உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مسلمانوں کا فروعی اور مسلکی اختلافات سے اجتناب وقت کی اشد ضرورت: مولانا اصغر علی سلفی

    مولانا اصغرعلی امام مہدی سلفی نے اپنے صدارتی کلمات میں کہا کہ موجودہ صورت حال کے پیش نظر مسلمانوں کو قدم قدم پر سوچ سمجھ کر چلنا ، لکھنا اور پڑھنا چاہئے۔

    مولانا اصغرعلی امام مہدی سلفی نے اپنے صدارتی کلمات میں کہا کہ موجودہ صورت حال کے پیش نظر مسلمانوں کو قدم قدم پر سوچ سمجھ کر چلنا ، لکھنا اور پڑھنا چاہئے۔

    مولانا اصغرعلی امام مہدی سلفی نے اپنے صدارتی کلمات میں کہا کہ موجودہ صورت حال کے پیش نظر مسلمانوں کو قدم قدم پر سوچ سمجھ کر چلنا ، لکھنا اور پڑھنا چاہئے۔

    • Pradesh18
    • Last Updated :
    • Share this:

      نئی دہلی۔ ’’ مذہب اسلام پوری دنیا ئے انسانیت کے لیے رحمت ہے۔ کتاب اللہ اور احادیث رسول کے مطابق زندگی گذارنا ہمارا واحد مقصد ہے۔ قرآن اور حدیث کی رو گردانی ہماری انتشار و نااتفاقی کی اصل وجہ ہے۔ آج مسلم سماج کے اندر اختلاف و انتشار کی وجہ صرف اور صرف یہ ہے کہ آج ہم نے قرآن کریم اور احادیث صحیحہ سے منہ موڑ لیا ہے۔ جبکہ اللہ تعالیٰ کا وعدہ ہے کہ جب تک تم کتاب وسنت پر عمل پیرا رہوگے تمہیں کوئی گمراہ نہیں کرسکتا ہے۔ کتاب وسنت پر عمل پیرا ہوکر ہم اتحاد و اتفاق کی رسی کو مضبوطی سے تھام سکتے ہیں‘‘ ۔ ان خیالات کا اظہار مولانا عبدالستار سلفی قائم مقام امیر صوبائی جمعیت اہل حدیث دہلی نے میڈیا کے نام جاری ایک بیان میں کیا۔ موصوف گذشتہ ۲۳؍اکتوبر ۲۰۱۶ء کی شب کھجوری کے ایک عظیم الشان صوبائی جمعیت اہل حدیث دہلی کے اجلاس عام میں خطاب فرمارہے تھے۔ مولانا نے صوبائی جمعیت اہل حدیث دہلی کا تعارف پیش کرتے ہوئے صوبہ دہلی کی دینی ، ملی، علمی اور رفاہی سرگرمیوں کا مختصرا ذکر کیا۔


      ان کے بعد اجلاس کو خطاب کرتے ہوئے مولانا محمد ہارون سنابلی ناظم صوبائی جمعیت اہل حدیث مغربی یوپی و ناظم شعبہ تنظیم مرکزی جمعیت اہلحدیث ہند نے معاشرہ میں پیدا شدہ بیماریوں کے حوالے سے اچھی صحبت اور بری صحبت کے عنوان پر خطاب کیا جبکہ مولانا محمد جرجیس سراجی قائم مقام امیر صوبائی جمعیت اہلحدیث مغربی یوپی نے سیرتِ رسول صلی اللہ علیہ وسلم پر مفصل اور مدلل مسلسل دو گھنٹے تقریر کی۔ مولانا اصغرعلی امام مہدی سلفی ناظم عمومی مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند نے اپنے صدارتی کلمات میں اتحاد قوم و ملت وقت کی اہم ضرورت کے عنوان پر پُر مغز خطاب میں کہا کہ موجودہ صورت حال کے پیش نظر مسلمانوں کو قدم قدم پر سوچ سمجھ کر چلنا ، لکھنا اور پڑھنا چاہئے۔ مسلکی اور فروعی مسائل کو الجھا کر آپس میں نا اتفاقی اور انارکی کو ہوا نہیں دینا چاہئے بلکہ اتحاد واتفاق کا مظاہر ہ کرتے ہوئے اپنی انسانیت دوستی اور امن پسندی کا ثبوت دینا چاہئے۔


      ناظم عمومی نے اپنے صدارتی کلمات میں ملک و بیرون ملک میں ہونے والی ہر قسم کی دہشت گردانہ کارروائیوں کی پر زور الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے داعش سمیت دہشت گردی کی ساری قسموں سے ملک و ملت کے ساتھ مل کر لڑائی لڑنے کے عزم کا اظہار کیا ۔ صدر موصوف نے اس عظیم الشان اجلاس کو مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کی دہشت گردی مخالف دیرینہ سر گرمیوں کا شاخسانہ قرار دیتے ہوئے بتایا کہ دہشت گردی سے متعلق ہندوستان میں مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند نے سب سے پہلے سمپوزیم اور کانفرنسیں منعقد کیں اور فتاوے شائع کئے ، چنانچہ اس اجلاس میں بھی دہشت گردی مخالف کتاب کی تیسری ایڈیشن کی رونمائی بھی ہوئی۔


      First published: