உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    دادری معاملہ میں معاوضہ دیئے جانے سے متعلق یوپی حکومت کے فیصلے کو چیلنج کرنے والی درخواست خارج

    نئی دہلی۔ سپریم کورٹ نے دادری واقعہ کے شکار محمد اخلاق کے گھر والوں کو معاوضہ دیئے جانے سے متعلق اترپردیش حکومت کے فیصلے کو چیلنج کرنے والی درخواست آج خارج کردی۔

    نئی دہلی۔ سپریم کورٹ نے دادری واقعہ کے شکار محمد اخلاق کے گھر والوں کو معاوضہ دیئے جانے سے متعلق اترپردیش حکومت کے فیصلے کو چیلنج کرنے والی درخواست آج خارج کردی۔

    نئی دہلی۔ سپریم کورٹ نے دادری واقعہ کے شکار محمد اخلاق کے گھر والوں کو معاوضہ دیئے جانے سے متعلق اترپردیش حکومت کے فیصلے کو چیلنج کرنے والی درخواست آج خارج کردی۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:

      نئی دہلی۔ سپریم کورٹ نے دادری واقعہ کے شکار محمد اخلاق کے گھر والوں کو معاوضہ دیئے جانے سے متعلق اترپردیش حکومت کے فیصلے کو چیلنج کرنے والی درخواست آج خارج کردی۔ عدالت عظمی نے درخواست خارج کرتے ہوئے کہا کہ مذکورہ معاملے میں درخواست دہندہ نے متاثرہ کنبے کو فریق نہیں بنایا ہے۔ ایسی صورت میں درخواست کی سماعت نہیں کی جاسکتی۔


      درخواست دہندہ نے ریاستی حکومت پر الزام لگایاتھا کہ اس نے معاوضہ دینے میں تفریق آمیز رویہ اپنایا۔ ریاستی حکومت نے اخلاق کے گھر والوں کے لئے معاوضے کی رقم میں دو بار اضافہ کیا۔ اس معاملے میں پیش وکیل رتیش چودھری نے یہ درخواست داخل کی تھی۔ جس میں کہا گیا تھا کہ ضابطوں کی خلاف ورزی کرکے متاثرہ کنبے کو پہلےدس لاکھ روپے معاوضہ دینے کا اعلان کیا گیا۔ جسے بڑھا کر 20 لاکھ اور پھر 45 لاکھ کردیا گیا۔ اس کے ساتھ ہی متاثرہ کنبے کو ریاستی حکومت کی طرف سے بطور معاوضہ ایک مکان بھی دیا گیا۔ یہ معاوضہ اترپردیش کے معاوضہ قانون کے ضابطوں کے خلاف ہے۔ اس لئے ریاستی حکومت کے اس فیصلے کو خارج کیا جانا چاہئے۔ وکیل رتیش نے پہلے اس سلسلے میں الہ آباد ہائی کورٹ میں درخواست داخل کی تھی، جس نے اسے خارج کردیا تھا۔

      First published: