیے درخواست داخل کرسکتاہے؟





کیا تریپورہ میں قیام پذیر بنگالی ہندو مہاجرین کو شہریت ترمیمی بل کے تحت شہریت مل سکتی ہے ؟





ہندوستان منتقل ہونے والے ہندو، سکھ، بدھیسٹ، جین، پارسی اور عیسائی مہاجرین جوپاکستان، افغانستان، بنگلہ دیش میں مذہبی ظلم وستم شکار ہوئے ہیں، انہیں شہریت ترمیمی بل کے تحت خود بخود شہریت مل جائیگی ؟




کوئی بھی ہندو مہاجر شہریت ترمیمی بل کے تحت شہریت کا دعویٰ کرسکتاہے؟






بنگلہ دیش کے چکما، ہاجنگ کے پناہ گزین جو اروناچل پریش میں قیام پذیز ہیں اور انہیں اب تک شہریت نہیں ملی ہے تو کیا انہیں شہریت ترمیم بل کے تحت شہریت مل جائیگی؟






کیا سری لنگا سے آنے والے ہندو تامل مہاجرین شہریت ترمیم بل کے تحت ہندوستانی شہریت حاصل کرسکتے ہیں؟





آسامی میں بات کرنے والے ہندو، جو جوہرہاٹ سے تعلق رکھتے ہیں اور انہیں مناسب دستاویزات کی عدم موجودگی کے سبب نیشنل رجسٹرآف سیٹزنس میں شامل نہیں کیاگیاہے؟ کیا وہ شہریت ترمیمی بل کے شہریت کے لیے درخواست داخل کرسکتے ہیں؟








 

 

 

 

 

 


وزیرداخلہ امت شاہ نے کہا کہ لاکھوں کروڑوں لوگ جہنم کے عذاب میں زندگی گزاررہے تھے۔ کیونکہ ووٹ بینک کے لالچ کے اندرآنکھیں اندھی ہوئی تھیں، کان بہرے ہوئے تھے، ان کی چیخیں نہیں سنائی پڑتی تھیں۔ نریندرمودی جی صرف اورصرف متاثرین کو انصاف دلانے کے لئے یہ بل لےکرآئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس حکومتوں نے اب تک ان کو شہریت دینے کی پیشکش نہیں کی تھی، یہ بل منظورہونے کے بعد اعدادوشمارآپ بھی دیکھیں گے۔ اورہم بھی دیکھیں گے۔

امت شاہ نے کہا کہ استحصال کے شکارمسلمانوں کوشہریت فراہم کرنے کے لئے موجودہ قوانین میں التزام ہے۔ 566 مسلمانوں کوہندوستانی شہریت دی گئی ہے۔  انہوں نے یہ بھی کہا کہ آرٹیکل 370 ہٹائے جانے کے بعد بھی کشمیرمیں امن ہے۔ وزیرداخلہ امت شاہ نے کہا کہ نہ ہی شہریت ترمیمی بل مسلم مخالف ہے اورنہ ہی طلاق ثلاثہ بل مسلمانوں کے خلاف ہے۔

اس سے قبل راجیہ سبھا میں بحث کے دوران کانگریس، ترنمول کانگریس، سماجوادی پارٹی، بی ایس پی، این سی پی سمیت کئی اپوزیشن جماعتوں نے اس بل کی مخالفت کی ہے۔ کانگریس پارٹی کے رکن پارلیمنٹ آنند شرما نےسخت تنقید کرتے ہوئے اسے ملک کے خلاف قراردیا۔    بحث میں شرکت کرتے ہوئے ٹی ایم سی لیڈر ڈریک او براین نے کہا کہ شہریت ترمیمی بل واقعی ملک کو تقسیم کرنے والا ہے ۔ جناح کی قبرپرسنہرے حروف میں شہریت ترمیمی بل لکھا جائےگا ۔ اوبراین نےکہا کہ یہ بل غیر آئینی ہے، اس کے خلاف جن آندولن ہوگا ۔ اس بل کی بنیاد جھوٹ، فریب اوردھوکہ پرہے۔ سماج وادی پارٹی کےراجیہ سبھا رکن جاوید علی خان نےکہا کہ ہماری حکومت اس شہریت ترمیمی بل اوراین آر سی کے ذریعہ جناح کےخواب کو پورا کرنے کی کوشش کررہی ہے ۔ یاد کیجئے، 1949 میں سردار پٹیل نےکہا تھا کہ ہم ہندوستان میں حقیقت میں سیکولرجمہوریت کی بنیاد رکھ رہے ہیں۔
First published: Dec 11, 2019 07:57 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading