ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

ڈیجیٹل انڈیا کو قابل استطاعت بنانے کو اہمیت دی جائے گی: پرساد

نئی دہلی:حکومت کے ڈیجیٹل انڈیا پروگران میں اس بات کا خاص طور سے خیال رکھا جائے گا کہ انٹرنیٹ کی سہولیات سستی ہوں اور یہ مقصد ڈھائی لاکھ گرام پنچایتوں کو آپٹیکل فائبر کیبل (او ایف سی) کے توسط سے مربوط کرکے حاصل کیا جائے گا۔ مواصلات اور اطلاعاتی ٹکنالوجی کے وزیر روی شنکر پرساد نے یہ بات کہی۔

  • UNI
  • Last Updated: Oct 04, 2015 01:12 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
ڈیجیٹل انڈیا کو قابل استطاعت بنانے کو اہمیت دی جائے گی: پرساد
نئی دہلی:حکومت کے ڈیجیٹل انڈیا پروگران میں اس بات کا خاص طور سے خیال رکھا جائے گا کہ انٹرنیٹ کی سہولیات سستی ہوں اور یہ مقصد ڈھائی لاکھ گرام پنچایتوں کو آپٹیکل فائبر کیبل (او ایف سی) کے توسط سے مربوط کرکے حاصل کیا جائے گا۔ مواصلات اور اطلاعاتی ٹکنالوجی کے وزیر روی شنکر پرساد نے یہ بات کہی۔

نئی دہلی:حکومت کے ڈیجیٹل انڈیا پروگران میں اس بات کا خاص طور سے خیال رکھا جائے گا کہ انٹرنیٹ کی سہولیات سستی ہوں اور یہ مقصد ڈھائی لاکھ گرام پنچایتوں کو آپٹیکل فائبر کیبل (او ایف سی) کے توسط سے مربوط کرکے حاصل کیا جائے گا۔ مواصلات اور اطلاعاتی ٹکنالوجی کے وزیر روی شنکر پرساد نے یہ بات کہی۔


یو این آئی کے پبلیکیشن ڈیولپنگ انڈیا مرر کے ساتھ ایک انٹرویو میں مسٹر پرساد نے کہا کہ ’’شہریوں کو خدمات کی فراہمی کے لئے تیز رفتار انٹرنیٹ کی دستیابی ڈیجیٹل انڈیا کا ایک اہم عنصر ہے۔ ملک کی ڈھائی لاکھ گرام پنچایتوں میں لگائے جانے والے او ایف سی سے 100 ایم بی پی ایس کی رفتار ملے گے اور اسے تمام فریق انفارمیشن ہائی وےکے طور پر استعمال کریں گے۔


مسٹر پرساد نے زور دیکر کہا کہ ڈیجیٹل انڈیا کے تعلق سے بیشتر اقدامات کا نفاذ آئندہ تین سال کے اندر ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ موبائل کنکٹیویٹی تک سبھی کی رسائی پروگرام کا ایک اہم ستون ہے۔ ’’معلومات اور مختلف خدمات کے حصول کے لئے موبائل ناگزیر متبادل بن گیا ہے۔ طویل مدتی اعتبار سے تمام سرکاری خدمات موبائل کے توسط سے دستیاب ہونگی‘‘۔


ابھی تک تقریباً 80 ہزار 700 کلومیٹر طویل پائپ بچھائے جاچکے ہے اور اس میں تقریباً 54 ہزار 300 کلومیٹر اور ایف سی ڈالنے کا کام مکمل ہوگیا ہے۔ وزیر موصوف نے کہا کہ جب این ڈی اے حکومت نے مئی 2014 میں اقتدار سنبھالا تھا تو صرف دو ہزار کلومیٹر پائپ بچھائے گئے تھے اور محض 250 کلومیٹر او ایف سی ڈالنے کا کام ہوا تھا۔


این او ایف سی بھارت نیٹ کے تحت کیرالہ، چنڈی گڑھ اور پڈوچیری کے تمام علاقوں کا احاطہ کرلیا گیا ہے جبکہ کرناٹک کے تین اضلاع کا کام بھی مکمل ہوگیا ہے۔

First published: Oct 04, 2015 01:12 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading