Choose Municipal Ward
    CLICK HERE FOR DETAILED RESULTS
    ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

    سپریم کورٹ نے سبرت رائے کے پیرول کی منسوخی پر 30ستمبر تک روک لگائی

    سپریم کورٹ نے جمعہ کو سہارا گروپ کے چیئرمین سبرت رائے کی پیرول کی مدت بڑھانے سے انکار کر دیا۔ اب سبرت رائے، ان کے بہنوئی اشوک رائے چودھری اور روی شنکر دوبے کو دوبارہ جیل جانا پڑے گا

    • Pradesh18
    • Last Updated: Sep 23, 2016 05:59 PM IST
    • Share this:
    • author image
      NEWS18-Urdu
    سپریم کورٹ نے سبرت رائے کے پیرول کی منسوخی پر 30ستمبر تک روک لگائی
    سہارا گروپ کے سربراہ سبرتو رائے: فائل فوٹو۔

    نئی دہلی : سہارا گروپ کی جانب سے املاک کی غلط اطلاعات دینے سے ناراض ہوکر سپریم کورٹ نے گروپ کے سربراہ سبرت رائے کی پیرول کی مدت بڑھانے سے آج انکار کر دیا۔ ساتھ ہی ساتھ عدالت عظمی نے گروپ کے دو دیگر ڈائریکٹرز کی بھی پیرول رد کر دی۔ تاہم عدالت عظمی نے سبرت رائے کے پیرول کی منسوخی پر 30 ستمبر تک روک لگادی ۔

    شیئر بازار کی نگرانی کرنے والے سیکورٹیز اینڈ ایکسچینج بورڈ (سیبی) نے عدالت کو بتایا کہ سہارا گروپ کی جانب سے نیلامی کے لئے سونپی گئی زیادہ تر املاک کو انکم ٹیکس محکمہ قرق کر چکا ہے۔ سیبی نے دلیل دی کہ ایسی جائیدادوں کو فروخت نہیں کیا جا سکتا۔ اس اطلاع کے بعد عدالت نے کہا کہ آپ (سبرت رائے) تعاون نہیں کر رہے ہیں اس لئے بہتر ہے کہ آپ جیل ہی جائیں۔

    خیال رہے کہ سہارا سربراہ کو 5 مئی کو ان کی ماں کی موت کے بعد چھ مئی کو پیرول ملی تھی۔ ان کے بہنوئی اشوک رائے کو بھی پیرول دی گئی تھی۔ تاہم بعد میں 11 مئی کو پیرول دو ماہ کے لئے بڑھا دی تھی، جس کے بعد اسے تین اگست تک اور پھر بدھ کو چھ ستمبر تک کے لئے بڑھا دی گئی۔300 کروڑ روپے جمع کرانے کی ہدایت دینے کے علاوہ، بینچ نے سہارا پر رئیل اسٹیٹ کی فہرست سیبی کو مہیا کرانے کے لئے کہا تھا۔

    قبل ازیں سبرت رائے، ان کے بہنوئی اشوک رائے چودھری اور روی شنکر دوبے کو ان کی دو کمپنیوں کی طرف سے عدالت کے 31 اگست 2012 کے حکم کی تعمیل نہ کرنے پر چار مارچ 2014 کو عدالتی حراست میں تہاڑ جیل بھیج دیا گیا تھا۔

    غور طلب ہے کہ سبرت رائے نے سہارا انڈیا ریئل اسٹیٹ کارپوریشن لمیٹڈ اور سہارا ہاؤسنگ سرمایہ کاری کارپوریشن لمیٹڈ کمپنی بنائی تھی۔الزامات کے مطابق اس کے ذریعے انہوں نے رئیل اسٹیٹ میں سرمایہ کاری کے نام پر 3 کروڑ سے زیادہ سرمایہ کاروں سے 17 ہزار 400 کروڑ روپے جمع کر لیا تھا۔

    First published: Sep 23, 2016 12:34 PM IST
    corona virus btn
    corona virus btn
    Loading