ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

ہم جنس پرستی جرم تو نہیں مگرغیر فطری عمل، ہم اس طرح کے تعلقات کو فروغ نہیں دیتے: آرایس ایس

آر ایس ایس نے کہا ہے کہ ہم جنس پرستی جرم نہیں هونے کے باوجود غیرفطری عمل ہے اورسنگھ ایسے تعلقات کو فروغ نہیں دیتا ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Sep 06, 2018 08:41 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
ہم جنس پرستی جرم تو نہیں مگرغیر فطری عمل، ہم اس طرح کے تعلقات کو فروغ نہیں دیتے: آرایس ایس
آرایس ایس کارکنان ٹریننگ کے دوران: فائل فوٹو

نئی دہلی: راشٹریہ سویم سیوک سنگھ (آر ایس ایس) نے کہا ہے کہ ہم جنس پرستی جرم نہیں هونے کے باوجود غیر فطری عمل ہے اور سنگھ ایسے تعلقات کو فروغ نہیں دیتا ہے۔

ہم جنس پرستی پر سپریم کورٹ کے فیصلے کے بارے میں پوچھے جانے پرآر ایس ایس کے آل انڈيا پرچارک ارون کماراسے غیر فطری عمل بتایا۔


انہوں نے صحافیوں کو بتایا کہ "سپریم کورٹ کی طرح ہم بھی ایسے تعلقات کو جرم نہیں سمجھتے ہیں۔ تاہم ہم جنس پرستی اوران کے تعلقات فطری نہیں ہیں اورنہ ہی ہم اس قسم کے تعلقات کو فروغ دیتے ہیں"۔  


واضح رہے کہ سپریم کورٹ نے آج ہی دو بالغوں کے درمیان باہمی رضامندی سے ہم جنس پرستی کے تعلقات کو جرم کے زمرے سے باہر کر دیا ہے۔ چیف جسٹس دیپک مشرا کی صدارت والی پانچ رکنی آئینی بنچ نے ایک متفقہ فیصلے میں تعزيرات ہند کی دفعہ 377 کو چیلنج کرنے والی درخواستوں کو قبل کرتے ہوئے ہم جنسی پرستی کو جرم کے زمرے سے باہر کردیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  سپریم کورٹ کا فیصلہ: باہمی رضامندی سے ہم جنس پرستی جرم نہیں

 
First published: Sep 06, 2018 08:37 PM IST