உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    راجیہ وردھن راٹھور کا رہل اور پرینکا پر نشانہ ، کہا : آپ لوگ کورونا سے جنگ میں شامل نہیں

    راجیہ وردھن راٹھور کا رہل اور پرینکا پر نشانہ ، کہا : آپ لوگ کورونا سے جنگ میں شامل نہیں (Pic- ANI)

    راجیہ وردھن راٹھور کا رہل اور پرینکا پر نشانہ ، کہا : آپ لوگ کورونا سے جنگ میں شامل نہیں (Pic- ANI)

    بی جے پی لیڈر راجیہ وردھن سنگھ راٹھور نے نشانہ سادھتے ہوئے کہا کہ راہل گاندھی اور پرینکا گاندھی سے اپیل ہے کہ وہ ایسے وقت میں ایسے تبصرے نہ کریں۔

    • Share this:
      نئی دہلی : ملک میں کورونا وائرس سے مسلسل حالات خراب ہورہے ہیں ۔ دن بہ دن ریکارڈ تعداد میں نئے کورونا معاملات سامنے آرہے ہیں ۔ اس درمیان کانگریس کی جانب سے کورونا سے لڑنے کیلئے مرکزی حکومت کی حکمت عملیوں پر مسلسل سوالات اٹھائے جارہے ہیں ۔ کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی اور جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی سرکار پر نشانہ سادھ رہے ہیں ۔ ایسے میں اب بی جے پی لیڈر راجیہ وردھن راٹھور نے راہل گاندھی اور پرینکا گاندھی کے تبصرہ پر اپنا رد عمل ظاہر کیا ہے ۔

      انہوں نے نشانہ سادھتے ہوئے کہا کہ راہل گاندھی اور پرینکا گاندھی سے درخواست ہے کہ ایسے وقت میں ایسے تبصرے نہ کریں ۔ آپ پرائیویٹ کمپنیوں کو قصوروار ٹھہرا رہے ہیں ، وہ اس لڑائی میں شامل ہیں ۔ ملک کا ہر شہری اس لڑائی میں شامل ہے سوائے راہل گاندھی ، پرینکا گاندھی ، ان کا کنبہ اور ان کی وجہ سے کانگریس ۔



      بی جے پی لیڈر راجیہ وردھن راٹھور نے کہا کہ آج راجستھان میں آکسیجن ، بیڈ اوردوا کم ہے ، شراب کی فروخت کھلے عام ہورہی ہے ، لیکن بازار بند ہیں ۔ کیا یہ راجستھان سرکار کی تیاری ہے ۔

      بتادیں کہ کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے بدھ کو الزام لگایا کہ مرکزی حکومت کی ٹیکہ کاری سے متعلق حکمت نوٹ بندی سے کم نہیں ہے کیونکہ اس میں بھی لوگ قطاروں میں لگیں گے اور دھن ، صحت اور جان کا نقصان برداشت کریں گے ۔ انہوں نے ٹویٹ کیا کہ مرکزی حکومت کی ٹیکہ سے متعلق پالیسی نوٹ بندی سے کم نہیں ۔ عام عوام قطاروں میں لگیں گے ، مال ، صحت اور جان کا نقصان برداشت کریں گے اور آخر میں صرف کچھ صنعت کاروں کو فائدہ ہوگا ۔

      مرکزی حکومت نے پیر کو کہا کہ یکم مئی سے 18 سال سے زیادہ عمر کے سبھی لوگ کورونا کی روم تھام کیلئے ٹیکہ لگوا سکیں گے ۔ سرکار نے ٹیکہ کاری مہم میں رعایت دیتے ہوئے ریاستوں ، پرائیویٹ اسپتالوں اور صنعتی اداروں کو براہ راست ٹیکہ بنانے والوں سے ڈوز خریدنے کی اجازت بھی دیدی ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: