ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

15 مئی سے کوویکس ویکسین کے تیسرے مرحلہ کا ٹرائل شروع کرے گا سیرم انسٹی ٹیوٹ

آئی سی ایم آر ۔ نیشنل ایڈریس ریسرچ انسٹی ٹیوٹ سے وابستہ ڈاکٹر ابھیجیت کدم کا کہنا ہے کہ تیسرے مرحلہ کے ٹرائل کیلئے ملک بھر میں 19 مقامات ہیں اور ان میں سے چار پونے میں ہیں ۔

  • Share this:
15 مئی سے کوویکس ویکسین کے تیسرے مرحلہ کا ٹرائل شروع کرے گا سیرم انسٹی ٹیوٹ
15 مئی سے کوویکس ویکیسن کے تیسرے مرحلہ کا ٹرائل شروع کرے گا سیرم انسٹی ٹیوٹ

نئی دہلی : کورونا ویکسین بنانے والی کمپنی سیرم انسٹی ٹیوٹ آف انڈیا 15 مئی سے اپنی دوسری ویکسین کوویکس کے تیسرے مرحلہ کا ٹرائل شروع کرے گی ۔ سیرم انسٹی ٹیوٹ کمپنی کوویکس کے تیسرے مرحلہ کا ٹرائل آئی سی ایم آر کے ساتے مل کر کرے گی ۔


آئی سی ایم آر ۔ نیشنل ایڈریس ریسرچ انسٹی ٹیوٹ سے وابستہ ڈاکٹر ابھیجیت کدم کا کہنا ہے کہ تیسرے مرحلہ کے ٹرائل کیلئے ملک بھر میں 19 مقامات ہیں اور ان میں سے چار پونے میں ہیں ۔ ان مقامات پر رضاکاروں کو لانے کا عمل جلد شروع کیا جائے گا ۔ بتادیں کہ کورونا سے بچاو کیلئے سیرم نے کوویکس ویکیسن کو ڈیولپ کرنے کیلئے امریکی کمپنی نوواویکس کے ساتھ پارٹنرشپ کی ہے ۔


کچھ وقت پہلے سیرم انسٹی ٹیوٹ آف انڈیا ( ایس آئی آئی ) کے سی ای او ادار پونے والا نے کہا تھا کہ ہندوستان میں کوویکس ویکسین کو اس سال ستمبر تک بازار میں اتارا جاسکتا ہے ۔ رپورٹس کے مطابق کوویکس کورونا کے جنوبی افریقہ اور برطانوی ویئرنٹ پر بھی کافی اثردار ہوگی ۔ سیرم کی کورونا ویکیسن کووی شیلڈ کا پہلے سے ہی ٹیکہ کاری میں استعمال کیا جارہا ہے ۔


ستمبر 2020 میں نووا ویکس نے سیرم انسٹی ٹیوٹ آف انڈیا کے ساتھ کورونا وائرس کے دو بلین ٹیکوں کیلئے شراکت داری کا اعلان کیا تھا ۔ ہندوستان میں ویکسین کو کوویکس کے نام سے بیچا جائے گا اور اس کو نوواویکس نے ڈیولپ کیا ہے ۔

ریمڈیسیور کی پیدوار تین گنا بڑھ گئی

ادھر کورونا انفیکشن کے علاج کے لئے استعمال ہونے والی دوا ریمڈیسیور کی پیداوار میں تین گنا اضافہ کردیا گیا ہے ۔ وزیر مملکت برائے کیمیکلز اور کھاد منسوکھ منڈویہ نے منگل کے روز ٹوئیٹ کرکے کہا کہ ملک میں تیز رفتار سے ریمڈیسیور کی پیداوار میں اضافہ کیا جارہا ہے ۔ صرف کچھ ہی دنوں میں ریمیڈیسور کی پیداواری صلاحیت تین گنا ہوگئی ہے اور جلد ہی بڑھتی ہوئی طلب کو پورا کرنے کے قابل ہوجائے گی وزیر اعظم کی قیادت میں کورونا سے لڑنے کے لئے حکومت کی انتھک کوششیں جاری ہیں۔ ملک میں ریمڈیسیور کی بڑھتی ہوئی طلب کے پیش نظر ، اس کی پیداوار میں اضافہ کیا جارہا ہے۔

کچھ ہی دنوں میں ، تقریباً تین گنا ریمیڈیسور پیداواری پلانٹ بڑھائے جاچکے ہیں ۔ کورونا ہار ے گا ، زندگی جیتے گی ۔ ملک کے بیشتر علاقوں میں اس دوا کی کی بلیک مارکیٹنگ کی جارہی ہے اور اس کے لئے کئی لوگوں کو گرفتار بھی کیا گیا ہے۔ کچھ جگہوں پر اس دوا کی ذخیرہ اندوزی بھی کی گئی ہے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: May 04, 2021 06:34 PM IST