ہوم » نیوز » No Category

یو پی کے شیعہ اور سنی وقف بورڈوں میں بحرانی کیفیت ، ملازمین کو تنخواہ دینے کیلئے بھی رقم نہیں

لکھنو: اترپردیش میں شیعہ۔سنی وقف بورڈ وں کے پاس لاکھوں اوقاف موجود ہیں ، لیکن ا ن کی آمدنی بڑھانے کی بجائے وقف بورڈیں حکومت سے امداد کی منتظر ہیں ۔ دونوں بورڈوں کے پاس موجودہ ملازمین کو وقت پر تنخواہ دینے کے لئے پیسے تو نہیں ہیں ، لیکن نئے ملازمین کی بھرتی کےلئے اشتہار ضرور جاری کردیا گیا ہے۔

  • ETV
  • Last Updated: Dec 03, 2015 03:39 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
یو پی کے شیعہ  اور سنی وقف بورڈوں میں بحرانی کیفیت ، ملازمین کو تنخواہ دینے کیلئے بھی رقم نہیں
لکھنو: اترپردیش میں شیعہ۔سنی وقف بورڈ وں کے پاس لاکھوں اوقاف موجود ہیں ، لیکن ا ن کی آمدنی بڑھانے کی بجائے وقف بورڈیں حکومت سے امداد کی منتظر ہیں ۔ دونوں بورڈوں کے پاس موجودہ ملازمین کو وقت پر تنخواہ دینے کے لئے پیسے تو نہیں ہیں ، لیکن نئے ملازمین کی بھرتی کےلئے اشتہار ضرور جاری کردیا گیا ہے۔

لکھنو: اترپردیش میں شیعہ۔سنی وقف بورڈ وں کے پاس لاکھوں اوقاف موجود ہیں ، لیکن ا ن کی آمدنی بڑھانے کی بجائے وقف بورڈیں حکومت سے امداد کی منتظر ہیں ۔ دونوں بورڈوں کے پاس موجودہ ملازمین کو وقت پر تنخواہ دینے کے لئے پیسے تو نہیں ہیں ، لیکن نئے ملازمین کی بھرتی کےلئے اشتہار ضرور جاری کردیا گیا ہے۔


ماہرین کے مطابق اقربا پروری ، بد عنوانی اور گھسے پٹے ڈھرے پر چلنے کی وجہ سے ہی وقف بورڈوں کا یہ حال ہوا ہے۔ یہی نہیں ریاستی حکومت بھی اس محکمہ کو لے کر کافی بے حس اورلاپروا نظرآرہی ہے۔


خیال رہے کہ اترپردیش شیعہ سنٹرل وقف بورڈ کے ملازمین کی تقریبا 23 ماہ کی تنخواہیں باقی ہیں ۔ موجودہ چیئرمین وسیم رضوی کے مطابق ان کی کوشش رہتی ہے کہ ملازمین کو تنخواہ کی وقت پر ادائیگی کی جائے ، لیکن بورڈ کے پاس پچھلے بقایا جات ادا کرنے کےلئے پیسے نہیں ہیں۔


وسیم رضوی کا کہنا ہے کہ انہوں نے حکومت سے گرانٹ کی درخواست کی ہے لیکن ابھی تک کوئی نتیجہ نہیں نکلا ہے۔ بورڈ میں ملازمین کی کمی پوری کرنے کےلئے 25 عہدوں پر بحالی شروع کرنے کا اشتہار دے دیا ہے ، لیکن ان عہدوں پر تقرری حکومت کی امداد کے بغیر ممکن نہیں ہوسکے گی ۔


کچھ ایسا ہی حال یو پی سنی سنٹرل وقف بورڈ کا بھی ہے۔ بورڈ کے موجودہ ملازمین کی تقریبا پانچ ماہ کی تنخواہیں باقی ہیں۔ ملازمین کو آدھی تنخواہ دی جاتی ہے ، لیکن یہاں بھی نئی بحالی  کا عمل جاری ہے۔


بورڈ نے تقریبا 42 عہدوں پر بحالی کا اشتہار جاری کیا ہے۔انہیں تنخواہ کہاں سے دی جائے گی، بورڈ کے چیئرمین کے پاس اس کا کوئی جواب نہیں ہے۔ البتہ بورڈ کے سی ای او کو یہ امید ضرور ہے کہ جیسےپرانے ملازمین کا کام چل رہا ہے ، نئے ملازمین کا بھی گزارا ہو جائے گا۔

First published: Dec 03, 2015 03:38 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading