உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    برخاستگی کے بعد مولانا سلمان حسینی ندوی نے کہا : بورڈ نے تانا شاہی کا رویہ اپنایا ، کوششیں جاری رہیں گی

    مولانا سلمان ندوی

    مولانا سلمان ندوی

    آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ سے برخاست کئے جانے کے بعد مولانا سلمان حسینی ندوی نے کہا ہے کہ بورڈ تانا شاہ رویہ اپنا رہا ہے ۔

    • Share this:
      لکھنو : آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ سے برخاست کئے جانے کے بعد مولانا سلمان حسینی ندوی نے کہا ہے کہ بورڈ تانا شاہ رویہ اپنا رہا ہے ۔ مولانا ندوی نے لکھنو میں کہا کہ وہ اپنی کوششیں جاری رکھیں گے اور اجودھیا جائیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ میں نے جمعہ کو ہی یہ صاف کردیا تھا کہ میں ایسے بورڈ کا حصہ نہیں بن سکتا ۔
      خیال رہے کہ مولانا ندوی نے کچھ دنوں پہلے بنگلورو میں شری شری روی شنکر سے ملاقات کی تھی ۔ اس کے بعد انہوں نے کہا تھا کہ وہ بابری مسجد تنازع کو آپسی اتفاق رائے سے حل کی حمایت کرتے ہیں ۔ انہوں نے اجودھیا میں متنازع جگہ دور ہٹ کر مسجد وکالت کی تھی ۔ ساتھ ہی ساتھ یہاں ایک یونیورسٹی کھولنے کیلئے زمین مہیا کرانے کا بھی حکومت سے مطالبہ کیا تھا۔
      اس ملاقات کے بعد مولانا ندوی کی مسلم پرسنل بورڈ سے تلخی بڑھ گئی تھی ۔ جبکہ بورڈ نے واضح کردیا ہے کہ اجودھیا معاملہ پر اس کے رخ میں کوئی تبدیلی نہیں آئی ہے ۔ کیونکہ جب ایک مرتبہ مسجد بنتی ہے تو ہمیشہ کیلئے وہ مسجد ہی رہتی ہے۔
      First published: