ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

شرپسند عناصر کے ذریعے توڑپھوڑ سے بھڑکی ریلائنس، کھٹکھٹایا کورٹ کا دروازہ، کہا زرعی قانون سے کوئی لینا دینا نہیں

زرعی قانون کی مخالفت میں گزشتہ کچھ دن سے پنجاب میں جیو کے موبائل ٹاوروں کو نشانہ بنا یا جا رہا تھا۔ اب ریلائنس انڈسٹریز لمیٹیڈ نے اپنی سبسیڈیئری کمپنی ریلائنس جیو انفو کام لمیٹیڈ کے ذریعے پنجاب اور ہریانہ ہائی کورٹ میں شرپسند عناصر پر پر سرکاری حکام کے ذریعہ فوری مداخلت کی درخواست دائر کی ہے۔

  • Share this:
شرپسند عناصر کے ذریعے توڑپھوڑ سے بھڑکی ریلائنس، کھٹکھٹایا کورٹ کا دروازہ، کہا زرعی قانون سے کوئی لینا دینا نہیں
ریلائنس انڈسٹریز لمٹیڈ

شرپسندوں کے ذریعہ توڑ پھوڑ پرروک لگانے کے لیے ریلائنس انڈسٹریز لمٹیڈ نے اپنی ذیلی ریلائنس جیو انفوکام کے ذریعہ پنجاب۔ہریانہ ہائی کورٹ سے رجوع کیا ہے۔کمپنی نے اپنی عرضی میں پنجاب اور ہریانہ میں ملازمین کی زندگیوں کو خطرہ لاحق ہونے اور اہم ترسیلی ڈھانچے کے تباہ ہونے کے سبب خدمات میں رخنہ پڑنے کا ذکرکیا ہے۔ کمپنی نے اپنے حریفوں پر شرپسندوں کو اکسانے کا الزام عائد کیا ہے۔ داخل کی گئی عرضی میں ریلائنس نے کچھ نکات واضح کیے ہیں۔ اس نے صاف کہا ہے کہ کمپنی کی طرف سےکوئی زرعی زمین نہیں خریدی گئی ہے اور نہ ہی وہ آگے زراعت کے لیے کو ئی زمین خریدے گی۔ کانٹریکٹ فارمنگ یا کارپوریٹ فارمنگ سے اس کا کوئی لینادینا نہیں ہے اورکمپنی کسانوں سے راست طورپراناج نہیں خریدتی ہے۔

توڑپھوڑ کے غیرقانونی معاملوں پر ایمرجنسی روک لگانے کا مطالبہ

زرعی قانون کی مخالفت میں گزشتہ کچھ دن سے پنجاب میں جیو کے موبائل ٹاوروں کو نشانہ بنا یا جا رہا تھا۔ اب ریلائنس انڈسٹریز لمیٹیڈ نے اپنی سبسیڈیئری کمپنی ریلائنس جیو انفو کام لمیٹیڈ کے ذریعے پنجاب اور ہریانہ ہائی کورٹ میں شرپسند عناصر پر پر سرکاری حکام کے ذریعہ فوری مداخلت کی درخواست دائر کی ہے۔ اس سے پہلے کمپنی نے پنجاب کے وزیر اعلی کیپٹن امریند سنگھ اور پنجاب کے ڈی جی ہی دنکر گپتا کو خط لکھ کر اس معاملے میں مداخلت کا مطالبہ کیا تھا۔

کارپوریٹ فارمنگ (corporate farming) اور کانٹریکٹ فارمنگ دی وضاحت

پنجاب میں ریلائنس جیو (Reliance Jio) کے خلاف کسانوں کے مخالف مظاہرے کو دیکھتے ہوئے ریلائنس Reliance نے کسانوں کے سامنے اپنی بات رکھی ہے۔ ریلائنس نے کہا ہے کہ ہمارا کارپوریٹ فارمنگ (corporate farming)  یا کانٹریکٹ فارمنگ  (contract farming) سے کوئی لینا دینا نہیں ہے۔ ریلائنس نے کہا، کارپوریٹ یا کانٹریکٹ میں ہمارے داخل ہونے کا کائی منصوبہ نہیں ہے۔ کمپنی نے ایک بیان جاری کرکے یہ بھی کہا ہے کہ ہم نے کبھی بھی کارپوریٹ فارمنگ (corporate farming)  کیلئے کھیتی کی زمین نہیں خریدی ہے۔ کمپنی نے یہاں تک بھی کہا ہے کہ وہ کھیتی کی زمین نہیں خریدے گی۔

زرعی قانون سے ریلائنس کا نہیں ہے کوئی لینا۔دینا
ریلائنس نے پیر کو ایک بیان جاری کرکے صاف کیا ہے کہ وہ کسانوں سے ڈائریکٹ اناج نہیں خریدتی ہے۔ سپلائرس کسانوں سے ایم ایس پی MSP پر اناج خریدتے ہیں۔ کمپنی نے کہا کہ اس نے کبھی بھی کم قیمت پر لانگ ٹرم پروکیورمینٹ کانٹریکٹ (خریداری کا قرار) نہیں کیا ہے۔ کمپنی نے کہا کہ ان کا مقصد کسانوں کو طاقتور بنانا ہے۔
ریلائنس نے توڑپھوڑ کے خلاف ہنجاب اور ہریانہ کے ہائی کورٹ میں رٹ پٹیشن ڈالی ہے۔ ریلائنس نے پنجاب اور ہریانہ ہائی کورٹ سے درخواست کی ہے کہ ہمارے ملازمین اور پراپرٹی کو نقصان سے بچایا جائے۔ کمپنی نے یہ بھی کہا ہے کہ اس توڑپھوڑ کے پیچھے کاروباری حریف (business competitors) کا ہاتھ بتایا ہے۔

(ڈسکلیمر: نیوز 18 اردو ڈاٹ کام ریلائنس انڈسٹریز کی کمپنی نیٹ ورک 18 میڈیا اینڈ انویسٹمنٹ لمیٹڈ کا حصہ ہے۔ نیٹ ورک 18 میڈیا اینڈ انویسٹمنٹ لمیٹڈ ریلائنس انڈسٹریز کی ملکیت ہے۔)
Published by: Sana Naeem
First published: Jan 04, 2021 12:22 PM IST