உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    دہلی کی سابق وزیر اعلی شیلا دیکشت نے بیان کیا اپنا درد ، کہا : برسوں تک کیا گیا نظر انداز ، مگر کچھ نہیں کہا

    شیلا دیکشت ۔ فائل فوٹو

    شیلا دیکشت ۔ فائل فوٹو

    عام آدمی پارٹی کے ہاتھوں دہلی میں 2013 کے اسمبلی انتخابات میں اقتدار گنوانے کے بعد تقریبا حاشیہ پر چلی گئیں کانگریس کی سینئر لیڈر شیلا دیکشت نے پارٹی لیڈروں کو اندرونی سیاست سے پرہیز کرنے کی نصیحت کی ہے ۔

    • Agencies
    • Last Updated :
    • Share this:

      نئی دہلی : عام آدمی پارٹی کے ہاتھوں دہلی میں 2013 کے اسمبلی انتخابات میں اقتدار گنوانے کے بعد تقریبا حاشیہ پر چلی گئیں کانگریس کی سینئر لیڈر شیلا دیکشت نے پارٹی لیڈروں کو اندرونی سیاست سے پرہیز کرنے کی نصیحت کرتے ہوئے اپنے بارے میں کہا کہ برسوں تک ان کو نظر انداز کیا گیا ، لیکن انہوں نے کچھ نہیں کہا ۔
      تین مرتبہ دہلی کی وزیر اعلی رہ چکیں شیلا دیکشت نے کسی کا نام لئے بغیر اپنے دل کا درد بیان کیا اور کہا کہ "مجھ سے جو کہا جاتا ہے ، وہ میں کرتی ہوں ، میں کانگریس کی ہوں اور کانگریس میری ہے ، میں کانگریس کیلئے کچھ بھی کرسکتی ہیں ، جب مجھ سے کوئی کچھ کہے گا ہی نہیں تو مجھ میں بھی یہ عادت نہیں کہ اپنے آپ جاکر کہیں گھس جاوں، برسوں تک انہوں نے نظر انداز کیا ہے ، مگر میں نے کچھ نہیں کہا ، کوئی شکایت نہیں کی"۔
      گزشتہ اسمبلی انتخابات کے بعد نگر نگم سمیت کئی انتخابات اور ضمنی انتخابات ہوئے ، لیکن شیلا دیکشت کو پارٹی کا اسٹار کمپینر بنائے جانے کے باوجود ان کو تشہیر کی کوئی بڑی ذ مہ داری نہیں سونپی گئی ۔
      گزشتہ دونوں شیلا دیکشت اور دہلی ریاستی کانگریس کے صدر اجے ماکن نے ایک ساتھ پریس کانفرنس کی تھی ، ان دونوں لیڈروں کو کافی وقت کے بعد اسٹیج شیئر کرتے ہوئے دیکھا گیا ، اس کے پس منظر کی بابت پوچھے جانے پر شیلا نے کہا کہ اچانک یہ جو پریس کانفرنس ہوئی ، اس سے پہلے ماکن جی میرے گھر چار پانچ مرتبہ آئے اور انہوں نے کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ آپ ساتھ آئیں ، آپ کا کام ہے ، ہم اس کام کی تشہیر کرنا چاہتے ہیں ۔
      شیلا دیکشت نے کہا کہ "میرے من کوئی تذبذب نہیں ہے ، ہمیں تو کانگریس کیلئے کام کرنا ہے ، کسی شخص خاص کے تئیں میرے دل میں کچھ نہیں ہے ، اگر پارٹی کیلئے کچھ اچھا کر رہے ہیں تو یہی سوچ کر میں گئی اور آپ نے دیکھا کہ نتیجہ اچھا نکلا ، لیکن پہلے انہوں نے کبھی نہیں کہا ، اس لئے میں نہیں گئی ، جب الیکشن ہوئے تو انہوں نے ایک مرتبہ بھی مجھ سے نہیں کہا کہ آئیے "۔
      شیلا دیکشت نے دہلی میں کانگریس لیڈروں کو ساتھ میں لے کر چلنے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ اگر سبھی ساتھ نہیں چلیں گے تو نقصان کانگریس کا ہی ہوگا ۔ انہوں نے کہا کہ جب انہیں پہلی مرتبہ دہلی میں کانگریس کی ذمہ داری کی گئی تو پارٹی ہائی کمان نے ان کی پسند پوچھی تھی تو انہوں نے کہا تھا کہ جو ہے ، سو ہے ، کسی کو بدلنے کی ضرورت نہیں ہے۔
      سابق وزیر اعلی نے کہا کہ ہمیں دھیان میں رکھنا چاہئے کہ اندرونی سیاست نہ ہو ، افسوس کی بات ہے کہ یہ اس بات کو نہیں سمجھتے ، انہیں یہ سمجھنا ہوگا کہ ہماری دشمن کانگریس نہیں ہے ، ہمارے مخالف اپوزیشن ہیں ، جس دن یہ سمجھ میں آجائے گا ، سب کچھ ٹھیک ہوجائے گا۔

      First published: