ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

ملئے آسام کے نئے وزیر اعلی سربانند سونووال سے ، 5 سال پہلے بی جے پی میں کی تھی انٹری

نئی دہلی : آسام میں پہلی مرتبہ بی جے پی کی حکومت بنتی نظر آرہی ہے ۔ ابھی تک آئے رجحانات کے مطابق آسام میں بڑی جیت کے ساتھ بی جے پی حکومت بنانے جارہی ہے

  • Pradesh18
  • Last Updated: May 19, 2016 11:43 AM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
ملئے آسام کے نئے وزیر اعلی سربانند سونووال سے ، 5 سال پہلے بی جے پی میں کی تھی انٹری
نئی دہلی : آسام میں پہلی مرتبہ بی جے پی کی حکومت بنتی نظر آرہی ہے ۔ ابھی تک آئے رجحانات کے مطابق آسام میں بڑی جیت کے ساتھ بی جے پی حکومت بنانے جارہی ہے

نئی دہلی : آسام میں پہلی مرتبہ بی جے پی کی حکومت بنتی نظر آرہی ہے ۔ ابھی تک آئے رجحانات کے مطابق آسام میں بڑی جیت کے ساتھ بی جے پی حکومت بنانے جارہی ہے ۔ پارٹی نے آسام کے انتخابات میں اپنی حکمت عملی کو تبدیل کرتے ہوئے اس مرتبہ سربانند سونووال کو پہلے ہی سی ایم عہدے کا امیدوار اعلان کر دیا تھا ۔


مرکزی وزیر بننے کے بعد سے ہی سی ایم عہدے کے امیدوار سربانند سونووال کا قد کافی بڑا ہو چکا تھا اور پارٹی بھی ایک چمتکار کی امید ان سے کر رہی تھی اور آخر کار بی جے پی کا یہ داؤ کام آ گیا اور بی جے پی کی جیت ہوگئی۔


سربانند سونووال کی پیدائش 31 اکتوبر 1962 کو ہوئی تھی ، انہوں نے ڈبروگڑھ یونیورسٹی سے تعلیم حاصل کی ہے ۔ سربانند نے اپنے سیاسی کیریئر کا آغاز 1992 سے کیا تھا ۔ 1992 سے 1999 تک آل آسام اسٹوڈنٹس یونین کے صدر بھی رہے ۔ سونووال نے آسام گن پریشد جوائن کیا اور 2001 میں رکن اسمبلی منتخب ہوئے ۔ 2004 میں پہلی مرتبہ سابق مرکزی وزیر پبن سنگھ گھاٹور کو شکست دے کر وہ لوک سبھا میں پہنچے تھے ۔


سال میں آسام گن پریشد سے تنازعہ کے بعد انہوں نے بی جے پی کا دامن تھام لیا ۔ 2012 میں انہیں بی جے پی کی آسام یونٹ کا صدر بنایا گیا ۔ 2014 کے لوک سبھا انتخابات میں لکھیم پور سیٹ سے جیت کے بعد وہ مرکزی وزیر بنے ۔ 2015 میں ایک بار پھر انہیں آسام انتخابات کی کمان دی گئی اور انہیں سی ایم کا امیدوار بنایا گیا ۔
First published: May 19, 2016 11:31 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading