ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

عمران خان دہشت گرد تنظیم جیش محمد کی زبان بول رہے ہیں: کانگریس

رندیپ سرجے والا نے عمران خان کوتلخ زبان بولنے سے پہلے تاریخ کو یاد کرنے کا مشورہ دیتے ہوئے کہا کہ بھولئے مت کی آنجہانی اندرا گاندھی اورہندوستانی فوج نے 1971میں پاکستان کے دوٹکڑے کرکے بنگلہ دیش کو آزادی دلائی تھی۔

  • UNI
  • Last Updated: Feb 19, 2019 08:55 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
عمران خان دہشت گرد تنظیم جیش محمد کی زبان بول رہے ہیں: کانگریس
کانگریس لیڈر رندیپ سنگھ سرجیوالا: فائل فوٹو

نئی دہلی:کانگریس نے پاکستان کے وزیراعظم عمران خان کے بیان پر سخت اعتراض ظاہر کرتے ہوئے منگل کو کہا کہ پاکستان کے وزیراعظم عمران خان جیش محمد کی زبان بول رہے ہیں اور ان کا یہ رویہ شرمناک اورافسوسناک ہے۔ کانگریس کے محکمہ مواصلات کے سربراہ رندیپ سنگھ سرجے والا نے ٹوئٹ کرکے کہا کہ افسوسناک اورشرمناک، پاکستان کے وزیراعظم عمران خان آج بھی جیش کی زبان بول رہے ہیں۔


رندیپ سرجے والا نے عمران خان کوتلخ زبان بولنے سے پہلے تاریخ کو یاد کرنے کا مشورہ دیتے ہوئے کہا کہ بھولئے مت کی آنجہانی اندرا گاندھی اورہندوستانی فوج نے 1971میں پاکستان کے دوٹکڑے کرکے بنگلہ دیش کو آزادی دلائی تھی اورپاکستان کے 91000 فوجیوں نے ڈھاکہ میں ہندوستانی فوج کے سامنے خودسپردگی کردی تھی۔


اس کے ساتھ ہی انہوں نے وہ خبر بھی پوسٹ کی ہے جس میں عمران خان نے کہا ہے کہ ہندوستانی حکومت سوچتی ہے کہ وہ پاکستان پرحملہ کریں گے اور پاکستان اس کا جواب دینے کی نہیں سوچے گا، سخت جواب دیں گے۔




واضح رہے کہ پاکستان کے وزیراعظم عمران خان نے جموں وکشمیر کے پلوامہ میں سی آر پی ایف کے قافلے پر دہشت گردانہ حملے کو لے کراپنی خاموشی توڑ تے ہوئے تمام الزامات کوخارج کرتے ہوئے کہا کہ ہم پربغیرکسی ثبوت کے الزام لگائے گئے ہیں۔ عمران نےکہا کہ حکومت ہند ہمیں ثبوت دے کہ پلوامہ حملے میں پاکستان کا ہاتھ ہے۔ میں خود اس پرایکشن لوں گا۔ انہوں نےکہا کہ جب بھی ہندستان سے ہم بات چیت کی بات کرتے ہیں، ہندستان کہتا ہے کہ پہلے دہشت گردی ختم کرو۔
First published: Feb 19, 2019 08:55 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading