உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    سپریم کورٹ نے سہارا کی ایمبی ویلی پراپرٹی کو ضبط کرنے کا دیا حکم

    فائل فوٹو

    فائل فوٹو

    نئی دہلی۔ سپریم کورٹ نے سہارا چٹ فنڈ کیس میں سہارا گروپ سے اپنی ایسی جائداد کی فہرست سونپنے کے لئے کہا ہے جن پر کسی طرح کا قرض نہیں لیا گیا ہے۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:

      نئی دہلی۔  سپریم کورٹ نے سہارا چٹ فنڈ کیس میں سہارا گروپ سے اپنی ایسی جائداد کی فہرست سونپنے کے لئے کہا ہے جن پر کسی طرح کا قرض نہیں لیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ عدالت نے ممبئی کے قریب گروپ کے پروجیکٹ ایمبي ویلی کو ضبط کرنے کا حکم بھی دیا ہے۔ جسٹس دیپک مشرا، جسٹس اےكمار سیکری اور رنجن گوگوئی کی بنچ نے سہارا اور انڈین سیکورٹیز ایکسچینج بورڈ (سیبی) کے وکلاء کی دلیلوں کو سننے کے بعد یہ حکم دیا۔ عدالت عظمی نے کہا کہ یہ جائیدادیں عدالت کی نگرانی میں رہیں گی۔ اس معاملے کی اگلی سماعت تک کوئی بھی اس پر قبضہ یا دیگر کارروائی نہیں کر سکتا ہے۔ معاملے کی اگلی سماعت 27 فروری کو ہوگی۔


      عدالت نے سہارا گروپ سے اپنی ایسی جائداد کی فہرست بھی حوالے کرنے کے لئے کہا ہے جن جائداد پر کسی طرح کا قرض نہیں لیا گیا ہے۔ سہارا نے عدالت کے سامنے اعتراف کیا کہ اسے 14 ہزار کروڑ روپے کی رقم ادائیگی سیبی کو کرنا تھا۔ گروپ نے عدالت کو بتایا کہ وہ 11 ہزار کروڑ روپے دے بھی چکا ہے۔

      First published: