ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

چوطرفہ تنقید سے بیک فٹ پر آئی مرکزی حکومت کی وضاحت ، ریزرویشن پر نہیں ہو گی نظر ثانی، آر ایس ایس نے بھی صفائی پیش کی

نئی دہلی : ریزرویشن کا از سر نو جائزہ لینے کے آر ایس ایس کے سربراہ موہن بھاگوت کے بیان کے بعد بیک فٹ پر آئی مرکزی حکومت نے اپنا رخ واضح کر دیا ہے ۔

  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
چوطرفہ تنقید سے بیک فٹ پر آئی مرکزی حکومت کی وضاحت ، ریزرویشن پر نہیں ہو گی نظر ثانی، آر ایس ایس نے بھی صفائی پیش کی
نئی دہلی : ریزرویشن کا از سر نو جائزہ لینے کے آر ایس ایس کے سربراہ موہن بھاگوت کے بیان کے بعد بیک فٹ پر آئی مرکزی حکومت نے اپنا رخ واضح کر دیا ہے ۔

نئی دہلی : ریزرویشن کا از سر نو جائزہ لینے کے آر ایس ایس کے سربراہ موہن بھاگوت کے بیان کے بعد بیک فٹ پر آئی مرکزی حکومت نے اپنا رخ واضح کر دیا ہے ۔ مرکزی حکومت نے کہا کہ وہ ہمیشہ سے ریزرویشن کی حمایت کرتی رہی ہے۔ بی جے پی کی ایک پریس کانفرنس میں مرکزی وزیر روی شنکر پرساد نے کہا کہ ہم نے ریزرویشن کا احترام کیا ہے اور ہم ہمیشہ سے ریزرویشن کی حمایت کرتے رہے ہیں۔


روی شنکر پرساد نے کہا کہ ہم ریزرویشن میں یقین رکھتے ہیں ، کیونکہ ریزرویشن پسماندہ لوگوں کی ترقی کے لئے ضروری ہے۔ ہم ریزرویشن پر، ریزرویشن کی پالیسی پر کوئی نظر ثانی نہیں کر رہے ہیں اور ریزرویشن پر نظر ثانی کی ضرورت بھی نہیں ہے۔


آر ایس ایس سربراہ بھاگوت کے بیان پر روی شنکر پرساد نے کہا کہ ہمارا ایسا خیال ہے کہ جیسا ہم سوچتے ہیں ویسا ہی آر ایس ایس بھی سوچتی ہے۔ ریزرویشن پر آر ایس ایس کی رائے بھی ایسی ہی ہے۔


روی شنکر پرساد کے بیان کے فورا بعد آر ایس ایس نے بھی اپنے سربراہ موہن بھاگوت کے بیان پر صفائی پیش کی۔ آر ایس ایس کے لیڈر رام مادھو نے کہا کہ آر ایس ایس یہ صاف کہنا چاہتی ہے کہ موہن بھاگوت نے موجودہ ریزرویشن نظام پر کوئی سوال نہیں اٹھایا ہے۔ سنگھ کے سربراہ کا مطلب موجودہ ریزرویشن پالیسی سے نہیں تھا۔


غور طلب ہے کہ دین دیال اپادھیائے کی سالگرہ پر دیے گئے ایک انٹرویو میں موہن بھاگوت نے کہا کہ ریزرویشن پر نظر ثانی کی ضرورت ہے۔ موہن بھاگوت کے مطابق آئین کے مطابق پسماندہ طبقات کو ریزرویشن دیا جا رہا ہے ، لیکن اس پر پھر سے غور کرنے کی ضرورت ہے۔

First published: Sep 21, 2015 07:58 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading