உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    راجن کے فیصلے سے صنعتی دنیا میں مایوسی ، گورنر کی ان خوبیوں کے ہیں تمام مرید

    نئی دہلی :آر بی آئی گورنر رگھو رام راجن کے دوسری مدت کار سے انکار سے جہاں صنعتی دنیا حیران ہے وہیں اس میں مایوسی بھی ہے۔

    نئی دہلی :آر بی آئی گورنر رگھو رام راجن کے دوسری مدت کار سے انکار سے جہاں صنعتی دنیا حیران ہے وہیں اس میں مایوسی بھی ہے۔

    نئی دہلی :آر بی آئی گورنر رگھو رام راجن کے دوسری مدت کار سے انکار سے جہاں صنعتی دنیا حیران ہے وہیں اس میں مایوسی بھی ہے۔

    • Pradesh18
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی :آر بی آئی گورنر رگھو رام راجن کے دوسری مدت کار سے انکار سے جہاں صنعتی دنیا حیران ہے وہیں اس میں مایوسی بھی ہے۔ ملک کے ٹاپ صنعت کاروں نے کہا کہ راجن کا ریزرو بینک گورنر کے طور پر دوسری مدت کار قبول نہ کرنے کے فیصلے سے ملک کا نقصان ہوگا، کیونکہ انہوں نے اس عہدے پر رہتے ہوئے اقتصادی استحکام کیلئے اچھا کام کیا اور عالمی اسٹیج پر ہندوستان کی ساکھ میں اضافہ کیا ۔
      آنند مہندرا، دیپک پاریکھ، این آر نارائن مورتی، کرن مجمدار اور موہن داس کی قیادت میں ہندوستانی انڈسٹری نے امید ظاہر کی ہے کہ راجن کے جانشین بھی ان کی طرف سے شروع کیے گئے اچھا کاموں کو جاری رکھیں گے۔ مہندرا اینڈ مہندرا کے چیئرمین آنند مہندرا نے کہا کہ وہ موجودہ مدت کار کے بعد درس و تدریس کے میدان میں واپس لوٹنے کے راجن کا فیصلہ سن کر دکھی ہیں۔
      ایچ ڈی ایف سی کے چیئرمین دیپک پاریکھ نے کہا کہ ان کا جانا دکھ کی بات ہے۔ مجھے حیرت ہے کہ گورنر نے کن وجوہات سے یہ فیصلہ کیا۔ تاہم مجھے امید ہے کہ حکومت صحیح وقت پر مزید دو سال کی مدت کیلئے ان کو توسیع دینے پر غور کرے گی ، جیسا کہ زیادہ تر گورنر کو ملا ہے۔ مورتی نے کہا کہ وہ اس فیصلہ سے ناخوش ہیں۔ ساتھ ہی کہا کہ راجن کے ساتھ نسبتا مزید باوقار رویہ اختیار کیا جانا چاہئے۔
      بايوكان کی چیئرپرسن اینڈ منیجنگ ڈائریکٹر کرن مجمدار نے ٹویٹ کرکے کہا کہ آر بی آئی گورنر رگھو رام راجن دوسری مدت کار کا مطالبہ نہیں کررہے ہیں ۔ تعلیمی شعبے کے لئے یہ فائدہ کی بات ہے ، لیکن آر بی آئی کے لئے نقصاندہ ہے ۔ وہ اپنے پیچھے اقتصادی استحکام کی وراثت چھوڑ کر جا رہے ہیں۔
      گودریج گروپ کے سربراہ آدی گودریج ، جنہوں نے سب سے پہلے راجن کیلئے دوسری مدت کار کی حمایت کی تھی، انہوں نے تبصرہ کرنے سے انکار کردیا ۔ موہن داس نے ٹویٹ کرکے کہا ہے کہ یہ ہمارے لئے انتہائی دکھ کا دن ہے۔ مخالفین اور ساٹھ گانٹھ والے لوگوں نے عظیم صلاحیت کے حامل شخص کو باہر کر دیا، میں انتہائی فکر مند ہوں۔
      آر پی جی انٹرپرائز کے چیئرمین ہرش گوینكا نے اپنے ٹویٹ میں کہا کہ وہ عالمی سطح کے ہیں۔ افراط زر کے خلاف مورچہ کھول دیا۔ رگھو رام راجن کا جانا ملک کے لئے نقصاندہ ہے۔ وزارت خزانہ کے سابق مشیر کوشک باسو نے اپنے ٹویٹ میں کہا کہ '' رگھو رام دنیا بھر میں کہیں کے بھی مقابلہ سب سے اچھے مرکزی بینک گورنر رہے ہیں۔
      First published: