ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

یوم جمہوریہ 2018 : راج پتھ پریڈ میں نظر آئی فوجی طاقت اور ہندوستانی ثقافت کی شاندار جھلک

ملک بھر میں 69 واں یوم جمہوریہ پورے جوش خروش کے ساتھ منایا جارہا ہے ۔ نئی دہلی کے رج پتھ پر یوم جمہوریہ کا پریڈ اب سے کچھ دیر میں ہی شروع ہونے والا ہے ۔

  • UNI
  • Last Updated: Jan 26, 2018 02:12 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
یوم جمہوریہ 2018 : راج پتھ پریڈ میں نظر آئی فوجی طاقت اور ہندوستانی ثقافت کی شاندار جھلک
ملک بھر میں 69 واں یوم جمہوریہ پورے جوش خروش کے ساتھ منایا جارہا ہے ۔ نئی دہلی کے رج پتھ پر یوم جمہوریہ کا پریڈ اب سے کچھ دیر میں ہی شروع ہونے والا ہے ۔

نئی دہلی: ملک کی بڑھتی فوجی طاقت، ثقافتی ورثے اور کثرت میں وحدت کی رنگا رنگی کے منظر کے ساتھ یوم جمہوریہ کی پریڈ میں دس آسیان ممالک کی تہذیب و ثقافت کی جھلک دکھائی دی۔ اس بار یوم جمہوریہ کی تقریب کی بڑی خصوصیت یہ تھی کہ پہلی بار مہمان خصوصی کے طور پر دس ممالک کے صدور یا حکومت کے سربراہان موجود تھے۔ یہ سبھی سلامی کے اسٹیج پر صدر جمہوریہ رام ناتھ کووند کے ساتھ بیٹھے تھے۔ عام طور پر یوم جمہوریہ کی تقریب میں ایک ہی ملک کو مہمان خصوصی کے طورپر مدعو کیا جاتا ہے۔

حفاظت کے چا ق و چوبند انتظامات کے دوران منعقدہ اس بڑی تقریب کی توجہ کا مرکز سرحدی محافظ دستہ کے 113 جانباز کمانڈوں کے موٹر سائیکل پر کھڑے ہوکر حیرت انگیز کرتب رہے۔ اس کے علاوہ ہندوستان کے اسکولی بچوں کے ذریعہ آسیان ممالک کے لباس میں ملبوس وہاں کے رقص، ملک میں ہی تیار کئے جارہے طیارہ بردار آئی این ایس وکرانت اور اس پر تعینات مارکوس کمانڈو، پہلی بار تقریب میں شامل ہوئے ۔رودر لڑاکو ہیلی کاپٹر نیز لڑاکو طیاروں کی کرتبازی بھی توجہ کا مرکز رہی۔

صبح وزیراعظم نریندر مودی نے تینوں افواج کے سربراہوں کی موجودگی میں انڈیا گیٹ پر واقع امر جوان جیوتی پر گلہائے عقیدت نذر کرکے قوم کی جانب سے شہیدوں کو خراج عقیدت پیش کیا۔ اس کے بعد وزیراعظم اور ان کی کابینہ کے ارکان نیز تینوں افواج کے سربراہان ، صدر اور تینوں فوج کے سپریم کمانڈر رام ناتھ کووند کا استقبال کیا۔ صدر جمہوریہ کو سلامی اسٹیج پر 21 توپوں کی سلامی دی گئی۔ اس کے بعد صبح دس بجے وجئے چوک سے خوبصورت پریڈ شروع ہوئی جو تقریباً ڈیڑھ گھنٹے بعد لال قلعے پر ختم ہوئی۔

پریڈ کے آغاز میں فوج کے پانچ ایم آئی۔17 ہیلی کاپٹر نے فلائی فاسٹ کیا اور گلاب کی پنکھڑیاں برسائیں۔ ان پر قومی پرچم، تینوں فوجوں کے پرچم نیز آسیان کا پرچم لہرارہا تھا۔ اس کے بعد پریڈ کے کمانڈر اور دلی خطے کے جنرل آفیسر کمانڈنگ لیفٹننٹ جنرل است مستری اور چیف آف اسٹاف میجر جنرل راج پال پونیا کی سلامی کے ساتھ پریڈ کا باضابطہ طور پر آغاز ہوا ۔ ان کے پیچھے کھلی جیپ میں دو پرم ویر چکر اور تین اشوک چکر حاصل کرنے والے کھلی جیپ میں راج پتھ سے نکلے۔ اس کے بعد ہندوستانی فضائیہ کے جوان آسیان کے پرچم کے ساتھ سبھی دس آسیان ممالک برونئی، کمبوڈیا، انڈونیشیا، لاؤس، ملیشیا، میانمار، ملیشیا، فلپائنس، سنگاپور، تھائی لینڈ اور ویتنام کے پرچم لیکر راج پتھ سے گزرے۔


republic day prade (4)
اس کے بعد ملک کی فوجی طاقت کی علامت تین ٹی۔90 ٹینک، دو برہموس اور دو آکاش میزائل اور بھیشم ٹینک ملک کے عوام کو سرحدوں کی حفاظت کے تئیں یقین دلاتے ہوئے نظر آئے۔ فضائیہ کے لڑاکا ہیلی کاپٹر رودر پہلی بار راج پتھ پر گزرتے ہوئے نظر آئے۔ پریڈ میں فوج کی نمائندگی 61 کیل وری کے گھڑسواروں، سات میکانائزڈ کالم، 6 مارچنگ دستے اور مارچنگ بینڈ نے کی۔ اس میں پنجاب رجمنٹ، مراٹھا انفینٹری، ڈوگرا رجمنٹ، رجمنٹ آف آرٹیلری اور لداخ اسکاؤٹس شامل تھے۔
فضائیہ کی جھانکی میں ملک کی خود انحصاری کی جانب بڑھتی فضائیہ کی تصویر پیش کی گئی جس میں ملک میں ہی تیار لڑاکا طیارہ تیجس، رودر ہیلی کاپٹر، رودر رڈار اور آکاش میزائل کی نمائش کی گئی تھی۔ یہ پہلا موقع ہے جب رودر ہیلی کاپٹر کو یوم جمہوریہ کی پریڈ میں شامل کیا گیا ہے۔ سابق فوجیوں کی جھانکی میں فوج اور ملک کے لئے باعث فخر رہے مارشل آف دی ایئر فورس، ارجن سنگھ کو بھی دکھایا تھا۔ ساتھ ہی ملک کی خواتین طاقت کی جھلک پیش کرتے ہوئے فضائیہ کی تین افسران کو بھی جھانکی میں جگہ دی گئی۔ فضائیہ کے مارچنگ دستے اور بینڈ نے بھی راج پتھ پر سب کو محظوظ کیا۔ یوم جمہوریہ پریڈ میں اس بار فضائیہ کے 38 جنگی طیارے ، ہیلی کاپٹر نیز مال بردار طیاروں نے گرج کے ساتھ راج پتھ پر طاقت کا مظاہرہ کیا۔

republic day prade (2)
بحریہ کی جھانکی میں میک ان انڈیا پر زور دیتے ہوئے ملک میں ہی تیار کئے جانے والے پہلے طیارہ بردار آئی این ایس وکرانت کی جھلک نظر آئی جس پر جدید ہتھیاروں کے ساتھ ساتھ ملک کے سمندری محافظ مارکوس کمانڈوز بھی تعینات تھے۔ ساتھ ہی بحریہ میں خواتین کی طاقت کی علامت بن کر ابھرنے والی جہاز راں ٹیم بھی علامتی طور پرنظر آئی۔ اس مہم کے تحت بحریہ کی چھ جانباز افسران ملک میں ہی تیار کی گئی شپ آئی این ایس تارینی میں سمندر کے راستے دنیا کا چکر لگانے کی مہم پر نکلی ہوئی ہیں۔ ملک کی ڈیفنس ریسرچ اینڈ ڈیولپمنٹ آرگنائزیشن (ڈی آر ڈی او) کی جھانکی میں نربھے میزائل نظام اور اشونی رڈار نظام کی طاقت کا نمونہ بھی پریڈ میں دیکھنے کو ملا۔

republic day prade (3)
طویل عرصے بعدنیم فوجی دستے آئی ٹی بی پی نے بھی اس بار راج پتھ پر دستک دی۔ ویسے پریڈ کی توجہ کا مرکز سرحدی محافظ دستے کی 113 جانباز خواتین کمانڈو ٹیم بھی رہی جس کے حیرت انگیز کرتبوں کو دیکھ کر ناظرین نے دانتوں تلے انگلی دبالی۔ اس سے قبل یہ کرتبازی ڈیول کے نام سے مشہور مرد کمانڈو کرتے تھے لیکن اس بار ان خواتین کمانڈوں نے 350 سی سی کی 26 رائل انفیلڈ موٹر سائیکلوں پر سوار ہوکر خواتین کی طاقت اور اپنی ہمت و بہادری کا ثبوت دیا۔ انہوں نے ایروبوٹک اور قلابازی کا بھی حیرت انگیز نمونہ پیش کیا۔
دلی پولیس کے مارچنگ دستے اور بینڈ نے بھی راج پتھ پر اپنی مہارت کا مظاہرہ کیا۔ سرحدی محافظ دستے کے اونٹوں پر سوار دستہ بھی توجہ کر مرکز رہا۔ قومی کیڈٹ کور کے کیڈٹوں کے دستے راج پت پر ڈسپلن کی مثال پیش کرتے ہوئے قدم سے قدم ملاتے نظر آئے۔ آل انڈیا ریڈیو، وزارت خارجہ کی جانب سے بنائی گئی آسیان کی جھانکی، کرناٹک، مدھیہ پردیش، تریپورہ، اتراکھنڈ، جموں کشمیر، مہاراشٹر، لکشدیپ، چھتیس گڑھ، کیرالا، آسام، پنجاب، ہماچل پردیش، منی پور اور گجرات کی جھانکیوں نے راج پتھ پر ملک کی ثقافتی ورثے کا منظر پیش کیا۔ اس کے ساتھ ہی آئی ٹی بی پی، قبائلی امور، نوجوان اور کھیل کود کے امور ، آئی سی اے آر، محکمہ انکم ٹیکس نیز مرکزی تعمیرات عامہ کے محکمہ کی جھانکی بھی پریڈ میں شامل تھی۔
جھانکیوں کے بعد قومی بہادری انعامات سے سرفراز بہادر بچے کھلی جیپ میں ناظرین کو الوداع کہتے ہوئے راج پتھ سے گزرے۔ رنگ برنگ کے لباس میں ملبوس پانچ اسکولوں کے طالبات نے اپنے رنگا رنگ لوک رقص پیش کرکے راج پتھ پر دھوم مچادی۔ ان بچوں نے سلامی اسٹیج کے نزدیک آسیان ممالک کے لیڈروں کے سامنے ان کے ممالک کے روایتی لباس میں، وہاں کے رقص اور آرٹ پر مبنی پروگرام پیش کیا۔ ان کے رن برنگی لباس سے ایسا معلوم ہورہا تھا جیسے پورا راج پتھ مختلف رنگوں کے پھولوں سے بھرگیا ہو۔

republic day prade (1)
مسلح افواج کے بینڈوں نے شیوا ور موہے، ہم ہیں سیما سرکشا بل، جوش بھرا ہے سینے میں، سارے جہاں سے اچھا ہندوستاں ہمارا اور دلی پولیس کے گیت کی دھن بجائی۔ نیشنل کیڈٹ کور کے بینڈوں نے قدم قدم بڑھائے جا، سارے جہاں سے اچھا کی دھن بجائی، وہیں نیشنل سروس اسکیم کے بینڈ نے’ کیسریا بنا ‘کی دھن سے لوگوں کو مسحور کردیا۔
پریڈ کے اختتام سے قبل فضائیہ کے جنگی طیاروں نے حیرت انگیز کرتبوں سے سب کو حیرت زدہ کردیا۔ سب سے بڑامال بردار طیارہ سی۔17 بھی دو سخوئی طیاروں کے ساتھ اپنی طاقت اور صلاحیت کا مظاہرہ کرتا نظر آیا۔ ملک میں ہی تیار جنگی جہاز تیجس کے ساتھ ساتھ جگوار اور مگ جنگی طیاروں نے اپنی مہارت اور کرتبازی سے سب کے دل جیت لئے۔ آخر میں ہر بار کی طرح سخوئی۔ 30 طیاروں نے فضا کو چیرتے ہوئے ورٹیکل چارلی کرتب کا نمونہ پیش کرکے ناظرین کو حیرت زدہ کردیا۔
پریڈ کے اختتام پر امن کی علامت مختلف رنگوں کے غبارے فضا میں چھوڑے گئے جس سے راج پتھ کا آسمان بھر گیا۔ پریڈ کے لئے راجدھانی میں حفاظت کے سخت انتظام کئے گئے تھے اور زمین سے فضا تک ہر سرگرمی پر نگاہ رکھی جارہی تھی۔ اس کے لئے 50 ہزار سے زائد حفاظتی دستوں کو تعینات کیا گیا تھا۔ پڑوسی ریاست سے آنے والی گاڑیوں پر بھی نظر رکھی جارہی تھی اور پریڈ کے آس پاس کی عمارتوں کی چھتوں پر شارپ شوٹر تعینات کئے گئے تھے۔
First published: Jan 26, 2018 08:28 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading