ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

جیل جانے سے پہلے ملک چھوڑنے کی فراق میں تھے سہارا گروپ کے سربراہ سبرت رائے

نئی دہلی۔ سپریم کورٹ کی طرف سے جیل بھیجے جانے سے چند ہفتے پہلے سہارا گروپ کے سربراہ سبرت رائے بل کلنٹن اور ٹونی بلیئر کے ساتھ کاروباری بات چیت کے لئے بیرون ملک جانا چاہتے تھے۔

  • IBN Khabar
  • Last Updated: Apr 11, 2016 11:26 AM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
جیل جانے سے پہلے ملک چھوڑنے کی فراق میں تھے سہارا گروپ کے سربراہ سبرت رائے
نئی دہلی۔ سپریم کورٹ کی طرف سے جیل بھیجے جانے سے چند ہفتے پہلے سہارا گروپ کے سربراہ سبرت رائے بل کلنٹن اور ٹونی بلیئر کے ساتھ کاروباری بات چیت کے لئے بیرون ملک جانا چاہتے تھے۔

نئی دہلی۔ سپریم کورٹ کی طرف سے جیل بھیجے جانے سے چند ہفتے پہلے سہارا گروپ کے سربراہ سبرت رائے بل کلنٹن اور ٹونی بلیئر کے ساتھ کاروباری بات چیت کے لئے بیرون ملک جانا چاہتے تھے۔ مارکیٹ ریگولیٹری سیبی کے وکیل اروند داتار نے اس ہائی پروفائل کیس میں یہ انکشاف کیا ہے۔


سیبی اور سہارا کے درمیان طویل عرصے سے چل رہی قانونی لڑائی کو دلچسپ معاملہ قرار دیتے ہوئے داتار نے یہ بھی کہا کہ جیسا کہ یہ لائن چلتی ہے کہ 'تصویر ابھی باقی ہے'، ہمیں نہیں معلوم کہ یہ ہمیں کب اور کہاں لے جائے گا۔ رائے کو 4 مارچ، 2014 کو قومی دارالحکومت کی تہاڑ جیل میں بھیجا گیا تھا اور اس کے بعد سے وہ جیل میں ہیں۔


جمعہ کی شام کو 'سہارا بنام سیبی' معاملے پر ایک لیکچر میں مشہور وکیل داتار نے کہا کہ سپریم کورٹ نے ممبئی کی ایک پراپرٹی سے منسلک ایک کیس کی سماعت کے دوران رائے کو ملک نہیں چھوڑنے کو کہا تھا۔ انہوں نے کہا کہ جب سپریم کورٹ نے انہیں پیش ہونے کو کہا، رائے نے ایک درخواست دائر کر کہا کہ وہ ہندستان چھوڑنا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ کاروباری بات چیت کے لئے بل کلنٹن اور ٹونی بلیئر سے ملنے کے لئے ہندستان چھوڑنا چاہتے ہیں۔ یہ بات دستاویز میں ہے۔ داتار نے کہا کہ بعد میں عدالت نے رائے کو پیش ہونے کے لئے کہا اور اس کے بعد رائے نے ایک حلف نامہ دائر کر کہا کہ ان کی ماں کی طبیعت بہت خراب ہے کہ وہ لکھنؤ نہیں چھوڑ سکتے۔

First published: Apr 11, 2016 11:25 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading