ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

جنسی تعلقات: بیوی کی جنسی زندگی سے خوش نہیں ہے شوہر تو کیا کریں، ایسے بنائیں زندگی کو خوشگوار

میں ایک شادی شدہ خاتون اور ایک بچے کی ماں ہوں۔ حالانکہ میری شادی پیار سے ہوئی ہے مگر شادی سے پہلے میں نے کبھی بھی جسمانی تعلقات نہیں بنائے، یہاں تک کہ میں نے کبھی مشت زنی کی کوشش بھی نہیں کی۔ ہماری جنسی زندگی سے شوہر خوش نہیں ہیں کیونکہ مجھے شوہر کا ساتھ دے پانا مشکل لگتا ہے۔

  • Share this:
جنسی تعلقات: بیوی کی جنسی زندگی سے خوش نہیں ہے شوہر تو کیا کریں، ایسے بنائیں زندگی کو خوشگوار
جنسی تعلقات: بیوی کی جنسی زندگی سے خوش نہیں ہے شوہر تو کیا کریں، یہ ہے خاص مشورہ

سوال: پلوی، میں ایک شادی شدہ خاتون اور ایک بچے کی ماں ہوں۔ حالانکہ میری شادی پیار سے ہوئی ہے مگر شادی سے پہلے میں نے کبھی بھی جسمانی تعلقات نہیں بنائے، یہاں تک کہ میں نے کبھی مشت زنی کی کوشش بھی نہیں کی۔ ہماری جنسی زندگی سے شوہر خوش نہیں ہیں کیونکہ مجھے شوہر کا ساتھ دے پانا مشکل لگتا ہے۔ مجھے ان کے ساتھ ہی جوش ہوتا ہے مگر بہت جلد مجھے اندام نہانی میں سوکھاپن محسوس ہوتا ہے۔ وہ کافی طویل عرصے تک جنسی عمل کو جاری رکھتے ہیں اور میں تھک جاتی ہوں اور انہیں اسے روکنے کو کہتی ہوں۔ ان باتوں سے میری شادی شدہ زندگی پر کافی فرق پڑ رہا ہے اور ہمارے درمیان دوریاں بڑھتی جا رہی ہیں۔ ان کے کچھ تصورات بھی ہیں جن میں کیسے حصہ لینا ہے مجھے سمجھ میں نہیں آتا۔


جواب: ہر کسی کی اپنے طریقے سے سیکس سے متعلق دریافت ہوتی ہے اور یہ ضروری ہے کہ آپ اسے اس طریقے سے کریں جس میں آپ محفوظ اور آرام دہ محسوس کریں۔ میری پہلی صلاح یہ ہے کہ آپ کو اپنی سیکسوئل دریافت اور طریقے کو اپنے شوہر کے دباو میں آ کر بدلنا نہیں چاہئے یا کچھ ایسا نہیں کرنا چاہئے جسے آپ بالکل نہیں کرنا چاہتیں۔ ایک شادی شدہ جوڑے کے بیچ کے رشتے میں سیکس کے علاوہ اور بھی بہت ساری چیزیں ہوتی ہیں۔


سیکس کے بارے میں مردوں کے نقطہ نظر کو پورن اکثر بہت زیادہ بگاڑ دیتا ہے۔ بجائے پیار اور لطف کا مظاہرہ کرنے کے وہ اسے نقطہ عروج تک پہنچنے کا عمل ماننے لگتے ہیں۔ سیکس صرف عضو کا دخول اور زور لگانا نہیں ہے بلکہ اس سے کہیں زیادہ سیکس اور بھی کئی چیزوں کا تال میل ہے۔ اصل میں، بہت ساری خواتین عضو کے دخول کے ساتھ ہی نقطہ عروج حاصل کرنے یا پرجوش ہونے میں کامیاب نہیں ہوتیں۔ اپنے شوہر کو عضو کا دخول سب سے بعد میں کرنے کے لئے کہیں۔ چومنے، سہلانے اور شہوت انگیز جگہوں کو چھو کر دونوں اپنے آپ کو پرجوش کرنے میں مدد کریں۔ ایک دوسرے کے جسموں کو جاننے سمجھنے کی کوشش کریں۔ اورل سیکس کے ذریعہ انہیں کہیں کہ وہ آپ کے بظر یا انتہائی حساس عضو اور پستان کو جوش دلانے کی کوشش کریں۔ اصل میں، ایسی صورت حال کا پتہ لگائیں جن میں عضو کے داخل کرنے کے دوران آپ کی اندام نہانی میں جوش بڑھ جائے۔ یہ کرنے سے آپ دونوں کو سیکس زیادہ لطف اندوز اور مطمئن کرنے والا ہو گا۔


دوسری طرف، آپ کو اپنی شہوانیت کی بھی کھوج کرنی ہو گی۔ نہ صرف اپنے شوہر کے لئے بلکہ خود کے لئے بھی۔ جنسی طور پر خود اعتماد ہونے پر آپ اپنی جنسی زندگی کی ڈور اپنے ہاتھوں میں لے سکتی ہیں۔ یاد رکھئے، سیکس صرف آپ کے شوہر کے لئے نہیں ہے، یہ آپ کی اپنی خوشی کے لئے بھی ہے۔

سیکس سے منسلک خوداعتمادی بڑھنے کے لئے یہ سمجھنا ضروری ہے کہ سیکسی ہونا یا سیکوئلٹی بالکل بھی سیکس کے بارے میں نہیں ہے۔ یہ آپ کی سیکسوئلٹی کے بارے میں ہے یعنی یہ سیکھنا کہ آپ اپنے جسمانی سکون کو کتنا بڑھا سکتی ہیں۔ یہ زندہ ہونے کا سب سے بڑا ثبوت ہے۔

بغیر کپڑوں کے اپنے آپ کو شیشے میں دیکھئے، اپنے مالش کریں۔ اپنے کمرے کو موم بتیوں سے بھر دیجئے، نہانے کے بعد اپنے جسم پر اپنا پسندیدہ عطر لگائیں۔ صرف کنبے کا پیٹ بھرنے کے لئے کھانا مت پکائیے بلکہ ہر ذائقہ کو جگانے کے لئے پکائیے، الگ الگ مسالوں کو سونگھئے۔ یہی وہ راستے ہیں جن سے آپ کو اپنے جسم اور اس کے احساسات سے جوڑنے میں مدد کریں گے۔ یہ آپ کو اپنے جسم کو لے کر اور بھی زیادہ خود اعتمادی دے گی اور جسمانی سکون پانے کا بھروسہ بھی۔

سیکس کے بارے میں زیادہ سے زیادہ پڑھئے۔ میں آپ کو کام سوتر پڑھنے کے لئے خصوصی طور پر کہوں گا۔ بوسہ لینے اور اورل سیکس کی مختلف تکنیکوں کے بارے میں پڑھئے کہ کیسے نقطہ عروج کو زیادہ وقت تک ٹال کر زیادہ لطف لیا جا سکتا ہے، خود کو اور اپنے پارٹنر کو اور بھی زیادہ مطمئن کیا جا سکتا ہے۔ اپنی اسی کھوج میں اپنے شوہر کو بھی شامل کریں۔ ایک دوسرے کے ساتھ بغیر کپڑوں کے بیٹھیں اور عضو داخل کرنے کی نیت کے بغیر یہ پتہ کرنے کی کوشش کریں کہ سب سے زیادہ کیا چیز آپ کو پرجوش کرتی ہے۔

جب بھی سیکس کے عمل میں شامل ہوں، اپنے شوہر کو اپنی خواہشات کے بارے میں ضرور بتائیں۔ اس سے پہلے کہ آپ تھک جائیں، انہیں روک دیجئے اور سرگرمیاں بدل لیں۔ اسے دونوں کے لئے خوشنما بنانے کی کوشش کریں۔

اگر آپ کو بھی لگتا ہے کہ اندام نہانی خشک ہے اور ضروری مقدار میں گیلاپن نہیں ہے تو آپ مدد کے لئے کسی تیل پر مبنی لوبریکینٹس کا استعمال کر سکتے ہیں۔ یہ بہت عام ہے اور ایسا کچھ بھی نہیں ہے جس کی آپ کو فکر کرنے کی ضرورت ہے۔ یہ ضرور دیکھ لیجئے کہ اگر آپ کنڈوم استعمال کر رہے ہیں تو آپ کا لوبریکینٹ کنڈوم کو کوئی نقصان نہیں پہنچائے۔

 

 
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Nov 23, 2020 07:13 PM IST