ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

سبرت رائے نے سپریم کورٹ سے کہا : اضافی 300 کروڑ روپے جمع کرنے کیلئے تیارہیں

سہارا گروپ کے چیئرمین سبرت رائے نے جمعہ کو سپریم کورٹ میں کہا کہ وہ اضافی 300 کروڑ روپے سیبی کے پاس جمع کرنے کیلئے تیار ہیں ، جسے بینک گارنٹی کے ساتھ ایڈجسٹ کر لیا جائے۔

  • Pradesh18
  • Last Updated: Aug 26, 2016 01:02 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
سبرت رائے نے سپریم کورٹ سے کہا : اضافی 300 کروڑ روپے جمع کرنے کیلئے تیارہیں
سہارا گروپ کے چیئرمین سبرت رائے نے جمعہ کو سپریم کورٹ میں کہا کہ وہ اضافی 300 کروڑ روپے سیبی کے پاس جمع کرنے کیلئے تیار ہیں ، جسے بینک گارنٹی کے ساتھ ایڈجسٹ کر لیا جائے۔

نئی دہلی : سہارا گروپ کے چیئرمین سبرت رائے نے جمعہ کو سپریم کورٹ میں کہا کہ وہ اضافی 300 کروڑ روپے سیبی کے پاس جمع کرنے کیلئے تیار ہیں ، جسے بینک گارنٹی کے ساتھ ایڈجسٹ کر لیا جائے۔اس سے پہلے 3 اگست کو سپریم کورٹ نے سہارا سربراہ سبرت رائے کے پیرول کی مدت 16 ستمبر تک کے لئے بڑھا دی تھی اور انہیں جیل سے باہر رہنے کے لئے مزید 300 کروڑ روپے جمع کرنے کے لئے کہا تھا۔

چیف جسٹس جسٹس ٹی ایس ٹھاکر، جسٹس انل آردوے اور جسٹس اے کے سیکری کی سپریم کورٹ کی بنچ نے 300 کروڑ روپے کی رقم جمع کرنے کے لئے رائے کو 15 ستمبر تک کا وقت دیا ہے۔ عدالت نے زبانی طور پر کہا کہ رقم جمع کرانے میں ناکام ہونے پر انہیں دوبارہ تہاڑ جیل بھیج دیا جائے گا۔

سہارا سربراہ کی جانب سے پیش وکیل کپل سبل نے سپریم کورٹ سے اپیل کی کہ وہ حکم میں اس بات کا ذکر نہ کریں کہ 300 کروڑ روپے جمع کرانے میں ناکام ہونے پر انہیں دوبارہ جیل بھیج دیا جائے گا۔ اس کے بعد چیف جسٹس جسٹس ٹھاکر نے کہا کہ یہ کہنے کی ضرورت نہیں ہے کہ اگر آپ 300 کروڑ روپے جمع نہیں کرا پاتے ہیں، تو آپ کو پھر جیل جانا پڑے گا۔

سہارا سربراہ کو پانچ مئی کو ان کی ماں کے انتقال کے بعد چھ مئی تک کی پیرول ملی تھی ۔ ان کے بہنوئی اشوک رائے کو بھی پیرول دیدی گئی تھی۔ 11 مئی کو پیرول دو ماہ کے لئے مزید بڑھا دی گئی تھی، جس کے بعد اسے تین اگست تک اور پھر بدھ کو چھ ستمبر تک کے لئے بڑھا دی گئی۔ 300 کروڑ روپے جمع کرانے کی ہدایت دینے کے علاوہ بینچ نے سہارا پر رئیل اسٹیٹ کی فہرست سیبی کو مہیا کرانے کے لئے بھی کہا تھا۔

First published: Aug 26, 2016 01:02 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading