ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

’’سیاسی آقاؤں کو خوش کرنے کے لئے بیان بازی نہ کریں وزیر، عملی خدمات کے لئے اتریں میدان میں‘‘

مولانا نے یہ بھی کہا کہ ایسے رہنما نہ خدا کے ہیں نہ مخلوقِ خدا کے۔ صرف کرسیوں کے پجاری اور دولت و منصب کے بھکاری ہیں۔

  • Share this:
’’سیاسی آقاؤں کو خوش کرنے کے لئے بیان بازی نہ کریں وزیر، عملی خدمات کے لئے اتریں میدان میں‘‘
مولانا نے یہ بھی کہا کہ اگر بڑے بڑے ادارے، بورڈ اور مدارس چلانے والے لوگ اس ماحول میں غریبوں کی امداد کے لئے آگے آجائیں تو کوئی شخص بھوکا نہیں رہے گا۔

لکھنئو۔ امامیہ ایجوکیشنل ٹرسٹ کے جنرل سکرٹری اور شیعہ پرسنل لاء بورڈ (قدیم )کے بانی مولانا علی حسین قمّی نے اتر پردیش کے سیاستدانوں بالخصوس اقلیتی طبقے کے وزیروں اور سماجی کارکنوں سے اپیل کی ہے کہ صرف زبانی جمع خرچ اور بیان بازیوں سے اپنے سیاسی آقاؤں کو خوش نہ کریں بلکہ خوشنودیءِ خدا اور رضاء اہل بیت کے لئے سماجی فلاح کے باب میں عملی اقدامات بھی کریں۔ علی حسین قمی کہتے ہیں کہ بی جے پی سے تعلق رکھنے والے مسلم وزیر مندروں میں جاکر پوجا کرنے سے لیکر پرساد کی تقسیم  اور تصویروں کے سامنے ہاتھ جوڑ کر کھڑے ہونے میں تو یقین رکھتے ہیں لیکن انہیں اپنے قریب رہنے والے بھوکے، پریشان اور مجبور لوگ نظر نہیں آتے۔


مولانا نے یہ بھی کہا کہ ایسے رہنما نہ خدا کے ہیں نہ مخلوقِ خدا کے۔ صرف کرسیوں کے پجاری اور دولت و منصب کے بھکاری ہیں۔ واضح رہے کہ ٹرسٹ کی جانب سے کی جا رہیں سماجی و فلاحی خدمات کے باب میں مولانا نے یہ بھی کہا کہ اگر بڑے بڑے ادارے، بورڈ اور مدارس  چلانے والے لوگ اس ماحول میں غریبوں کی امداد کے لئے آگے آجائیں تو کوئی شخص بھوکا نہیں رہے گا۔ مولانا کے مطابق حکومت کے ذریعے  غریبوں کے لئے کئے جارہے اقدامات کافی نہیں۔ ایک بڑا طبقہ فراہم کی جانے والی مراعات و سہولیات سے محروم ہے۔ لہٰذا وبا کے اس عالم میں سماج کے بے سہارا اور غریب لوگوں کے لئے عملی طور پر کام کریں۔


مولانا نے حکومت اور پولس انتظامیہ سے اپیل کی ہے کہ رمضان کے مبارک و مقدس ماہ میں مسلم سماج کے لوگوں کو ناجائز طور پر نہ پریشان کیا جائے۔


مولانا نے حکومت اور پولس انتظامیہ سے اپیل کی ہے کہ رمضان کے مبارک و مقدس ماہ میں مسلم سماج کے لوگوں کو ناجائز طور پر نہ پریشان کیا جائے۔ ساتھ ہی مولانا نے مسلمانوں سے اپیل کی ہے کہ وہ گھروں میں رہ کر عبادت کریں اور شر پسند اور متعصب عناصر کو کوئی موقع نہ فراہم کریں۔یہ ملک اور ملک کے عوام کے حق میں بہتر ہے۔
First published: Apr 24, 2020 05:47 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading