ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

اترپردیش: قدآور رہنماوں میں شمار 9 بار کے رکن پارلیمنٹ قاضی رشید مسعود کا انتقال

قاضی رشید مسعود کو 27 اگست کو کورونا انفیکشن سے متاثر ہونے پر دہلی کے اپولو اسپتال میں بھرتی کرایا گیا تھا۔ وہاں سے تین دن پہلے ہی وہ سہارنپور میں اپنے گھر لوٹے تھے۔ اس کے بعد پھر سے طبیعت خراب ہونے پر انہیں روڑکی کے ایک اسپتال میں بھرتی کرایا گیا جہاں پر آج ان کا انتقال ہو گیا۔

  • Share this:
اترپردیش: قدآور رہنماوں میں شمار 9 بار کے رکن پارلیمنٹ قاضی رشید مسعود کا انتقال
قاضی رشید مسعود کا انتقال: فائل فوٹو

سہارنپور۔ قدآور سیاستداں اور 9 بار رکن پارلیمنٹ رہے سابق مرکزی وزیر قاضی رشید مسعود (Qazi Rasheed Masood) کا پیر کی صبح انتقال ہو گیا۔ 27 اگست کو کورونا انفیکشن سے متاثر ہونے پر انہیں دہلی کے اپولو اسپتال میں بھرتی کرایا گیا تھا۔ وہاں سے تین دن پہلے ہی وہ سہارنپور میں اپنے گھر لوٹے تھے۔ اس کے بعد پھر سے طبیعت خراب ہونے پر انہیں روڑکی کے ایک اسپتال میں بھرتی کرایا گیا جہاں پر آج ان کا انتقال ہو گیا۔


بتا دیں کہ آج شام تقریبا 5 بجے ان کی آبائی رہائش گاہ گنگوہ واقع قبرستان میں انہیں سپرد خاک کیا جائے گا۔ غور طلب ہے کہ قاضی رشید مسعود 1977 میں پہلی بار جنتا پارٹی کے ٹکٹ پر رکن پارلیمنٹ چنے گئے تھے۔ اس وقت انہوں نے سہارنپور لوک سبھا سیٹ سے ہی الیکشن لڑا تھا۔ قاضی رشید مسعود سہارنپور سے پانچ بار رکن پارلیمنٹ منتخب کئے گئے تھے۔ ان کا شمار مغربی اترپردیش کے قدآور رہنماوں میں ہوتا تھا۔ پانچ دہائیوں کے سیاسی سفر میں وہ وی پی سنگھ سے لے کر ملائم سنگھ یادو کے ہمسفر رہے۔ وہیں، 2012 میں وہ کانگریس میں بھی شامل ہوئے تھے۔


وی پی سنگھ سے ملائم سنگھ یادو تک


اس کے بعد وہ جنتا پارٹی میں شامل ہو گئے۔ 1989 کا الیکشن انہوں نے جنتا دل کے ٹکٹ پر لڑا اور پھر جیت درج کی۔ اس دوران وہ 1990 اور 91 میں مرکزی وزیر صحت بھی رہے۔ 1994 میں وہ ملائم کے قریب آئے اور سماج وادی پارٹی میں شامل ہو گئے۔ بعد میں 1996 میں انہوں نے انڈین ایکتا پارٹی بنائی۔ 2003 میں ایک بار پھر انہوں نے سماج وادی پارٹی کا دامن تھام لیا۔ 2004 میں وہ ایس پی کے ٹکٹ پر لوک سبھا الیکشن لڑے اور جیتے۔ سابق مرکزی وزیر قاضی رشید مسعود کے انتقال کی خبر ملنے کے بعد ان کے مداحوں میں غم واندوہ کی لہر دوڑ گئی۔ سوشل میڈیا پر تعزیتی پیغامات اور دعاوں کا سلسلہ جاری ہے۔

 
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Oct 05, 2020 02:19 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading