ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

پلوامہ حملہ سے متعلق ٹوئٹ پرہارون یوسف قائم، پاکستان کو منہ توڑجواب دینے کا مطالبہ

کانگریس کے ایگزیکٹیو صدرنےکہا کہ میں نےایک سچی بات کہی ہےکہ اتنی بڑی مقدارکےاندرآرڈی ایکس پہنچنا اپنے آپ میں سوال اٹھاتا ہے۔ ہمارے جوانوں کی قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی۔

  • Share this:
پلوامہ حملہ سے متعلق ٹوئٹ پرہارون یوسف قائم، پاکستان کو منہ توڑجواب دینے کا مطالبہ
کانگریس کے سینئر لیڈر اور سابق ریاستی وزیر ہارون یوسف بلیماران اسمبلی حلقہ سے آگے چل رہے ہیں۔ فائل فوٹو

کانگریس لیڈراوردہلی پردیش کانگریس کمیٹی کےکارگزارصدراورسابق ریاستی وزیرہارون یوسف نےنیوز18 سے بات کرتے ہوئے کہا ہےکہ وہ اپنے ٹوئٹ پرقائم ہیں۔ انہوں نے کہا کہ موب لنچنگ معاملے میں ساڑھے تین کلوبیف کا حکومت پتہ لگا لیتی ہے، لیکن ساڑھے300 کلوآرڈی ایکس کا پتہ نہیں لگا پاتی ہے۔ اتنی ہائی سیکورٹی کے درمیان وہاں یہ گاڑی کیسے پہنچ گئی، یہ ایک بڑا سوال ہے۔


ہارون یوسف نےکہا کہ یہ میرے دل کی بات ہے، انہوں نے ایک بار پھرسوال اٹھاتے ہوئے کہا کہ ہائی سیکورٹی زون ہونےکے باوجود آخراتنی بڑی مقدارمیں آرڈی ایکس وہاں کیسے پہنچ گیا؟ انہوں نے کہا کہ  بی جے پی اورآرایس ایس جیسی اس کی ذیلی تنظیمیں  ملک کو تقسیم کرنا چاہتے ہیں۔ اس وقت حکومت کو پاکستان کومنہ توڑ جواب دینا چاہئے۔ پورے ملک کا ایک ایک شخص حکومت کے ساتھ کھڑا ہے۔


کانگریس کے ایگزیکٹیو صدر ہارون یوسف نے کہا کہ میں نے ایک سچی بات کہی ہےکہ اتنی بڑی مقدارکے اندرآرڈی ایکس پہنچنا اپنے آپ میں سوال اٹھاتا ہے۔ ہمارے جوانوں کی قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی۔ ہندوستانی ہونےکے ناطے جس طرح سے جوانوں کی قربانیاں ہوئی ہیں، پاکستان کومنہ توڑجواب دینا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت ہرچیزکوسیاست کی نظر سے دیکھتی ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ الیکشن توآتے جاتےرہیں گے۔ تاہم فوج کے نام پر سیاست نہیں ہونی چاہئے۔


ہارون یوسف نے یہ بھی کہا کہ ایجنسیاں اورفوج اس پورے معاملے کی جانچ کررہی ہیں، جانچ کے بعد سب کچھ واضح ہوگا۔ انہوں نے سوال اٹھاتے ہوئے کہا کہ سرجیکل اسٹرائیک ہوتا ہے توجیسے لگتا ہے کہ بی جے پی کے لوگ خود وہاں جاکرگولی چلاکرآئے ہیں۔ واضح رہے کہ گزشتہ روزہارون یوسف نےایک ٹوئٹ کے ذریعہ سوال اٹھاتے ہوئے بی جے پی حکومت پرتنقید کی تھی اورموب لنچنگ کا ذکرکرتے ہوئے کہا تھا کہ حکومت ساڑھے تین کلو بیف کا پتہ لگا لیتی ہے، لیکن ساڑھے تین سو کلو آرڈی ایکس کا پتہ نہیں لگا پاتی ہے۔
First published: Feb 22, 2019 09:27 PM IST