ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

رکشا بندھن: دہلی اور ممبئی والوں کو آج ہو سکتی ہے یہ 'مصیبت

ممبئی میں پیر کو جہاں 36 ہزار بیسٹ ملازم ہڑتال پر ہیں تو وہیں دہلی میں ٹریفک کو لے کر لوگوں کو صبح سے ہی کئی علاقوں میں بھاری جام کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
رکشا بندھن: دہلی اور ممبئی والوں کو آج ہو سکتی ہے یہ 'مصیبت
ممبئی میں پیر کو جہاں 36 ہزار بیسٹ ملازم ہڑتال پر ہیں تو وہیں دہلی میں ٹریفک کو لے کر لوگوں کو صبح سے ہی کئی علاقوں میں بھاری جام کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

نئی دہلی۔ دہلی اور ممبئی میں رہنے والوں کے لئے آج رکشا بندھن کے دن بھاری مصیبت ہو سکتی ہے۔ اس کی وجہ ہے پبلک ٹرانسپورٹ کو لے کر ہونے والی بھاری دقت۔ ممبئی میں پیر کو جہاں 36 ہزار بیسٹ ملازم ہڑتال پر ہیں تو وہیں دہلی میں ٹریفک کو لے کر لوگوں کو صبح سے ہی کئی علاقوں میں بھاری جام کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔


ممبئی کی سڑکوں پر آج نہیں دوڑیں گی بیسٹ بسیں


اتوار آدھی رات سے ہی ممبئی میں بیسٹ کے 36 ہزار ملازم غیر معینہ ہڑتال پر چلے گئے۔ اس کی وجہ سے اب ملک کی اقتصادی دارالحکومت کی سڑکوں سے بیسٹ کی بسیں غائب ہو گئی ہیں۔ اس کی وجہ سے لوگوں کو بھاری مصیبت کا سامنا کرنا پڑے گا کیونکہ ممبئی کے لئے لوکل ٹرین کے بعد بیسٹ بسیں دوسری سب سے بڑی پبلک ٹرانسپورٹ سہولت ہے۔


ممبئی میں روز 30 لاکھ سے زیادہ لوگ بیسٹ بسوں سے سفر کرتے ہیں۔ آج بسوں کی خدمات نہ ہونے سے لوگوں کو دوسری ٹرانسپورٹ سہولت جیسے آٹو اور ٹیکسی کا سہارا لینا ہوگا۔

بیسٹ کی ہڑتال میں 11 مزدور یونین شامل ہیں۔ ملازمین کے اچانک ہڑتال پر جانے سے لوکل ٹرینوں کے ساتھ ساتھ آٹو اور ٹیکسی پر دباؤ پڑے گا۔ ان ملازمین کے دو اہم مطالبات ہیں۔ پہلی بیسٹ کو بی ایم سی مکمل طور پر انڈرٹیک کر لے اور دوسری 3 ماہ سے بقایا سیلری ملازمین کو دی جائے۔
First published: Aug 07, 2017 09:18 AM IST