உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    6  دسمبر کو JNU میں مبینہ طور سے ہوئی نعرے بازی،  ملک سے غداری کا کیس درج کرنے کی مانگ

    ذرائع کے مطابق پیر کی رات لیفٹ پارٹی سے وابستہ طلبا تنظیموں نے جے این یو کے اندر مبینہ طور پر نعرے بازی کی۔ ان طلباء نے ایودھیا کیس میں سپریم کورٹ کے فیصلے کے خلاف بھی نعرے لگائے۔ دہلی بی جے پی لیڈر کپل مشرا نے طلباء کے نعرے کی سخت تنقید کی ہے۔

    ذرائع کے مطابق پیر کی رات لیفٹ پارٹی سے وابستہ طلبا تنظیموں نے جے این یو کے اندر مبینہ طور پر نعرے بازی کی۔ ان طلباء نے ایودھیا کیس میں سپریم کورٹ کے فیصلے کے خلاف بھی نعرے لگائے۔ دہلی بی جے پی لیڈر کپل مشرا نے طلباء کے نعرے کی سخت تنقید کی ہے۔

    ذرائع کے مطابق پیر کی رات لیفٹ پارٹی سے وابستہ طلبا تنظیموں نے جے این یو کے اندر مبینہ طور پر نعرے بازی کی۔ ان طلباء نے ایودھیا کیس میں سپریم کورٹ کے فیصلے کے خلاف بھی نعرے لگائے۔ دہلی بی جے پی لیڈر کپل مشرا نے طلباء کے نعرے کی سخت تنقید کی ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی. مسلسل تنازعات میں رہنے والی جواہر لال نہرو سینٹرل یونیورسٹی (JNU) ایک بار پھر سرخیوں میں ہے۔ گزشتہ دنوں سیکورٹی فورسز کی فائرنگ سے ناگالینڈ فائرنگ Nagaland Firing Incident) کے واقعہ میں 13 شہریوں کی موت کے خلاف احتجاج میں یونیورسٹی کیمپس (JNU Campus) میں نعرے لگائے گئے۔ رپورٹ کے مطابق ایودھیا (Ayodhya) میں بابری مسجد کے انہدام کی برسی پر طلباء نے نعرے بھی لگائے۔

      ذرائع کے مطابق پیر کی رات لیفٹ پارٹی سے وابستہ طلبا تنظیموں نے جے این یو کے اندر مبینہ طور پر نعرے بازی کی۔ ان طلباء نے ایودھیا کیس میں سپریم کورٹ کے فیصلے کے خلاف بھی نعرے لگائے۔ دہلی بی جے پی لیڈر کپل مشرا نے طلباء کے نعرے کی سخت تنقید کی ہے۔ انہوں نے کہا، 'جے این یو میں اس طرح کی باتیں کرنے والوں کی سوز زہریلی ہے اور کوئی غلطی سے بھی بابری مسجد کی تعمیر کا خواب نہیں دیکھے۔ ملک میں 47000 مندر گرائے جا چکے ہیں۔ ابھی صرف ایک مندر کا گناہ اترا ہے۔

      دوسری جانب آل انڈیا ہندو مہاسبھا کے قومی صدر سوامی چکرپانی مہاراج نے بھی اس معاملے پر اپنا ردعمل دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جے این یو میں بابری مسجد کے حق میں نعرے لگانے والے گروہ نے سپریم کورٹ اور آئین کی توہین کی ہے، ان کے خلاف غداری کا مقدمہ درج کیا جانا چاہئے۔
      مرکزی وزیر کوشل کشور نے بھی اس سلسلے میں اپنا ردعمل دیا ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ جو لوگ اس طرح کی باتیں کر رہے ہیں وہ جان بوجھ کر ہائی لائٹ ہونا چاہتے ہیں۔ اگر دیکھا جائے تو وہ سستی مقبولیت کی وجہ سے ایسا کر رہے ہیں۔ ورنہ اس کا کوئی مطلب نہیں۔ وہ جو کچھ کر رہے ہیں، اس کا ردعمل ہوتا ہے۔ اس کی وجہ سے رام مندر کے حق میں زیادہ سے زیادہ لوگوں کا اتفاق رائے بنتا چلا جا رہا ہے۔

      قومی، بین الاقوامی اور جموں وکشمیر کی تازہ ترین خبروں کےعلاوہ تعلیم و روزگار اور بزنس کی خبروں کے لیے نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو کریں ۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: